ہوا سے حاصل ہونے والی توانائی کے فوائد اور مسائل

کیا قابل تجدید توانائی کے طور پر ہوا کی طاقت سے پیدا کی جانے والی بجلی کوئلے اور گیس کے مقابلے میں سستی ہے یا جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے سستی کی جاسکتی ہے؟ کیا یہ ملکی ضروریات کو پورا کرنے کے قابل ہے؟ ہوا کی طاقت سے بجلی حاصل کرنے میں لاگت کے علاوہ اورکیا مسائل درپیش ہیں؟ یہ وہ سوالات ہیں جن پر ماہرین غور کررہے ہیں۔ زیر نظر فیچر امریکی ریاست ٹیکساس کی مثال کو مدنظر رکھتے ہوئے اس پر سیرحاصل بحث کرتا ہے۔ امریکی ریاست ٹیکساس میں کسانوں کو عموماً خشک سالی کا سامنا رہتا ہے لیکن ان کے مالی حالات ہوا سے بجلی پیدا کرنے والے ٹربائن لگے ہونے کے سبب اتنے برے نہیں ہیں۔ رولان پیٹی (Ralan Petty) بھی ان کسانوں میں سے ایک ہے۔ انہوں نے اپنی بارانی زمین پرکپاس کی فصل اگا رکھی ہے لیکن بارش نہ ہونے کے سبب ضائع جارہی ہےتاہم اسے خشک سالی سے کوئی خاص مالی فرق نہیں پڑتا۔ ٹیکساس کے مغرب میں وسیع ہارس ہالو علاقے میں پیٹی رولان کے 75مربع میل فارم پرحکومت نے اس سے لیز پر زمین لے کر 430ہوا سے بجلی بنانے والے ٹربائن لگائے ہوئے ہیں۔ اسی طرح کے ٹربائن پورے علاقے میں پھیلے ہوئےہیں۔ رولان پیٹی کو ہر وِنڈ ٹربائن سے 75سو ڈالر سالانہ کی لیزنگ فیس حاصل ہوتی ہے۔ ان ونڈ ٹر بائنز سے رولان پیٹی اور اس کے بھائیوں کو ہزاروں ڈالر سالانہ آمدن ہو جاتی ہے۔ امریکہ میں صرف ٹیکساس کی ریاست ہوا سے بجلی پیدا کرنے والے ٹربائنز سے 18000میگاواٹ بجلی پیدا کررہی ہے۔ اب ٹیکساس مزید ہزاروں میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کیلئے ٹربائنز لگا رہا ہے اس سے ٹیکساس کی بجلی کیلی فورنیا کے برابر ہو جائے گی۔ پندرہ سال پہلے اسعلاقے میں وِنڈ ٹربائن کپاس اور اجناس کے فارمز ، تیل کے کنویں، خشک دریااور چھوٹے قصبات تھے۔ ونڈ ٹربائنز اس علاقے میں خوشحالی لے کر آئے۔ رولان کے بھائی رَس (Russ)نے مجھے بتایا کہ 2011ء میں خشک سالی کے سبب لوگوں نے دیوالیہ قرار دینے کیلئے بنکوں میں درخواستیں دائر کردیں تھیں۔ ٹربائن لگنے سے پہلے ہم اپنی زمین بیچنے کی سوچ رہے تھے۔ اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ایک بڑی ریاست یا ملک کسی رکاوٹ کے بغیر صحیح پالیسیوں اور بنیادی ڈھانچے کے ساتھ قابل تجدید توانائی کے ذریعے اچھی خاصی رقم حاصل کرسکتا ہے۔ امریکہ میں کُل توانائی کا 4.5فیصد ہوا سے پیدا ہونے والی بجلی سے حاصل ہوتا ہے امریکی محکمہ توانائی نے 2050ء تکہوا سے بجلی پیدا کرنے کا ہدف 35فیصدمقرر کیا ہے۔ ٹیکساس میں تو گزشتہ سردیوں میں 40فیصد بجلی ہوا کے ٹربائن سے پیدا ہوئی۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ہوا کی طاقت کیا حاصل کرسکتی ہے اور کیا نہیں۔ مجموعی طور پر ہوا کی طاقت سے بجلی 20فیصد سے کم حاصل ہوتی ہے۔ گرمیوں کے موسم میں جب ہوا نہیں چلتی تو اس وقت بجلی بالکل پیدا نہیں ہوتی۔ ہوا سے بجلی پیدا کرنے کے باوجود 2013ء میں کاربن کا اخراج 5فیصد رہا۔

