Global Editions

خود کار گاڑیاں اور سمارٹ فون

ہم میں سے تقریباً تمام افراد اپنی اپنی گاڑیوں میں سفر کےدوران بھی انٹرنیٹ یا کلاؤڈ سروس سے مستفید ہوتے رہتے ہیں۔ مسئلہ دراصل یہ ہے کہ ہم سفر کے دوران غلط اندازمیں انٹرنیٹ استعمال کر رہے ہیں۔ ہم عموماً گاڑی میں انٹرنیٹ سمارٹ فون کے ذریعےحاصل کرتے ہیں اور یہ عمل انتہائی خطرناک ہے کیونکہ اس کی وجہ سے دوران سفر ہماری توجہ سڑک سے ہٹ جاتی ہے اور ہم دیگر معاملات اور انفارمیشنز کے حصول پر اپنی توجہ مرکوز کر لیتے ہیں جو کہ جان و مال کے نقصان کا سبب بن سکتا ہے۔ ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ ہم گاڑیوں کے لئےسینسرز اور نیٹ ورک کاایسا نظام تیار کرتے جن کی مدد سے ہماری گاڑیاں ازخود آن لائن ہو کر دنیا اور اردگرد کے ماحول سے باخبر رہتیں اور ہمیں بھی دستیاب معلومات سے آگاہ کرتیں۔ اس کے لئے آج کل گاڑیوں کے لئے ایسے نظام تیار کئے بھی جا رہے ہیں اور اب شائد کسی حد تک دستیاب بھی ہیں۔ گاڑیوں کے لئے تیار کئے جانے والے یہ نظام نہ صرف دوران سفر گاڑی کے اردگرد کے ماحول سے متعلق ڈیٹا جمع کرتے ہیں بلکہ گاڑی کو محسوس کرنے، جاننے اور پیش گوئی کی صلاحیت بھی بخشتے ہیں۔ حفاظتی نکتہ نظر سے بھی ایسے نظام کی افادیت سے انکار ممکن نہیں۔ ہمارے سمارٹ فون ہماری توجہ بٹانے کا سبب بھی بنتے ہیں ہاں یہ ضرور ہے کہ ہم چاہتے ہیں کہ ہم ہر وقت اپنے صارفین، دوست احباب اور انٹرنیٹ سے منسلک رہیں اور اس دوران جو وقت گاڑی میں یا سڑک پر سفر کے دوران گزرے اس کو بھی کسی قسم کا استثنیٰ حاصل نہ ہو۔ کسی بھی موڑپر مڑتے وقت آپ کو کوئی کال نہیں لینی چاہیے۔ اس کے لئے ضروری ہے کہ گاڑی میں ایسا خودکار نظام موجود ہو جو ازخود ترجیحات کا تعین کر سکے اور اردگرد کے ماحول سے بھی باخبر رہے اور ڈرائیور کو بھی درست موقع پر درست قدم سے آگاہ رکھ سکے۔ یعنی گاڑی میں موجود نظام آپ کو بتا سکے کہ آپ بائیں مڑنے والے ہیں لہذا ابھی کال وصول نہ کریں۔ اس کے ساتھ گاڑی میں موجود نظام اتنا موثر ہونا چاہیے کہ جب آپ گاڑی میں بیٹھ کر گھر جا رہے ہوں تو خودکار نظام آپ کے گھر کا تھرموسٹیٹ سیٹ کردے تاکہ آپ کو گھر پہنچنے پر کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ اور اس کے لئے ضروری ہے کہ گاڑی رئیل ٹائم ڈیٹا اور میپنگ نیٹ ورک سے یہ معلوم کرے کہ اب آپ گھر ہی کی طرف جا رہے ہیں۔ گاڑی میں موجود سمارٹ سسٹم نہ صرف آپ کی توجہ کے ارتکاز کو روکنے میں معاون ثابت ہو سکتا ہے بلکہ یہ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے بچنے کی تدبیر بھی کر سکتا ہے۔ یہ بھی حقیقت ہے کہ اب تیار ہونے والی کئی گاڑیاں وسیع رینج کے سینسرز سے مزین ہو جائیں گی اور یہ گاڑیاں شاہراہوں پر اپنی جیسی دیگر گاڑیوں کے ساتھ بھی رابطے رکھ سکیں گی اور اس کی وجہ سے صارف کو شاہراہوں کی صورتحال، ٹریفک کے بہاؤ وغیرہ کے بارے میں درست معلومات مل سکیں گی اور اس بنیاد پر وہ اپنے سفر کے راستوں کا تعین کر سکے گا۔ سمارٹ سسٹمز کی مدد سے نہ صرف حادثات سے بچا جا سکے گا بلکہ ترقیاتی کاموں کے دوران ٹریفک میں پڑنے والے خلل سے بھی بچاؤ ممکن ہے۔ دور حاضر میں ہم ایسی دنیا میں رہ رہے ہیں جہاں فاصلوں کا تصور نہیں ہم انٹرنیٹ کے ذریعے ایک دوسرے سے منسلک ہیں اس مرحلے میں اب ہماری گاڑیاں بھی ایک دوسرے سے منسلک ہونے جا رہی ہیں۔ ہماری گاڑی اب ہمارے دفتر، گھر یا ائیرپورٹ سے مختلف نہیں رہے گی۔ ٹیکنالوجی کی مدد سے اب ہم ہر موقع پر اطلاعات کا حصول یقینی بنا سکتے ہیں اور اب ہماری گاڑیاں بھی اس ٹیکنالوجی سے مزین ہونے کے لئے تیار ہیں۔ اب وقت آ گیا ہے کہ ہم ٹیکنالوجی سے حاصل ہونے والے فوائد سے استفادہ حاصل کریں اور اپنے روزمرہ معمولات میں بہتری لائیں۔

سیول اوز ، کونٹینیٹل انٹیلیجنٹ ٹرانسپورٹیشن سسٹمز کے چیف ایگزیکٹو ہیں اور وہ گوگل کی بغیر ڈرائیور کے چلنے والی گاڑیوں کی تیاری کے پراجیکٹ کا بھی حصہ رہے ہیں۔

تحریر: سیول اوز (Seval Oz)

Read in English

Authors
Top