Global Editions

تین گنازیادہ کچرہ چھانٹنے والا روبوٹ تیار

کچرے کو چھانٹنا کوئی بھی پسند نہیں کرتا اور نہ ہی یہ کوئی مذاق ہے کیونکہ کچرا بدبودار اور تیز دھار ہو سکتا ہے۔ اس ناپسندیدہ کام کو کرنے کے لئے ایک کمپنی جس کا نام Jodone ہے نے نہایت دلچسپ طریقہ اختیار کیا ہے۔ اس کمپنی نے کچرے کو چھانٹنے کے لئے اگرچہ انسانی مزدوروں کی مدد لی ہے لیکن اس کچرے کو اٹھا کر ویسٹ باکسز میں پھینکنے کی ذمہ داری روبوٹ پر ہے۔ کچرے کو چھانٹنے کے لئے کمپنی نے ایک ویڈیو گیم کی طرز کا سافٹ وئیر تیار کیا ہے جسے مزدوروں کو دیا جاتا ہے اس سافٹ وئیر کا مانیٹر ٹچ سکرین کا حامل ہوتا ہے اور مزدور ٹچ سکرین کی مدد سے کچرے کی کٹیگری کی نشاندہی کرتا ہے اور روبوٹ اس کچرے کو متعلقہ ڈسٹ بن میں پھینک دیتا ہے تاکہ بعد میں اسے تلف کیا جا سکے۔ کمپنی کی جانب سے اس پراجیکٹ کا نام Pope/Douglas waste-to-energy facility رکھا گیا ہے۔ کمپنی کی جانب سے اس کام کو ورکرز کے لئے ایک دلچسپ مشغلہ بنا دیا گیا ہے اور اوسط تعداد سے زیادہ کچرے کی نشاندہی کرنے والے مزدور کے لئے خصوصی بونس کا بھی اعلان کیا گیا ہے تاکہ مزدور زیادہ محنت اور لگن کے ساتھ کام کرسکیں۔ اس حوالے سے Jodone کمپنی کے چیف ایگزیکٹو کول پارکر (Cole Parker) کا کہنا ہے کہ لوگ پزل حل کرنا پسند کرتے ہیں اور وہ اپنی ذہنی صلاحیتوں کو مسلسل آزمانا بھی پسند کرتے ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ کام کو ورکرز کے لئے دلچسپ بنانے سے ناپسندیدہ کام بھی نہایت آسانی سے لئے جا سکتے ہیں۔ کمپنی کے مطابق کمپنی نے اپنے تیار کردہ سافٹ وئیر اور روبوٹ کی مدد سے کچرے کی درجہ بندی کی مد میں 24 ملین ڈالرز کا اضافی ریونیو جمع کیا ہے۔ پارکر کا کہنا کہ لیبارٹری تجربات کےدوران روبوٹ کی جانب سے Pick rate اڑھائی ہزار فی گھنٹہ تھا اور یہ انسان کی جانب سے اسی طرح کے کام سے تین گنا زیادہ ہے اور روبوٹ نے یہ کام پچانوے فیصد درستی سے کیا۔ ان تجربات کی کامیابی کے بعد پائلٹ پراجیکٹ اور سافٹ وئیر کو باقاعدہ استعمال کیا گیا۔ پارکر کا کہنا تھا کہ روبوٹ کام کو سرانجام دینے میں بہترین ہیں لیکن انسانوں کا کسی بھی صورتحال میں ردعمل کا کوئی ثانی نہیں انسان اپنی ذہانت سے کسی بھی مشکل صورتحال سے نمٹ سکتے ہیں۔ اس حوالے سے اسی شعبہ سے منسلک ایک کمپنی کے چیف ایگزیکٹو اور بانی سکاٹ کیسل (Scott Cassel) کا کہنا ہے کہ کچرے کی درجہ بندی کے لئے Jodone کی جانب سے تیار کی جانیوالی ٹیکنالوجی نہایت اہم ہے اور یہ اس شعبے میں کافی حد تک مددگار ثابت ہو سکتی ہے تاہم اس طرح کے سافٹ وئیر کو گھریلو کچرے کے لئے بھی استعمال کیا جانا چاہیے۔

تحریر: ریچل کریمین (Rachel Kremen)

Read in English

Authors
Top