Global Editions

کرپٹوکرنسی ہولڈرز اپنا ٹیکس کیسے ادا کریں گے؟

امریکی قانون سازوں نے ڈیجیٹل کرنسیوں کےحوالے سے آئی آر ایس کواپنی پالیسیوں کو واضح کرنے کے لئے پر زور دیا ہے۔

امریکہ کی کرپٹو کرنسی ٹیکس کی پالیسی ہر کسی کو الجھن کا شکار کر رہی ہے اور امریکہ کے انٹرنل ریونیو سروس(آئی آر ایس) کے لئے یہ وقت انتہائی اہم ہے کہ اس مسئلہ کا حل تلاش کرے اور اس کی وضاحت کرے۔ یہ 11 اپریل کو پارلیمان کے دونوں پارٹیوں کے 21 ممبروں کے گروپ کا آئی آر ایس کو سخت الفاظ میں بھیجے جانے والے ایک خط کا خلاصہ ہے۔

مینسٹوآنا سے سے تعلق رکھنے والے ٹام ایمر قانون ساز کی قیادت میں پالیسی ایڈوکیٹس کو جوائن کیا اور آئی آرس ایس کو 2014 میں شائع ہونیوالی ہدایات کو اپ ڈیٹ کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے لکھا، "مجازی کرنسیوں پر وفاقی ٹیکسوں کے حوالے سےبہت سارے سوالات پر ابہام موجود ہیں۔" ایمر اور اس کے ساتھیوں کا کہنا ہے کہ اضافی رہنمائی کی "فوری ضرورت" ہے۔

ترجیحات کی فہرست میں سب سے اوپر منافع کے اوپر کھلے سوالات ہیں جو کہ ایک سرمایہ کار اپنی انوسٹمنٹ کو بیچتے وقت منافع کی صورت میں حاصل کرتا ہے۔

آئی آر ایس کی طرف سے پانچ برس پہلے شائع کردہ ابتدائی اصولوں کے مطابق "مجازی کرنسی" کووفاقی ٹیکس کےمقاصد کے حصول کے لئے استعمال کیا جائے گا۔ اس کوخریدنے اور رکھنے پر ٹیکس نہیں ہے۔ لیکن اگر آپ اپنی کرپٹو کرنسی کوکسی چیز کو خریدنے کے لئے استعمال کرتے ہیں یہاں تک کہ ایک کپ کافی کے لئے بھی تو آپ کو یہ یقینی بنانا پڑے گا کہ آپ کرپٹو کرنسی کی قیمت کے درمیان فرق کا اندازہ رکھیں جب آپ نے پہلے اسے خریدا اور جب آپ نےاسے خرچ کیا۔ اگر اس کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے تو اس کو منافع شمار کریں اور آپ ٹیکس ادا کریں۔

لیکن آئی آر ایس نے اس بات کی وضاحت نہیں کی ہے کہ سرمایہ کاری کا حساب کرتے ہوئے لوگ اپنی کرپٹو کرنسیوں کی قدر کا تعین کس طرح کریں جب ان کو نفع حاصل ہو۔ یہ مشکل ہے کیونکہ کئی ڈیجیٹل کرنسی کئی ایکس چینجز پر درج ہیں اور قیمتیں ایک جیسی نہیں ہیں۔ ایمر اوراس کےساتھیوں نے آئی آر ایس کو کہا ہے کہ وہ زیادہ واضح انداز میں ہدایات وضع کریں۔

قانون سازوں نے ہارڈ فورکس کے مسئلے کو بھی اٹھایا ہے جو اس وقت ہوتی ہےجب ایک بلاک چین نیٹ ورک دو میں تقسیم ہوتا ہے اور ان میں سے ہر ایک کے پاس اپنا کوائن ہوتا ہے۔ ایسا ہو سکتا ہے اگر نیٹ ورک کے ارد گرد کمیونٹی واضح طور پر تقسیم ہوجائے ۔ مثال کے طور پر، تجویز کردہ تکنیکی تبدیلیوں پر۔ لہٰذا اسی وجہ سے بٹ کوائن کیش بٹ کوائن کے فورک کے طور پر 2017 میں بنا۔

پچھلے سال بٹ کوائن کیش خود دو میں تقسیم ہو گیا۔ جب ایک چین الگ ہو تی ہے تو اصل کوائن کے مالک کو نئے کوائن کی وہی قیمت ملتی ہے۔ کیا یہ آمدنی ہے؟ اس پر ٹیکس کس طرح لگایا گیا ہے؟ آئی آر ایس نے اس حوالے سے یہاں کوئی ہدایت جاری نہیں کی ہیں۔

اگرچہ "بہت سے دوسرے کھلے سوالات باقی " ہیں لیکن ایمر اور اس کے شریک ساتھیوں کا کہنا ہے کہ کرپٹو سرمایہ کاری میں منافع اور ہارڈ فورک فوری مسائل ہیں جن کو حل کرنے کی ضرورت ہے۔ ایمر کے خط نے 15 مئی تک ان مسائل پر اضافی رہنمائی فراہم کرنے کے لئے آئی آر ایس کی منصوبہ بندی کے بارے میں ایک تحریری ردعمل کی درخواست کی ہے۔ اس چیز سے لوگ کوکل کی آخری تاریخ کی ڈیڈ لائن پورا کرنے میں مدد نہیں ملے گی لیکن شاید اگلے سال ٹیکس کا سیزن کرپٹو صارفین کے لئے بہت زیادہ سر درد نہیں ہوگا۔

تحریر: مائیک آرکٹ

Read in English

Authors
Top