Global Editions

لچکدار اور چھلانگیں لگانے کی صلاحیت کا حامل روبوٹ۔۔۔

روبوٹس کی تیاری اب کسی بھی طرح اچھنبے کی بات نہیں ہے، کئی طرح کے روبوٹس ماضی میں تیار کئے جا چکے ہیں اور اب ٹیکنالوجی کی ترقی کے ساتھ ساتھ ایسے روبوٹس بھی تیار کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے جو کہ گھریلو کام کاج کرنے کی بھی صلاحیت رکھتے ہیں۔ حال ہی میں ایک ایسا چھوٹا روبوٹ تیار کیا گیا ہے جو Parkour کر سکتا ہے۔ پارک اوور(Parkour ) ایک ایسا انضباطی تربیتی طریقہ کار ہے جسے عمومی طور پر فوجی تربیت کے لئے استعمال کیا جاتا ہے اور اس میں تربیت حاصل کرنے والوں کو کئی طرح کی رکاوٹوں کو خاصی مشکل صورتحال میں کسی سہارے کے بغیر عبور کرنا ہوتا ہے۔ آجکل اس طرح کے کھیل مغرب میںخاصے مقبول ہیں جن میں کسی بھی طرح کے حفاظتی انتظامات کے بغیر سپاٹ دیواروں پر چڑھنا یا اونچی چھلانگیں لگا کر ایک دیوار سے دوسری دیوار تک جانا وغیرہ شامل ہے۔ اب یونیورسٹی آف کیلیفورنیا بارکلے کے تحقیق کاروں نے ایک ایسا روبوٹ تیار کر لیا ہے جو ایسی خوبیوں کا حامل ہے۔ اس چھوٹے روبوٹ کا نام سالٹو Salto تجویز کیا گیا ہے۔ اس روبوٹ کا وزن ایک پاؤنڈ سے کم اور اس کی اونچائی چند سینٹی میٹر ہے۔ اس کی کارکردگی کے باعث اسے ایجاد کرنے والے ایک تحقیق کار Duncan Haldane نے اس کو Super-crouch قرار دیا ہے کیونکہ یہ چھلانگ لگانے سے پہلے کچھ لمحوں تک زمین پر جھک کر اوپر کی جانب جست لگاتا ہے۔ تاہم اس کی اصل خصوصیت تیزی سے نیچے کی جانب جھک کر دوبارہ چھلانگ لگانا ہے اور Duncan Haldane نے اس روبوٹ کو بالکل اسی انداز میں تیار کیا ہے جس طرح جنوبی افریقہ میں پائے جانیوالے بندر کی ایک مخصوص نسل چھلانگ لگاتی ہے۔ بندر کی یہ نسل Galago کہلاتی ہے اور اس کی دم لمبی اور آنکھیں بڑی ہوتی ہیں اگرچہ Galago نسل کے بندر سالٹو روبوٹ سے زیادہ لمبی چھلانگ لگانے کی صلاحیت رکھتے ہیں تاہم سالٹو کی ایک خصوصیت اسے ان سے بھی ممتاز کر دیتی ہے اور وہ ہے چھلانگ لگانے کے بعد چند لمحوں کے اندر ہی دوسری چھلانگ لگانے کے لئے خود کو تیار کر لینا۔ سالٹو ایک میٹر تک اونچی چھلانگ لگا سکتا ہے جبکہ Galago نسل کے بندر 1.7 میٹر تک لمبی چھلانگ لگانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ سالٹو مسلسل چھلانگیں بھی لگا سکتا ہے۔ مختصراً یہ کہا جا سکتا ہے کہ سالٹو ایسا روبوٹ ہے جو Parkour کی طرز پر کام کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

تحریر: مشعل رئیلائے (Michael Reilly)

Read in English

Authors
Top