Global Editions

مصنوعی ذہانت کے ذریعے شہروں کو رہائشیوں کے مطابق بنایا جارہا ہے

نام: لییانگ زو (Liang Xu)
عمر: 31 سال
ادارہ: پینگ ان ٹیکنالوجی (Ping An Technology)
جائے پیدائش: چین

لییانگ زو اور ان کی ٹیم نے مصنوعی ذہانت کا ایک ایسا پلیٹ فارم بنایا ہے جو چین کے مختلف شہروں میں صحت عامہ میں بہتری، جرائم میں کمی، اور عوامی انتظام کی کارکردگی میں اضافے کو ممکن بنارہا ہے۔ زو کی ٹیم چین میں موجود بلدیاتی ایجنسیوں کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے جو لاکھوں کی تعداد میں صحت کے ریکارڈز اور کسٹمزکے سرحدوں کی کراسنگ کے ریکارڈز  جیسے ڈیٹا تک رسائی فراہم کرتی ہیں ۔ یہ سارا ڈیٹا حاصل کرنے، اس میں سے شناختی تفصیلات نکالنے، اور تربیت کے مختلف مراحل سے گزارنے کے بعد اس پلیٹ فارم کو، جس کا نام پاڈیا (PADIA) ہے، پھر ان ایجنسیوں کے کمپیوٹر سسٹمز میں ضم کردیا جاتا ہے۔

چونگ چنگ اور شینزین میں یہ پلیٹ فارم صحت عامہ کے حکام کو وبائی نزلے کی 90 فیصد تک درست پیشنگوئی کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔ شینزین کی ایک مقامی حکومتی ایجنسی نے اس سافٹ ویئر کو کاغذی کاروائی پراسیس کرنے کے دورانیے میں 95 فیصد تک کمی کو ممکن بنانے کے لیے بھی استعمال کیا ہے۔ کئی صوبوں میں اس نے صحت کے نظام میں ایک ارب یوان(یعنی 15 کروڑ ڈالر) کے دھوکوں کا پتہ لگایا ہے۔

حکومت کی جانب سے مصنوعی ذہانت کے استعمال سے کئی ملکوں میں بہث و مباحثہ چھڑ گیا ہے۔ زو اس ٹیکنالوجی کے پرائیوسی کی خلاف ورزی اور نوکریوں کے خاتمے جیسے خطرات سے اچھی طرح واقف ہیں۔ تاہم وہ ساتھ ہی مصنوعی ذہانت کی صلاحیتوں کے بارے میں بھی پرامید ہیں اور ان کا خیال ہے کہ یہ ٹیکنالوجی جدید تعلیم اور صحت کے نظام کو ایسی شعبہ جات میں متعارف کرسکتی ہے جنہيں روایتی طور پر نظرانداز کر دیا جاتا ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا ہے کہ دیہی علاقوں میں کام کرنے والے استاتذہ مصنوعی ذہانت کے وسیع علم کے ذریعے سوالات کے جوابات تلاش کر سکتے ہیں اور سماجی صحت کے وہ ادارے جن میں تربیت یافتہ عملے کی کمی ہو اس کے ایلگارتھم کو استعمال کرتے ہوئے طبی اسکین  کی تشریح کرکے باآسانی بیماریوں کی تشخیص کرسکتے ہيں۔

تحریر: یٹینگ سن (Yiting Sun)
مترجم: ماہم مقصود

Read in English

Authors

*

Top