Global Editions

موبائل فونز سے کینسر ہونے کے متعلق اب تک کوئی ثبوت نہيں مل سکا

کیا موبائل فونز سے کینسر ہوسکتا ہے؟ ایف ڈی اے (FDA) کے ایک جائزے کے مطابق اب تک انہيں اس کے متعلق کوئی ثبوت نہیں ملا۔ تاہم وہ اعتراف کرتے ہیں کہ اس موضوع پر مزید ریسرچ کی ضرورت ہے۔

نتائج: اس رپورٹ میں 2008ء اور اگست 2019ء کے دوران جانوروں پر 125 اور انسانوں پر 75 تجربات کا جائزہ لیا گيا۔ آخر میں ایف ڈی اے نے یہ بتایا کہ ریڈیوفریکوئینسی ریڈيشن (radiofrequency radiation – RFR) اور ٹیومرز یعنی کینسر کے درمیان کوئی ”متواتر تعلق“ نہيں پایا گیا۔

تاہم ان مطالعہ جات میں کئی خامیاں موجود تھیں۔ سب سے بڑی خامی یہ تھی کہ چوہے انسانوں کی طرح موبائل فونز استعمال نہيں کرتے، جس کی وجہ سے انسانوں کے موبائل فونز کے استعمال کی نقالی کرنا ناممکن ثابت ہوا۔ جانوروں پر کیے جانے والے مطالعہ جات میں چوہوں کو پوری طرح ریڈیشن میں نہلایا گيا، لیکن حقیقت یہ ہے کہ موبائل فونز استعمال کرنے کے دوران عام طور پر اتنی زیادہ ریڈيشن نہیں پیدا ہوتی۔ انسانوں پر کیے جانے والے مطالعہ جات میں صرف گھر والوں کو جاری کردہ سرویز اور مشاہدات سے حاصل کردہ ڈیٹا کا استعمال کیا گيا، جن میں غلطی کی گنجائش کافی زيادہ ہے۔

اس کے 5G پر کیا اثرات ہوسکتے ہيں؟ 5G کی فریکوئینسی 4G سے کہیں زيادہ ہے، جس کے سبب کینسر کے متعلق خدشات نے جنم لینا شروع کیا اور کیلیفورنیا کے علاوہ یورپی اتحاد میں بھرپور احتجاج بھی سامنے آیا۔ اپنی رپورٹ سے منسلک ایک نوٹ میں ایف ڈی اے نے کہا کہ 5G کی جانب بڑھتی ہوئی دنیا میں موبائل فونز کے انسانی صحت پر اثرات کے متعلق سمجھ بوجھ حاصل کرنا نہایت ضروری ہے۔ یہ ٹیکنالوجی موجودہ FCC کے ایکسپوژر کے رہنما اصولوں کے زمرے میں آتی ہے جن کے مطابق 300 کلوہرٹز سے لے کر 100 گیگاہرٹز کے درمیان ریڈيشن کو انسانوں کے لیے محفوظ قرار دیا گیا ہے (اس وقت 5G کی رینج 25.20 گیگاہرٹز سے 100 گیگاہرٹز کے درمیان ہے۔)

مزيد تحقیق کی ضرورت ہے: ایف سی سی کافی عرصے سے اس بات پر زور دے رہی ہے کہ 5G انسانوں کے لیے محفوظ ہے اور ان کی اس رپورٹ سے ان کے دعوں کی تصدیق ہوگئی ہے۔ ریسرچرز لکھتے ہيں کہ ”موجودہ ثبوت کے مطابق اگر کوئی خطرہ ہے تو وہ کینسر کی قدرتی شرح اور معلوم شدہ دیگر عناصر کے مقابلے میں بہت کم ہے۔“ تاہم ایف ڈی اے نے اعتراف کیا ہے کہ ریسرچرز کو انسانوں میں، خاص طور پر ایسے افراد میں جن کا کینسر کا خطرہ زیادہ ہے، موبائل فونز کے اثرات کا مزيد مطالعہ کرنے کی ضرورت ہے۔

تحریر: تانیہ باسو (Tania Basu)

ۃصویر: جیک سلوپ (Jack Sloop) بذریعہ ان سپلیش (Unsplash)

Read in English

Authors

*

Top