Global Editions

لاہور میں رکشے بھی ڈیجیٹل ہو گئے۔۔۔۔

پاکستان کے شہروں میں سفر کے لئے جو سواری سب سے زیادہ مقبول اور عوام کی دسترس میں ہے وہ ہیں رکشہ اور اب معروف کمپنی Uber نے عوام کی بڑی تعداد کی سہولت کے لئے Uber Auto سروس شروع کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

Uber Auto سروس کا افتتاح گزشتہ دنوں لاہور میں ہوا۔ چئیرمین پی آئی ٹی بی ڈاکٹر عمر سیف نے اس سروس کا افتتاح کیا اور رکشہ کی سواری بھی کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کمپنی کے چیف ایگزیکٹو زہیر یوسف زئی کا کہنا تھا کہ Uber Auto سروس کا آغاز پاکستان کے ان شہریوں کے لئے ہے جو ٹیکسی سروس سے استفادہ حاصل کرنے کی استطاعت نہیں رکھتے۔ یہ رکشہ سروس عام شہریوں کی سہولت کے لئے شروع کی گئی ہے اور امید ہے کہ اس رکشہ سروس سے شہریوں کی بڑی تعداد مستفید ہو گی۔پاکستان کی گنجان آباد گلیوں اور بازاروں میں سفر کے لئے رکشہ ایک باآسانی دستیاب سواری ہے اور اگرچہ ہر رکشہ کسی نہ کسی حد تک آرٹ کا نمونہ ہے تاہم اب Uber نے اس سواری میں مزید جدت پیدا کر دی ہے۔اب رکشہ میں سفر بہت ہی آسان ہو گیا ہے اب سفر کرنے والوں کو اپنے سمارٹ فون موجود ایپ کی مدد سے Uber رکشہ کو بلانا ہے، مقررہ وقت پر رکشہ آپ کے دروازے پر ہو گا اور آپ نہایت اطمینان کے ساتھ شہر کے کسی بھی حصے تک جا سکیں گے۔

Uber کے افریقہ میں توسیعی شعبے کے سربراہ Loic Amado کا کہنا ہے کہ Uber کی جانب سے شہریوں کی سہولت کے لئے شروع کی جانے والی رکشہ سروس کا ایک مقصد شہریوں کو سفر کی کم خرچ سہولت فراہم کرنا اور دوسری جانب وزیراعلی پنجاب کے گرین پنجاب پروگرام پر عمل کرنا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ Uber صارفین تک رسائی بڑھانا چاہتی ہے۔

Uber کی جانب سے رکشہ سروس کا آغاز کمپنی کی جانب سے اٹھایا جانیوالا پہلا قدم نہیں ہے اس سے پہلے بھی یہ سروس بھارت میں سال 2015 ءمیں شروع کی گئی تھی تاہم اس سروس کو صرف آٹھ ماہ بعد بند کرنا پڑا۔ تاہم بھارت میں اس سروس کی بندش کی وجوہات کمپنی کی جانب سے ابھی تک سامنے نہیں لائی گئیں۔

تحریر: نشمیا سکھیرا (Nushmiya Sukhera)

Read in English

Authors
Top