Global Editions

2019ء میں کونسی ڈیوائسز بازی لے جائيں گی؟

اس سال آپ کو کن ٹیکنالوجیز پر نظر رکھنے کی ضرورت ہے؟

اگر آپ کا 2019ء میں نئی ڈیوائس خریدنے کا ارادہ ہے تو آپ کو کن رجحانوں پر نظر رکھنے کی ضرورت ہے؟ آئيے اس سال کی پانچ دلچسپ ترین ٹیکنالوجیز پر نظر ڈالتے ہيں۔

تہہ ہونے والے ڈسپلے

تہہ ہونے والے ڈسپلیز کے بارے میں 2013ء سے بات کی جارہی ہے۔ لیکن آخرکار اب یہ ڈسپلیز جلد ہی متعارف ہونے والے ہیں۔ ہواوے اور سام سنگ دونوں ہی نے اعلان کیا ہے کہ وہ 2019ء میں اس قسم کی ڈیوائس لانچ کرنے والے ہیں۔ لیکن ان سے فائدہ کیا ہوگا؟ ایک لچک دار فون کو تہہ کرنے سے اسے زیادہ آسانی سے جیب میں رکھا جاسکتا ہے، اور پھر اسے کھول کر آرام سے براؤزنگ اور دوسرے کام کیے جاسکتے ہیں۔ ہواوے کا فون کھل کر آٹھ انچ (یعنی 20 سنٹی میٹر) بڑا ہوجائے گا، جو ان کے سی ای او کے مطابق پی سی کی طرح کام کرنے کے لیے کافی ہے۔ سام سنگ کے فون کی سکرین کھل کر 7.3 انچ کی ہوجائے گی، اور اس پر بیک وقت تین ایپس چلائی جاسکیں گی۔

5G فونز

ہاں، دنیا کے کچھ حصوں میں وائرلیس نیٹورکس کو 5G کہہ کر متعارف کیا جارہا ہے۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ یہ کنکشنز وائرلیس راؤٹرز کے ساتھ کام کرتے ہیں۔ 5G کے ساتھ مطابقت رکھنے والے سمارٹ فونز 2019ء میں لانچ ہوں گے۔ امریکہ میں ورائزن سنیپ آن ماڈیولز کی مدد سے 5G تک رسائی کرنے والے موٹرولا فونز (یعنی موٹو Z3 سیریز) کو سپورٹ کريں گے۔ اسی طرح اے ٹی اینڈ ٹی نے اس سال کے اختتام تک اندرونی ساختہ 5G سے آراستہ سام سنگ فون متعارف کرنے کا اعلان کیا ہے۔ چین میں ہواوے، ون پلس اور شیاؤمی بھی 2019ء میں 5G فونز لانچ کرنے والے ہیں، اور کہا جارہا ہے کہ سونی بھی 5G بنانے کی تیاری میں لگا ہوا ہے۔ یہ ڈیوائسز دیکھنے میں 4G LTE فونز سے زیادہ مختلف نہيں ہوں گے، لیکن ان میں 5G کی تیز رفتار سے فائدہ اٹھا کر الٹرا ہائی ڈیفینیشن اور 3D ویڈيو لائیو سٹریم کرنے کی صلاحیت ہوگی۔

چاروں طرف وائرلیس چارجنگ

اپنے فون کو وائرلیس طور پر چارج کرنے کی بات تو بہت پرانی ہوچکی ہے، لیکن اب آپ اپنے لیپ ٹاپ اور ایئرفونز کو بھی وائرلیس ٹیکنالوجی کی مدد سے چارج کرسکتے ہیں۔ 2017ء میں ڈیل نے وائی ٹرائی سٹی نامی سٹارٹ اپ کمپنی سے حاصل کردہ ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہوئے 1،750 ڈالر کی قیمت رکھنے والے لیپ ٹاپ پر اس قسم کی چارجنگ کی ٹیسٹنگ کی تھی، لیکن اب وائرلیس چارجنگ کی ٹیکنالوجی استعمال کرنا اور بھی آسان ہوگیا ہے۔ انرجی سکوائر نامی سٹارٹ اپ کمپنی نے ایک ایسا وائرلیس چارجر تیار کیا ہے جس پر کنڈکٹیو چارجنگ کی مدد سے کئی مختلف اقسام کے لیپ ٹاپس چارج کیے جاسکتے ہیں۔ جہاں تک ایئرفونز کا تعلق ہے، ایپل نے اعلان کیا ہے کہ ایئرپوڈز کے اگلے ورژن میں، جن کا 2019ء میں متعارف ہونے کا امکان ہے، وائرلیس چارجنگ کیس بھی شامل کیا جائے گا۔

سمارٹ ہیڈفونز

2018ء میں ایمزان الیکسا یا گوگل اسسٹنٹ چھائے ہوئے تھے، اور اب 2019ء میں یہ ٹیکنالوجی آپ کے ہیڈفونز میں بھی موجود ہوگی۔ کوال کوم نے ایک ایسا ڈیولپمنٹ کٹ تخلیق کیا ہے جس کی مدد سے کمپنیوں کے لیے اینڈرائيڈ سمارٹ فونز کے ساتھ استعمال ہونے والے سمارٹ فونز میں الیکسا کے استعمال کی ٹیسٹنگ اور انضمام ممکن ہوں گے۔

ایپل کے ایئرپوڈز ڈبے سے نکلتے ہیں سری کو جاری کردہ احکامات پہچان سکتے ہیں۔ ایپل نے اس بات کی تصدیق تو نہيں کی ہے، لیکن ممکن ہے کہ 2019ء میں ان کے وائرلیس ایئرفونز کو اپ گریڈ کیا جائے، اور 2016ء میں متعارف ہونے والے اس ڈیزائن میں سری کو ضم کیا جائے۔

8K ٹی وی

آپ نے 4K ٹی وی کا نام تو سنا ہوگا۔ انہيں اس وجہ سے 4K کہا جاتا ہے کیونکہ وہ روایتی ہائی ڈیفینیشن (یعنی 1080p) ٹی وی کے مقابلے میں چار گنا زیادہ چوڑائی، یعنی 4،000 پکسلز کی چوڑائی، پر تصویریں دکھاتے ہیں۔ 2019ء میں 8K ٹی وی متعارف ہونے کا امکان ہے، جن میں 4K ٹی وی کے مقابلے میں چار گنا زيادہ پکسلز ہوں گے، جس کا مطلب ہے کہ ان میں تصویريں زيادہ بہتر نظر آئيں گی۔ سام سنگ نے ایک 8K ٹی وی لانچ تو کیا ہے، لیکن اس کی قیمت 15،000 ڈالر ہے، جس کی وجہ سے وہ زيادہ مقبول ثابت نہیں ہوپایا ہے۔ ماہرین توقع رکھتے ہیں کہ ایل جی اور سونی اس سال اپنے پہلے تجارتی سیٹس لانچ کریں گے۔

تحریر: الیزابیتھ ووئیک (Elizabeth Woyke)

Read in English

Authors
Top