Global Editions

کیا ماحولیاتی معاہدے کے نفاذ کیلئے اسے مطلوبہ رقم ملے گی؟

کیا ماحولیاتی معاہدے کے نفاذ کیلئے اسے مطلوبہ رقم ملے گی؟
پیرس معاہدے کے تحت مضر گیسوں کے اخراج میں کمی کیلئے ٹیکنالوجی میں نت نئے تجربات کی ضرورت ہے۔ اس لئے 20سے زائد ممالک نے مشن انوویشن کے نام سے ایک منصوبہ بنایا۔ اس کا مقصد یہ تھا کہ شفاف توانائی کی ٹیکنالوجیز میں دگنی تحقیق اور ترقی کا ہدف حاصل کیا جائے۔ لیکن اگر امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کی طرف سے مالی معاونت کے وعدے سے پیچھے ہٹ جاتے ہیں تو پورا منصوبہ ہی ختم ہو جائے گا ۔ اس معاہدے میں امریکہ کا سب سے زیادہ حصہ 43فیصد ہے اس کے بعد چین کا حصہ 25فیصد ہے ۔ درج ذیل گرافس سے معلوم ہوتا ہے کہ کون سے ممالک منصوبے میں کتنی مالی معاونت کررہے ہیں۔

مشن انوویشن کیلئے کئے گئے وعدے

شفاف توانائی بشمول ایٹمی توانائی اور گرڈ ٹیکنالوجی کے حصول کیلئے امریکہ مالی معاونت فراہم کرنے والا بڑا ملک رہا ہے۔ اگر یہ تصور کیا جائے کہ امریکہ اس معاہدے میں شامل رہے گا تو اس مقصد کیلئے 30ارب ڈالر جمع ہوں گے۔ درج ذیل اعدادوشمار سے معلوم ہوتا ہے کہ کون سےملک کا مالی معاونت میں کتنے فیصد حصہ ہے۔

اٹلی، برازیل، ناروے، آسٹریلیا، انڈونیشیا، سعودی عرب، بھارت، ڈنمارک، میکسیکو، عرب امارات، سویڈن، چلی 6.2فیصد
دیگر ممالک 9.4فیصد

قابل تجدید توانائی کیلئے عالمی تحقیق و ترقی کیلئے فنڈز

آج قابل تجدید توانائی کی تحقیق پرقدرے کم رقم صرف کی جارہی ہے جبکہدنیا میں لائف سائنس میں تحقیق و ترقی کیلئے 170ارب ڈالر سالانہ خرچ کئے جارہے ہیں۔

2015ء میں مختلف علاقوں کے حوالے سے قابل تجدید توانائی پر تحقیق و ترقی
مضر گیسوں کا زیادہ اخراج کرنے والے ممالک قابل تجدید توانائی پر زیادہ اخراجات کرتے ہیں۔

Read in English

Authors
Top