Global Editions

لچک دار اجزاء سے الیکٹرانکس کے شعبے کو تبدیل کرنے کی کوششیں جاری

نام: بل لیو (Bill Liu)
عمر: 34 سال
ادارہ: رویول

بل لیو ایک ایسا کام کرنے کی کوشش کررہے جو اب تک سام سنگ، ایل جی اور لینووو جیسی کمپنیاں نہیں کر پائی ہیں - وہ ایسے کم قیمت اور لچک دار الیکٹرانک پرزے بنانا چاہ رہے ہيں جنھیں کسی بھی شکل میں بہ آسانی موڑا جاسکتا ہے۔

دوسرے ریسرچرز اور کمپنیوں نے بھی اس قسم کی چیزوں میں ہاتھ ڈالنے کی کوشش کی ہے، لیکن لیو نے بڑی تیزی سے اپنے اس خواب کو تجارتی شکل دینے کے لیے اقدام شروع کردیے ہيں۔ 2012ء میں انھوں نے رویول (Royole) نامی سٹارٹ اپ کمپنی قائم کی، جس نے ان کے زیرقیادت 2014ء میں دنیا کے سب سے پتلے لچک دار ڈسپلے کا اعلان کیا۔ دوسری ٹیکنالوجیز کے برعکس، جن کی شکل تو بدلی جاسکتی ہے، لیکن ان کی لچک محدود ہے، رویول کے پیاز کے چھلکے جتنے پتلے ڈسپلیز کو ایک قلم کے گرد کس کر لپیٹا جاسکتا ہے۔ اس وقت چین کے شہر شینژین میں واقع رویول کی فیکٹری میں 11 لاکھ مربع فٹ کی توسیع پر کام جاری ہے، جس کے بعد رویول ہر سال 5 کروڑ لچک دار پینلز تخلیق کرسکے گا۔

لیو ایک ایسی ڈیوائس بنانے کا خواب دیکھ رہے ہیں جس میں ایک گھڑی، سمارٹ فون، ٹیبلیٹ اور ٹی وی، سب ہی کی خصوصیات شامل ہوں۔ وہ کہتے ہيں کہ ان کے لچک دار ڈسپلیز اور سنسرز سے ایک دن یہ سب ممکن ہوسکے گا، لیکن فی الحال صارفین کو تھری ڈی میں فلمیں اور ویڈيو گیمز دیکھنے کے لیے 799 ڈالر کے ہیڈسیٹس سے ہی کام چلانا ہوگا۔

تحریر: الیزابیتھ وویئک (Elizabeth Woyke)

Read in English

Authors
Top