Global Editions

ہیکنگ سے بچنے کیلئے انٹرنیٹ منسلک گاڑیوں کو آف لائن رکھیں

سیلف ڈرائیونگ کاروں کو پہیوں پر چلتے پھرتے کمپیوٹر سے تشبیہہ دی جاسکتی ہے۔ اس لئے یہ حیرت کی بات نہیں کہ ڈرائیور سفر کے دوران ان چلتے پھرتے کمپیوٹرز کو سیکورٹی کے نام پر آف لائن رکھے۔ الفا بیٹ کے زیر انتظام سیلف ڈرائیونگ کاروں کی کمپنی ویمو (Waymo)کے سی ای او جان کرافسک (John Krafcik)نے فنانشیل ٹائم کو انٹرویو میں کہتے ہیں کہ ان کی گاڑیاں کبھی کبھار ہی انٹرنیٹ سے منسلک ہوتی ہیں۔ ہماری کاریں بیرونی دنیا سے انٹر نیٹ کے ذریعے اسی وقت رابطہ کرتی ہیں جب انہیں اس کی ضرورت ہوتی ہے۔ لہٰذا ان کے انٹرنیٹ سے رابطے میں تسلسل نہ ہونے کی وجہ سے انہیں ہیک نہیں کیا جاسکتا۔ خودکار گاڑیوں کے انٹرنیٹ سے رابطہ نہ رکھنے کی پالیسی حیرت کا سبب نہیں ہونی چاہئے کیونکہ 2015ء میں سیکورٹی ریسرچرز نے ڈرائیور کی موجودگی میں جیپ کو ہیک کرکے اس کی بریکیں فیل کرنے کا مظاہر کیا تھا۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ ایسے حادثات ڈرائیوروں اور کاریں بنانے والی کمپنیوں کو تشویش میں مبتلا کرسکتے ہیں۔ ویمو نے اپنی کاروں میں آف لائن رکھنے کی صلاحیت پیدا کردی ہے۔ ان گاڑیوں میں کمپیوٹر کے علاوہ انسانوں کے کرنے کے بھی کام ہیں مثلاً راستوں کے بارے میں معلومات لے کر فیصلے کرنا۔ اس لئے ضروری نہیں کہ راستے کے ہر موڑ پر کلائوڈ سے ڈیٹا حاصل کیا جائے۔ بی ایم ڈبلیو اور آڈی کی طرح کچھ گاڑیاں بنانے والی کمپنیاں منصوبہ بنا رہی ہیں کہ ان کی کاریں ایک دوسرے سے ابلاغ کریں۔ اس طرح کاریں سڑکوں پر موجود لینز میں بہتر انداز میں شامل ہو سکیں گی، اندازہ کرسکیں گی کہ کب بریک لگانی ہے اور مناسب رفتار پکڑ سکیں گی۔ یقینی طور پر سڑکوں پر انٹرنیٹ سے منسلک کاریں بھی موجود ہیں۔ مثلاً ٹیسلا ہی کو لے لیںجو نہ صرف انٹرنیٹ سے منسلک ہے بلکہ اس میں خودکار نظام کی بھی خصوصیات ہیں۔ ہمارے رائیٹر وِل نائیٹ لکھتے ہیں کہ ایلون مسک نے گاڑیوں میں اضافی کمپیوٹر لگا کر ان کی سیکورٹی میں اضافہ کردیا ہے۔ اگر ہم انٹرنیٹ سے منسلک اشیا کے بارے میں جانتے ہیں تو ہمیں پتہ ہو گا کہ ہیکرز ان میں کوئی نہ کوئی خامی ڈھونڈ لیتے ہیں۔ کمپیوٹرز کو کار کے باقی سسٹم سے الگ کرنا ایک آغاز ہو سکتا ہے لیکن اس کے باوجود ہیکرز کیلئے اس صورتحال میں بھی کوئی خامی تلاش کرنا مشکل نہیں ہے۔ گاڑیوں کے ہیکنگ کے مسلسل خدشے کے پیش نظر ویمو نے حل پیش کیا ہے کہ گاڑی کو آف لائن رکھا جائے۔

تحریر: جیمی کونڈولف (Jamie Condliffe)

Read in English

Authors
Top