Global Editions

پاک وہیلز نے ہیکنگ اطلاعات کی تردید کر دی

گاڑیوں کی خریدوفروخت کے لئے مشہور پاکستانی ویب سائٹ پاک وہیلز نے کئی روز سے چھپنے والے مضامین جن میں کہا گیا تھا کہ اس پاکستانی ویب سائٹ پر ہیکرز کی جانب سے حملہ کیا گیا ہے اور چھ لاکھ سے زائد صارفین کی معلومات کو چرا لیا گیا ہے کی آخر کار تردید جاری کر دی ہے۔ پاک وہیلز کمپنی کے ایک ترجمان نے ان اطلاعات کو بے بنیاد قرار دیا کہ ان کی کمپنی کی ویب سائٹ سائبر حملہ کیا گیا ہے۔

ٹیکنالوجی ریویو پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے پاک وہیلز کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ویب سائٹ کو نہ ہی ہیک کیا گیا ہے اور نہ ہی کسی صارف کی معلومات چرائی گئی ہیں ایسی اطلاعات بے بنیاد ہیں۔ تاہم ان اطلاعات کے بعد کمپنی کی جانب سے صارفین کو ایک ای میل کی گئی ہے جس میں ان سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ اپنے اپنے اکائونٹس کی حفاظت کے لئے پاس ورڈز تبدیل کر لیں۔ اس کے ساتھ ساتھ ہی ویب سائٹ کے حوالے سے مزید حفاظتی تدابیر اختیار کی گئی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ صارفین کو ای میل بھی صرف اس وجہ سے کی گئی ہے کہ کمپنی vBulletin سافٹ وئیر سے کسی دوسرے سافٹ وئیر پر منتقل ہو رہی تھی جس کی بناء پر صارفین سے یہ درخواست کی گئی۔

پاک وہیلز فورم پر ایک بلاگ پوسٹ میں کہا گیا ہے کہ vBulletin سافٹ وئیر سے کسی دوسرے سافٹ وئیر پر منتقلی کا فیصلہ بہت ہی سادہ ہے کیونکہ یہ کارکردگی کا مسئلہ تھا۔ ترک کئے جانیوالے سافٹ وئیر کا انٹرفیس اتنا آسان نہیں تھا کہ اسے صارفین آسانی سے استعمال کر لیتے تاہم vBulletin سے منتقلی کا فیصلہ بھی اتنا آسان نہیں تھا اور اس حوالے تمام پہلوئوں کا اچھی طرح جائزہ لینے کے بعد کمپنی نے ایک دوسرے سافٹ وئیر پر منتقل ہونے کا فیصلہ کیا۔ نیا سافٹ وئیر کارکردگی کے اعتبار سے بہت بہتر ہے اور آسان فہم ہے۔

تاہم 23 دسمبر کو پاک وہیلز کی جانب سے صارفین کو جاری کی جانیوالی ای میل میں کہا گیا تھا کہ ’’ہم حال ہی میں سیکورٹی کی خلاف ورزی کے واقعات کا سامنا کر رہے ہیں جس کی وجہ سے صارفین کی معلومات کے افشا ہونے کا خدشہ ہے۔ سیکورٹی کی خلاف ورزی کی بنیادی وجہ ہمارے زیر استعمال سافٹ وئیر vBulletin میں پائے جانیوالی خامیاں ہیں۔ ان خامیوں کو جلد ہی دور کر کے فورم کی حفاظت کو یقینی بنا دیا جائیگا‘‘ واضح رہے کہ پاک وہیلز پاکستان کی 65 ویں بڑی ویب سائٹ ہے اور گاڑیوں کی خرید وفروخت کے لئے آن لائن پلیٹ فارم مہیا کرتی ہے۔

تحریر: ٹی آر پاکستان (TR Pakistan)

Read in English

Authors
Top