Global Editions

آئی کیا نے ہوٹلز اور کی طرح کام کرنے والی خودکار گاڑیوں کا ڈیزائن پیش کیا ہے

فرنیچر بنانے والی اس دکان نے خودکار گاڑیاں استعمال کرنے کے انوکھے طریقے سوچ رکھے ہيں۔

کوپن ہیگن میں واقع آئی کیا (IKEA) کے سپیس ٹین (SPACE10) کے "مستقبل کے لیب" کا خیال ہے کہ ایک دفعہ گاڑیاں خود سے چلنا شروع ہوجائيں، ہمارے پاس بہت فارغ وقت ہوگا جس میں ہم بہت کچھ کرسکیں گے۔ ان گاڑیوں کو کن کن چیزوں کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے؟ سپیس ٹین نے کچھ آئيڈیاز پیش کیے ہيں۔

ان میں سے چند آئيڈياز کافی کارآمد بھی ثابت ہوسکتے ہیں۔ خودکار طور پر چلنے والے کیفے یا پاپ اپ دکانوں کا خیال تو سب ہی کو آیا ہوگا۔ بلکہ کیلیفورنیا میں چلنے والی خودکار گاڑیوں کی پچھلی سیٹوں پر سودا سلف لدا ہوا بھی نظر آتا ہے۔

تاہم کچھ آئيڈیاز، خاص طور پر پسمانہ علاقہ جات میں وسائل فراہم کرنے والی گاڑیوں پر مزید سوچ بچار کی ضرورت ہے۔ مثال کے طور پر کسی خودکار ہیلتھ کلینک کے لیے دور دراز علاقوں میں طبی امداد فراہم کرنا واقعی مشکل ثابت ہوسکتا ہے۔ تاہم ان تجاویز کو دیکھ کر ہم یہ ضرور اندازہ لگاسکتے ہيں کہ خودکار گاڑیوں کی وجہ سے ہماری روزمرہ کی زندگی میں کس طرح انقلاب آسکتا ہے؟

اگر آپ دفتر جاتے ہوئے راستے میں ہی میٹنگ کرلیں؟ Office on Wheels کے ساتھ آپ نہ صرف سفر کے دوران دفتر کا کام نبٹاسکتے ہیں بلکہ ایک موبائل کانفرنس روم میں میٹنگز بھی منعقد کرسکتے ہیں۔

اس کیفے سے سفر کے دوران گپے بھی لگائيں

کیوں نہ منڈی سے سبزیاں خریدی جائيں؟

یا آئی کیا کی منی دکان ہی کو گھر بلائيں۔

اپنی گاڑی میں سونے کے بارے میں آپ کا کیا خیال ہے؟ سپیس ٹین کی یہ خودکار گاڑی ہوٹل کے کمرے جتنی آرام دہ ہوگی۔

سیاحت کے غرض سے بنائی جانے والی اس بس کی کھڑکیاں آگمینٹڈ رئیلٹی کی تصویریں دکھاتی رہتی ہے تاکہ مسافر اپنے اطراف کے منظروں سے زیادہ لطف اندوز ہوسکیں۔

سپیس ٹین کا دعویٰ ہے کہ خودکار گاڑیوں سے طبی شعبے میں کام کرنے والے افراد کے لیے موبائل کلینکس کے ذریعے پسماندہ علاقہ جات کو سہولیات فراہم کرنا اور بھی آسان ہوجائے گا۔

تحریر: الیزابیتھ ووئیک(Elizabeth Woyke)

Read in English

Authors
Top