مسابقتی قابل تجدید توانائی زون (Competitive Renewable Energy Zone)پروگرام کے تحت 2007ء میں بجلی کی تقسیم کیلئے 7ارب ڈالر کی منظوری دی گئی۔ میرے ذہن میں سوال گردش کررہے تھے کہ ہوا کی توانائی حاصل کرنے کی آخری حد کیا ہوسکتی ہے اور ٹیکساس گرڈ کتنی توانائی ذخیرہ کرسکتا ہے؟اور کیا کوئی دوسری امریکی ریاست یا ملک وہ کچھ حاصل کرسکتا ہے جو ٹیکساس نے کیا۔

توقعات

گائے پائن نے کیلیفورنیا سے چھ ماہ کی وِنڈ ٹربائن ٹیکنیشن کی تربیت حاصل کرکے کام شروع کیا ۔ اب اس کے پاس 65ٹیکنیشن ہیں۔ گائے پائن مجھے ٹیکساس کے حالیہ قائم کردہ وِنڈ ٹربائن فارم ویک ونڈ انرجی سنٹر (Wake Wind Energy Center)پر لے کر گیا جو 66 سکوائر میل پر پھیلا ہوا ہے اور جس سے 257کلو واٹ بجلی حاصل ہوتی ہے۔ اس توانائی مرکز پر جنوری میں کام شروع ہوا اور اکتوبر میں صرف دس ماہ کے عرصے میں بجلی کی پیداوار شروع ہو گئی تھی۔ ٹیکنالوجی کی تیز رفتار ترقی نے ونڈ ٹربائنز کو بہت سستا کردیا ہے اور اس کی بجلی کی قیمتیں گیس کی بجلی کے برابر آگئی ہیں۔ ویک ونڈ کی بجلی ڈیلاس میں بگ ڈیٹا آپریٹ کرنے والی دو بڑی کمپنیوں بائبر گلاس جائنٹ اوونز کارننگز اور ایکوئینکس کی ضروریات پوری کرنے کیلئے فراہم کی جاتی ہے۔ اصل میں بڑی بڑی کمپنیاں اپنے ونڈ پاور ٹربائن لگا رہی ہیں۔ مثلاً فیس بُک نے بھی فورٹ ورتھ میں اپنے ایک ارب ڈالر کے ڈیٹا سینٹر کیلئے 200میگا واٹ کے ہوا کی توانائی کے ٹربائن لگانے کا اعلان کیا ہے۔ اسی طرح گوگل پہلے ہی ایماریلو کے قریب ونڈ فارم پر 75ملین ڈالر خرچ کرچکا ہے اور اب انونرجی کمپنی کے اشتراک سےلوب بوک(Lubbock)میں 225میگا واٹ کے ونڈ انرجی ٹربائن لگانے کا اعلان کیا ہے۔ ٹیکساس حکومت نے 2002ء میں ونڈ ٹربائنز سے پیدا ہونے والی بجلی پرسے تمام پابندیاں ہٹا دی تھیں۔ سویٹ واٹر شہر کے اٹارنی روڈ ویٹسیل کہتے ہیں کہ ٹیکساس میں ونڈ پاور فارم لگانے کیلئے کسی قانون، کسی ریگولیٹری ایجنسی یا اجازت نامے کی ضرورت نہیں ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ آپ اپنے رسک پر سرمایہ کاری کرکے ونڈ فارم لگا سکتے ہیں۔ دوسرے معنوں میں نقصان کی صورت میں آپ اپنے سرمائے سے بھی ہاتھ دھو سکتے ہیں۔ ارب پتی آئل مین ٹی بون پکنز (T. Boone Pickens)نے ٹیکساس میں دنیا کے سب سے بڑے ونڈ فارم کیلئے دو ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی جس کے بعد ناگزیر وجوہات کی بنا پر اس نے منصوبے سے ہاتھ اٹھا لیا۔

