Global Editions

ورچوئل ریالٹی کواپنی بقا کی جنگ لڑنے کا مسئلہ درپیش ہے

آئی ٹی کا ایک شعبہ ورچوئل ریالٹی منظر عام پر آنے کے بعد سے لے کر اب تک اپنی بقا کی جنگ لڑ رہا ہے۔ ورچوئل ریالٹی استعمال کرنے والے صارفین بہت کم ہیں جس کی بنیادی وجہ ورچوئل ریالٹی کے بیش قیمت آلات اور اس کی پیش کش میں درپیش بعض تکنیکی مسائل ہیں۔ بظاہر ورچوئل ریالٹی میں آپ جو چاہیں کرسکتے ہیں۔ لِنڈن(Linden) لیب نے سنسار کے نام سے ورچوئل ریالٹی کا پلیٹ فارم متعارف کروا رکھا ہے جسے ورچوئل ورلڈ کی دوسری زندگی کہا جائے تو بے جا نہیں ہو گا۔ مضمون نگار راشیل میٹز کہتے ہیں کہ وہ جب اپنے گائیڈ کے ساتھ سنسار کی ورچوئل ریالٹی کی دنیا میں پہنچے تو انہوں نے سبز رنگ جبکہ گائیڈ نے سرخ رنگ کی خلائی مخلوق کا لباس پہن لیا۔ ہم ورچوئل ریالٹی میں بحری جہاز کے عرشے پر کھڑے چھوٹے سے جزیرے کو دیکھ رہے تھے۔ ورچوئل ریالٹی میں ہم کہاں کہاں جا سکتے ہیں اس کے امکانات بہت وسیع ہیں کیونکہ اگر ہم ایک جگہ نہیں رہنا چاہتے تو دوسرا ورچوئل ریالٹی کا مقام تعمیر کرسکتے ہیں۔

صارفین کی طرف سے ورچوئل ریالٹی کا استعمال ابھی ابتدائی مراحل میں ہے۔ مارکیٹ ریسرچ کینالے کے مطابق 2016ء میں ورچوئل ریالٹی کیلئے 20لاکھ ہیڈ سیٹ فروخت ہوئے۔ یہ سمارٹ فونز کی فروخت کا بہت چھوٹا سا حصہ ہے اور ہم لوگ ابھی تک ورچوئل ریالٹی کو فروغ دینے کی جدوجہد کررہے ہیں۔ سماجی ورچوئل ریالٹی کیلئے یہ ایپلی کیشن ایک زہر قاتل رکھتی ہے۔ لیکن ہیڈ سیٹس کی طرح ورچوئل ریالٹی کا یہ پلیٹ فارم بھی اپنے ابتدائی دور سے گزر رہا ہے۔ لِنڈن(Linden) لیب سنسار کا پلیٹ فارم ڈویلپ کرنے میں چار سال لگے۔تاہم ابھی بھی لِنڈن(Linden) لیب اس کے کچھ بڑے تکنیکی مسائل حل کرنے کی جدوجہد کررہی ہے مثلاً صارف جب ورچوئل ریالٹی کی دنیا میں داخل ہوتا ہے تو ابتدا میں تو اسے پتہ ہی نہیں چلتا کہ اسے کیا کرنا ہے۔ لِنڈن(Linden) لیب کے سی ای او ایبے آلٹ برگ کہتے ہیں کہ سنسار کی ورچوئل ریالٹی کے تجربات کی حد حقیقی دنیا سے قدرے مختلف اور ویب کی طرح کے ہیں۔ سنسار کا دیگر کمپنیوں سے ہٹ کر ایک مختلف بزنس ماڈل بھی ہے۔ سنسار ورچوئل ریالٹی کے پارسلز کرائے پر بھی بھیجتا ہےجس کی ماہانہ فیس 295ڈالر ہے۔ آلٹ برگ کہتے ہیں کہ اس سے صارف کو ورچوئل ریالٹی کی ملکیت نہیں ملتی۔ سنسار میں ورچوئل ریالٹی پر مبنی اشیاء مزید ارزاں کی جاسکتی ہیں۔ لِنڈن(Linden) لیب ورچوئل ریالٹی کی دیگر اشیاء مثلاً لباس، فرنیچروغیرہ فروخت کرکے بھی رقم کما سکتا ہے۔ جارج واشنگٹن یونیورسٹی کے ایسوسی ایٹ پروفیسر جان آرٹز کاروباری دنیا کی دوسری زندگی پر لیکچر دیتے ہیں وہ کہتے ہیں کہ سنسار کو ورچوئل کلاس روم کیلئے استعمال کیا جاسکتا ہے۔ اس کے پیچھے جو ٹیکنالوجی ہے وہ بہت اچھی ہے۔

تحریر: راشیل میٹز (Rachel Metz)

Read in English

Authors
Top