Global Editions

'ایونجرز: انفنٹی وار' کی کامیابی کا راز، ماحولیاتی حیاتیات کے مطابق

قدرتی ایکو سسٹمز میں انٹریکشنز کا تجزیہ کرنے والے ٹولز کی مدد سے معلوم کیا جاسکتا ہے کہ مارول یونیورس کی کونسی فلمیں سب سے زيادہ کامیاب رہيں گی۔

مارول کامک بکس کے کرداروں اور ان کی دنیا پر مشتمل مارول سینیمیٹک یونیورس (Marvel Cinematic Universe) تاریخ کی کامیاب ترین فلم فرینچائز ہے۔ پچھلی دہائی میں اب تک 20 سے زیادہ فلمیں بن چکی ہیں جو باکس آف پر چھ ارب ڈالر سے بھی زيادہ کما چکی ہیں۔

مارول سینیمیٹک یونیورس اس قدر کامیاب کیوں ہے؟ اس میں کئی عناصر کا ہاتھ ہے، لیکن سب سے اہم وجہ اس فلم کے کردار اور ان کے آپس میں روابط کی پیچیدگی ہے۔ تاہم ان تعلقات کو درجہ بند کرنے کے لیے معتبر ٹولز کی کمی کی وجہ سے ان کا مطالعہ کرنا بہت مشکل ثابت ہوا ہے۔

اب میتھیو روہان اور آسٹریلیا میں واقع یونیورسٹی آف ایڈیلیڈ میں ان کے رفقاء کار کی وجہ سے یہ صورتحال تبدیل ہونے والی ہے۔ وہ بتاتے ہیں کہ ایکولوجسٹس کے پاس مختلف سپیشیز کے درمیان انٹریکشن کا مطالعہ کرنے کے ٹولز موجود ہیں اور انہوں نے انہی ٹولز کی مدد سے مارول سینیمیٹک یونیورس پر تحقیق کی ہے۔

مارول سینیمیٹک یونیورس

ہم سب سے پہلے پس منظر کی بات کرتے ہیں۔ ایکولوجیسٹ کا سب سے بڑا مسئلہ کسی بھی ایکوسسٹم کے مختلف سپیشیز کے پیچیدہ انٹریکشنز کا تعین ہے۔ لیکن سپیشیز کی تعداد معلوم کرنے سے یہ پیچیدگی کھل کر سامنے نہيں آتی۔ بلکہ اگر اس گنتی کے دوران اہم عناصر کا تعین نہ ہوسکے یا ان کے کردار کو بڑھا چڑھا کر بیان کیا جائے تو پیچیدگی ظاہر ہونے کے بجائے چھپ جاتی ہے۔

اس کے بجائے ماہر ماحولیاتی حیاتیات سپیشیز کے درمیان انٹریکشنز پر توجہ دیتے ہيں، جس کے بعد شینن اینٹروپی استعمال کرنے والے معروف ٹولز کی مدد سے ہر نسل کے جانور کی اہمیت کا تعین کیا جاسکتا ہے۔ یہ ٹولز ہر رابطے کی مشمولات کی تناست کا تعین کرتے ہيں۔

فلموں کی دنیا کے تجزیے میں بھی اسی قسم کے مسائل پیش آتے ہيں۔ پہلی نظر میں تو کاسٹ کی تعداد کریڈٹس میں درج فنکاروں کی تعداد کے برابر ہونی چاہیے لیکن اس قسم کی فہرست تیار کرنے کے کوئی معیارات موجود نہيں ہیں۔ کچھ فلموں کے کریڈٹس میں صرف مرکزی کرداروں کا نام درج ہوتا ہے جبکہ کچھ میں ہر ایک ایکسٹرا کا ذکر کیا جاتا ہے۔ مثال کے طور پر، 2003ء میں ریلیز ہونے والی فلم Closer اور 2004ء میں ریلیز ہونے والی فلم Stuck on You میں معنی خیز کرداروں کی تعداد ایک جیسی ہی ہے لیکن ایک کی کاسٹ کی فہرست میں صرف چھ فنکاروں جبکہ دوسری کی فہرست میں 328 فنکاروں کے نام شامل ہیں۔

مارول سینیمیٹک یونیورس میں بھی کچھ اسی قسم کا مسئلہ پیش آتا ہے خاص طور پر اس صورت میں جب نامور فنکار صرف کیمیوز ہی میں نظر آتے ہیں۔ مثال کے طور پر مارول کی دنیا کے بانی سٹین لی کی ہر فلم میں جھلک نظر تو آتی ہیں لیکن ان کا کہانی ميں کچھ خاص کردار نہيں ہوتا۔

