Global Editions

یہ ڈرائیر آواز کی لہروں کے ذریعےکپڑوں میں سے نمی نچوڑتا ہے

اب الٹرا سونک ڈرائیر سے آپ کے کپڑے زیادہ جلدی اور زیادہ موثر طریقے سے سکھائے جاسکتے ہیں۔

گرمی چھوڑیں، کپڑے سکھانے کے لئے اب بس آواز ہی تیز کرنے کی ضرورت ہے۔ اوک رج نیشنل لیبوریٹری (Oak Ridge National Laboratory) کے ایک لیب میں ریسچرز نے کپڑے سکھانے کے لئے ایک ایسا الٹراسونک ڈرائیر تیار کیا ہے جو روایتی آلات سے کم بجلی استعمال کرتا ہے۔

اگر آپ تھوڑی سی تحقیق کریں، تو آپ کو معلوم ہوجائے گا کہ کپڑے سکھانے کے ڈرائیر وافر مقدار میں بجلی استعمال کرتے ہیں۔ نیچرل ریسورسس ڈیفنس کونسل (Natural Resources Defense Council) کی 2014 میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق گھر میں استعمال ہونے والا ڈرائیر پورے سال میں اتنی ہی بجلی استعمال کرتا ہے جتنی کہ فریج، ڈش واشر اور واشنگ مشین کل ملا کر کرتے ہیں۔ انرجی انفارمیشن ايڈمینیسٹریشن (Energy Information Administration) کے مطابق ڈرائیر کے استعمال پر پورے گھر کی بجلی میں سے 4فیصد صرف ہوتی ہے۔

پچھلے چند سالوں سے کپڑوں میں سے نمی نچوڑنے کا ایک نیا طریقہ بنانے والے اوک رج کے ایوب مومن (Ayyoub Momen) کو یہ بات بہت اچھے سے معلوم تھی۔ وہ ایک ایسا ڈرائیر بنانا چاہتے ہیں جس کے ڈرم میں پیزوالیکٹرک الٹراساؤنڈ ٹرانس ڈیوسر(piezoelectric ultrasound transducers) کی تہہ لگی ہوئی ہو، تاکہ گندے کپڑوں کی صفائی کے لئے گرمی کے بجائے ہائی فریکوینسی کی آواز کی لہروں کا استعمال ممکن ہوسکے۔

اس ڈرائیر میں الٹراساؤنڈ کے وائبریشن کے ذریعے کپڑوں سے پانی کے قطرے نکال دئیے جاتے ہیں، جس کی وجہ سے پانی کے بخارات جمع ہونا شروع ہوجاتے ہیں۔ ان بخارات کو ڈرم کے کنارے تک دھکیل دیا جاتا ہے، جہاں اسے انہیں ایک روایتی ڈرائیر کی طرح خارج کردیا جاتا ہے۔

مومن اور ان کے ساتھ کام کرنے والوں کے پروٹوٹائپ کو دیکھ کر تو یہ لگتا ہے کہ اس سے واقعی فرق پڑے گا۔ ان کی ٹیم کا بڑے سائز کا ڈرائیر درمیانے سائز کے لوڈ کو 50 منٹ کے بجائے 20 منٹ میں سکھا سکتا ہے۔ وہ دعوی کرتے ہیں کہ یہ آلہ ایک عام ڈرائیر کے مقابلے میں 70 فیصد کم بجلی استعمال کرتا ہے۔

اور یہ صرف تحقیق تک ہی محدود نہیں ہے۔ یہ پراجیکٹ جنرل الیکٹرک اپلائنس (General Electric Appliances) کی شراکت میں مکمل کیا گیا تھا، جواس کا استعمال ایک پریس ڈرائیر میں اور آگے چل کر ایک ڈرم ڈرائیر میں کرنے کے بارے میں سوچ رہے ہیں۔ لگتا ہے کہ اب جلد ہی آپ بھی صرف آواز بڑھا کر اپنے گندے کپڑے دھو سکیں گے۔

تحریر: جیمی کونڈلیف (Jamie Condliffe)

Read in English

Authors
Top