Global Editions

ایک انچ کے روبوٹس قدرتی پٹھوں سے بنائے گئے ہیں

نام: رتو رمن (Ritu Raman)
عمر: 27 سال
ادارہ: ایم آئی ٹی
جائے پیدائش: بھارت

رتو رمن کے روبوٹس پولی مرز اور پٹھوں کے ریشوں سے بنائے گئے ہیں اور اپنے ماحول کو بھانپنے اور درجہ حرارت، پی ایچ، اور میکانیکی دباؤ کی نشاندہی کرنے کی صلاحیت رکھتے ہيں۔

رتو کہتی ہیں “میں ایک میکانیکل انجنیئر ہوں اور سچ پوچھیں تو ميں پچھلے ہزار سال میں ایجاد کردہ مواد سے تنگ آچکی ہوں۔ لہٰذا میں اب ایسے روبوٹس اور مشینیں بنا رہی ہوں جو حیاتیاتی مواد کا استعمال کرکے چل پھر سکتے ہيں اور اپنے ماحول کو سمجھ کر حسب ضرورت خود کو مضبوط بناسکتے ہيں یا خراب ہونے کی صورت میں خود کو ٹھیک کرسکتے ہیں۔”

رمن نے ایسے تھری ڈی پرنٹرز ایجاد کیے ہیں جن میں زندہ سیلز اور پروٹینز کی طرح کام کرنے کی صلاحیت موجود ہے۔ ان سیلز کو ایک سانچے میں ڈالا جاتا ہے جس میں وہ ٹھوس ریشے کی شکل اختیار کرتے ہیں، جس کے بعد انہيں ایک روبوٹک ڈھانچے میں منتقل کردیا جاتا ہے۔ زندہ پٹھے رکھنے والے یہ روبوٹس روشنی یا بجلی کی موجودگی میں خود بخود حرکت کرتے ہیں۔

اس وقت ان کی شکل کیڑے مکوڑوں کی طرح ہے، لیکن ابھی صرف ان روبوٹس کے قابل عمل ہونے کا تعین کیا جارہا ہے۔ رمن کہتی ہیں “کیا دوا کی فراہمی کے لیے ایسے ‘بائیوہائیبرڈز تیار کیے جاسکتے ہیں جو خود کو آپ کے جسم کے مطابق مصنوعی امپلانٹس سے بہتر ڈھال سکیں؟ کیا ان روبوٹس کو آلودہ پانی میں ڈال کر ان سے اس پانی کو صاف کرنے والے کیمیائی مواد پیدا کرنے کی توقع رکھی جاسکتی ہے؟”

تحریر: ڈین سولومن (Dan Solomo)

Read in English

Authors

*

Top