اس صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے روہان اور ان کے رفقاء کار نے معنی خیز کرداروں کا تخمینہ کرنے کا طریقہ نکالا ہے۔ کسی بھی کردار کے دوسرے کرداروں کے ساتھ تصادم کسی بھی کہانی کا اہم عنصر ہیں۔ ریسرچرز نے ایک مفروضہ قائم کیا ہے کہ ان تنازعات کی تعداد سے کرداروں کی اہمیت کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔

اس کے علاوہ وہ ہر کردار کی لائنوں کی تعداد کے تناسب کا بھی تجزيہ کرتے ہيں۔ تاہم ریسرچرز اعتراف کرتے ہيں کہ اس سے کرداروں کی اہمیت کا اندازہ نہيں لگایا جاسکتا کیونکہ ممکن ہے کہ ان کی اہمیت ان کے کم یا زیادہ بولنے پر منحصر نہ ہو۔

لہٰذا روہان اور ان کے ساتھی صرف کرداوں کے آپس میں تنازعات کن کر مارول سینیمیٹک یونیورس کا مطالعہ ماہر ماحولیاتی حیاتیات کے ٹولز سے کرتے ہيں، اس طرح انہيں فلموں کا ایک بالکل نئے نقطہ نظر سے تجزيہ کرنے کا موقع ملے گا۔

۔
ریسرچرز کسی فلم میں تنازعات کی تعداد اور مکالمے کی مقدار کے درمیان تعلقات کا بھی معائنہ کرتے ہیں۔ اس سے انہیں معلوم ہوجاتا ہے کہ کس فلم میں مکالمہ زيادہ اہم ہے اور کس میں تنازعات۔

اس حساب سے "آریجن" فلمیں، جیسے کہ Spider-Man اور Captain America: The First Avenger اس وجہ سے نمایاں رہتی ہیں کیونکہ ان میں تنازعات کم اور مکالمہ زيادہ شامل ہے۔ اس کے برعکس میں ٹیم اپ کی فلموں میں زیادہ تنازعات پائے جاتے ہیں۔

اس تجزیے کا ایک اور نتیجہ یہ نکلا ہے کہ فلم کی کامیابی کا انحصار کاسٹ میں شامل فنکاروں کی تعداد پر ہے۔ اس پوری سیریز میں The Incredible Hulk وہ واحد فلم تھی جسے باکس آفس پر نقصان کا سامنا ہوا تھا اور اس فلم میں کرداروں کی تعداد بھی سب سے کم ہے۔ تاہم سب سے بڑی کاسٹ رکھنے والی فلم، یعنی Avengers: Infinity War، نے اپنے بجٹ سے دگنا منافع کمایا تھا۔

اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ شائقین کاسٹ کے سائز کو ترجیح دیتے ہیں۔ لیکن روہان کہتے ہیں کہ یہ مفروضہ غلط ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ بڑی کاسٹس رکھنے والی فلمیں عام طور پر "ٹیم اپس" ہوتی ہیں جو مختلف آریجن فلموں کی شائقین کے لیے بنائی جاتی ہیں جس کی وجہ سے وہ زیادہ کامیاب بھی رہتی ہيں۔

تاہم Guardians of the Galaxy کی صورتحال مختلف ہے۔ یہ کہنے کو تو ٹیم اپ فلم ہے لیکن اس میں پریکوئیل فلمیں شامل نہيں ہیں جس کی وجہ سے وہ متعدد اقسام کے شائقین کی دلچسپی حاصل کرنے میں کامیاب نہيں رہی۔

یہ صورتحال اس فلم کے منافع میں بھی نظر آتی ہے۔ روہان کہتے ہيں "اس فلم کو بہت سراہا گیا لیکن اس نے دوسری ٹیم اپ فلموں کی طرح منافع نہيں کمایا۔"

یہ تجزيہ فلموں کے علاوہ دوسرے شعبہ جات کے لیے بھی فائدہ مند ثابت ہوسکتا ہے۔ روہان کہتے ہيں "پیش کردہ پیمائشوں کو دوسروں فلموں کے یونیورسز یا ٹی وی شو کے تجزیے کے لیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔" اس کے علاوہ اسے تجویز کرنے والے سسٹمز میں استعمال کرکے شائقین کو ان کی پسندیدہ فلموں سے ملتی جلتی فلموں کے بارے میں بتایا جاسکتا ہے۔

Read in English

Authors
Top