نہ رکنے والا کام

میں نے بجلی کی تقسیم کے سب سٹیشن کلیر کراسنگ کا دورہ کیا جو الیکٹرک ٹرنسمیشن ٹیکساس نے 42ملین ڈالر کی لاگت سےتعمیر کیا تھا۔ کلیر کراسنگ سب سٹیشن 345کلوواٹ بجلی شمال میں 500میل دور ایماریلو سے سان انتونیو اور اوڈیسے سے 350میل مشرق میں ڈیلاس کو تقسیم کی ہے۔ کلیر کراسنگ سب سٹیشن شمال اور مغرب کے ونڈ فارمز سے بجلی حاصل کرکے مشرق میں بھیجتا ہے۔ الیکٹرک ٹرانسمیشن ٹیکساس نے سی آر ای زیڈ کے تحت 3600میل طویل ٹرانسمیشن لائنوں کا پانچواں حصہ خود بچھا یا تھا۔ ٹیکساس امریکہ کی واحد ریاست ہے جس کا اپنا پاور گرڈ ہے۔ امریکہ میں تین پاور گرڈ ہیں جن میں ایسٹرن انٹرکونیکشن، ویسٹرن انٹرکونیکشن اور الیکٹرک ریلائیبلیٹی کائونسل آف ٹیکساس (ارکوٹ) ERCOTشامل ہیں۔ پہلے دو پاور گرڈ بہت سی ریاستوں کو بجلی سپلائی کرتے ہیں جبکہ ارکوٹ صرف ٹیکساس کو بجلی سپلائی کرتا ہے۔

وِنڈ ٹربائن سے حاصل ہونے والی بجلی کے فوائد کے ساتھ کچھ مسائل بھی ہیں۔ ویسٹ ٹیکساس میں اے اینڈ ایم یونیورسٹی میں متبادل توانائی کے ادارے کے سابق ڈائریکٹرکینتھ سٹارچرکہتے ہیں کہ اب مسئلہ یہ ہے کہ ہوا سے پیدا ہونے والی بجلی نامیاتی ایندھن کی بجلی سے زیادہ مہنگی ہے۔ خصوصاً جب ہمیں قدرتی گیس سے کم قیمت بجلی حاصل ہو رہی ہو تو وفاقی اور ریاستی مدد کے بغیر ونڈ ٹربائن فارمز کو کیسے ترجیح دی جا سکتیہے؟ اگرچہ یہ توقع کی جاسکتی ہے کہ کسی دن ملکی توانائی کا 35فیصد ہوا سے چلنے والی بجلی سے حاصل ہو گا لیکن اس کا انحصار ہوا کی مطلوبہ رفتار پر ہے جو تبدیل ہوتی رہتی ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ گرڈ آپریٹر ہر لمحہ طلب سے مطابقت پیدا کرنے کیلئے بجلی کی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہیں۔ اس طلب کو پورا کرنے کیلئے گیس سے بجلی پیدا کرنے کا انتظام ہونا چاہئے تاکہ جب ہوا رک جائے تو گرڈ کی طلب کو پورا کیا جا سکے۔ ونڈ ٹربائن سے بجلی کی فراہمی اس وقت رک سکتی ہے کہ جب ہوا کی رفتار 65میل فی گھنٹہ سے زیادہ ہو۔ ہوا کی رفتار میں ردوبدل توانائی کے معیار پر بھی اثر انداز ہوتی ہے۔ کیونکہ ہوا کی رفتار میں ردو بدل سے بجلی کے وولٹیج اور فریکوئنسی پر فرق پڑتا ہے۔ قومی قابل تجدید توانائی لیبارٹری کے ایک جائزے کے مطابق ہوا سے پیدا ہونے والی بجلی کے متذکرہ مسائل کی وجہ سے امریکہ کا مشرقی حصہ اس پر انحصار کرنے کو تیار نہیں ۔ کیا یہ ممکن ہے کہ ہوا کی تیز رفتار ، ونڈ ٹربائن کیلئے مسائل پیدا کرے؟ اس کے جواب میں جاپان کی سومیٹومو (Sumitomo)کمپنی کے امریکی ڈویژن کے نائب صدر بِل کینن کہتے ہیں کہ ایسا ممکن ہے۔ مطلوبہ مقدار سے جتنی زیادہ تیز ہوا ہو گی اتنے ہی زیادہ بڑے مسائل ہوں گے۔ جبکہ ٹربائنز کو چلانے کیلئے ہوا کی کتنی مقدار درکار ہے اس کا کوئی بھی درست جواب نہیں دے سکتا۔ ٹیکنالوجی کی ترقی سے ہوا سے حاصل کردہ توانائی کو زیادہ سے زیادہ ذخیرہ کرنا ممکن ہے لیکن کتنی مقدار میں توانائی ذخیرہ کی جاسکتی ہے؟ اس سوال کا جواب اگلے پانچ سے دس سالوں میں ٹیکساس سے تلاش کیا جاسکتا ہے۔

Read in English

Authors

*

Top