Global Editions

الیکٹرک گاڑیاں بنانے والا ادارہ فیراڈے کا مستقبل۔۔۔

میڈیا کوریج غیر مستحکم ہو سکتی ہے تاہم چینی ارب پتی Jia Yueting کے سرمایہ سے چلنے والی انکی خفیہ کمپنی اپنی پراڈکٹ کو مارکیٹ میں لانے کے لئے کی جانیوالی تاخیر نقصان دہ ثابت ہو سکتی ہے۔ اس کمپنی کی جانب سے متعدد مرتبہ معروف کار ساز ادارے ٹیسلا کے مقابلے میں آنے کا اعلان کیا گیا اور کہا گیا وہ بھی ٹیسلا سے بہتر الیکٹرک کار مارکیٹ میں لائے گی تاہم اب تک بھاری سرمایہ کاری کے باوجود یہ کمپنی ایک گاڑی بھی تیار نہیں کر سکی ہے اور اب خدشات ظاہر کئے جا رہے ہیں کہ یہ کمپنی کہیں ختم ہی نہ ہو جائے۔ Verge کی جانب سے تحریر کئے جانیوالے ایک نوٹ میں کہا گیا ہے کہ کمپنی انٹلیکچوئل پراپرٹی کی آڑ میں چھپی ہوئی ہے اور یہ کمپنی اب تک سرمایہ کاروں اور سپلائرز کی نظروں سے بھی اوجھل ہے تاہم اب Verge اور بزفیڈ کی جانب سے کی جانیوالی تحقیق سے معلوم ہو ا ہے کہ کمپنی پیسہ پانی کی طرح بہا رہی ہے اور اس پر قرضے بڑھتے چلے جا رہے ہیں اور اب حال ہی میں چینی ارب پتی جیا نے فیراڈے سے ملازمین کو اپنے پراجیکٹ میں شامل کر لیا ہے تاکہ بغیر ڈرائیور کے چلنے والی گاڑی کی تیاری کی سمت میں پیشرفت کی جا سکے۔ جیا کی کمپنی LeEco کے ملازمین کا کہنا ہے کہ اس گاڑی کے لئے سافٹ وئیر کا اگرچہ عوامی سطح پر اعلان کیا جا چکا ہے تاہم یہ ابھی تک ایک ہوائی امر ہے اور یہ ابھی تک تیار ہی نہیں ہوا ہے۔ اس انکشاف کے باوجود کمپنی مسلسل یہ اصرار کر رہی ہے کہ کہ ان کی جانب سے تیار کی جانوالی کار اپنی افادیت اور موثر کارکردگی سے دنیا کو حیران کر دیگی۔ اس گاڑی کے حوالے سے تیار کی جانیوالی تشہیری ویڈیوز میں یہ تاثر دینے کی کوشش کی گئی ہے کہ یہ گاڑی فیراری اور ٹیسلا کو پیچھے چھوڑ دیگی۔ فیراڈے کے ایگزیکٹوز کا کہنا ہے کہ اس گاڑی میں 100 سے 120 کلوواٹ کی بیٹری نصب کی جا رہی ہے۔ سو کلو واٹ کی بیٹری ٹیسلا کی بڑی بیٹری پیک کے مساوی ہے۔ کمپنی کے ایگزیکٹوز کی جانب سے یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ عوام الناس اس گاڑی کی ملکیت حاصل نہیں کرینگے بلکہ اسے استعمال کے لئے سبسکرائب کرینگے اور وہ جب چاہیں فیراڈے کی بغیر ڈرائیور کے چلنے والی گاڑی کو سفر کے لئے طلب کر سکتے ہیں۔ بہر طور کمپنی کے اعلانات اپنی جگہ تاہم یہ ضرور ہے کہ کمپنی کی جانب سےآئندہ برس جنوری میں لاس ویگاس میں منعقد ہونے والے کنزیومر الیکٹرانک شو میں اپنی ماڈل کار کی نماش کا بھی اعلان کیا ہے اور اگر کمپنی اپنے اس اعلان پر کاربند رہتی ہے تو اس گاڑی سے متعلق پیدا ہونے والے شکوک وشبہات رفع ہو جائیں گے اور ایسا ہونا کمپنی کے مستقبل کے لئے بھی اچھا ہے کیونکہ اگر کمپنی اپنے اعلان پر عمل نہیں کرتی تو فیراڈے کے لئے مستقبل کا سفر انتہائی مشکل ہوتا چلا جائیگا۔

تحریر: مشعل رئیلائے (Michael Reilly)

Read in English

Authors
Top