Global Editions

مصنوعی ذہانت سےہسپتال کے بکھرے ہوئے ڈیٹا کو استعما ل میں لانا

نام: مارزہ غزیمی
عمر: 33 سال
ادارہ: ٹورنٹو یونیورسٹی

انہوں نےاپنےپی ایچ ڈی کے مطالعہ کے دوران بیتھ اسرائیل ڈیکانس میڈیکل سنٹر(Beth Isreal Deaconess Medical Centre) کے شعبہ انتہائی نگہداشت کےڈاکٹروں کے ساتھ اشتراکیت کے بعد یہ محسوس کیا کہ ان کا سب سے بڑا چیلنج انفارمیشن اوورلوڈ تھا۔ لہٰذا انہوں نے مشین لرننگ کا استعمال کرتے ہوئے بکھرے ہوئے کلینکل ڈیٹا کو مفید بنانے کی ٹھان لی تاکہ مریض کو اپنے ہسپتال کے قیام کے دوران خرچہ کا اندازہ ہو سکے۔ یہ آسان نہیں تھا۔ مشین لرننگ کے لئے احتیاط سے لیبل کئے گئے ڈیٹا سیٹ کی ضرورت ہوتی ہے۔ دوسری طرف میڈیکل ڈیٹا مختلف شکلوں میں آتا ہے، جو کہ روز مرہ کے تحریر کردہ ڈاکٹروں کے نسخے سے لے کرخون کے ٹیسٹ اور مسلسل دل کی نگرانی کے اعداد و شمار کی صورت میں ہوتا ہے۔ سپشلسٹ ڈاکٹرز تشخیص یا مریض کے علاج کے حوالے سے مختلف رائے رکھ سکتے ہیں۔ ان چیلنجوں کے باوجود، مارزہ غزیمی نےمشین لرننگ کے لئے الگورتھم تیار کیا جو متعدد طبی ڈیٹا اکٹھے کرتے ہیں اورچیزوں کو درست طریقے سے پیش کرتے ہیں جیسے ہسپتال میں مریضوں کو کتنے دنوں تک رہنا پڑنا ہے، موت کے چانس اور مریضوں کے لئے خون کی منتقلی یا وینٹیلیٹرز کی ضرورت۔

مارزہ غزیمی اس خزاں میں یونیورسٹی آف ٹورنٹو اور وکٹر انسٹی ٹیوٹ کو جوائن کر رہی ہیں جہاں وہ مقامی ہسپتالوں میں اپنے الگورتھمز ٹیسٹ کرنے کی امید رکھتی ہیں۔

تحریر: ایڈ گینٹ(Add Gent)

Read in English

Authors
Top