Global Editions

مینوفیکچرنگ کے شعبہ میں تبدیلی لانے کی ضرورت ہے

جب تک مینوفیکچررز نئی حکمت عملی کی تلاش کرنا شروع نہیں کرتے، وہ اپنی سپشلائزڈ فیکٹریوں کے لئے کافی ماہر افراد نہیں ڈھونڈھ پائیں گے۔

ڈیلیوٹ کی ایک نئی رپورٹ کے مطابق، 2018 اور 2028 کے درمیان امریکہ میں6.4 ملین نئی مینوفیکچرنگ کی ملازمتیں پیدا ہونگی۔ نئی پیدا شدہ ملازمتوں میں سے نصف سے زائد تقریباً 2.4 ملین کے بارے میں پیش گوئی ہے کہ وہ خالی رہ جائیں گی۔

رپورٹ اس خلا کو تین اہم چیزوںسے منسوب کرتی ہے: مینوفیکچرنگ کی ملازمتوں کے لئے بہت زیادہ مہارت کی سطح کی ضرورت ہے جب تک کہ وہ خود کار طریقے سے آٹومیشن کا استعمال کرتے ہیں؛بہت زیادہ تجربہ کار کارکنان کا نقصان کیونکہ بوڑھے کام چھوڑ جاتے ہیں؛مینوفیکچرنگ انڈسٹری کے بارے میں طالب علموں اور ان کے والدین کی طرف سے منفی رائے۔

مینوفیکچرنگ کی ملازمتیں کرنے والے زیادہ افراد بڑی عمر کے ہیں۔اس صنعت میں کام کرنے والے 2.6 ملین بزرگ افراد اگلے 10 سالوں میں ریٹائر ہونے کی توقع ہے۔

باقی نئی ملازمتیں - تقریباً 2 ملین - قدرتی طریقے سے آ جائیں گی۔ جیسے جیسے امریکہ سپشلائزڈ مینوفیکچرنگ انڈسٹری کو توسیع دیتا ہے، زیادہ لوگوں کو اس ترقی کے لئے کام کرنے کی ضرورت ہو گی۔

یہ اچھی خبر کی طرح لگتی ہے، لیکن مسئلہ یہ ہے کہ ان ملازمتوں کو لینے والے تیار نہیں ہے۔

مسئلہ پہلے ہی موجود ہے

یہ ساری چیزیں پہلے سے ہی کارکنوں کو بھرتی کرنے میں مشکل پیش کر رہی ہیں۔ 2015 میں کسی کو مینوفیکچرنگ کی نوکری تلاش کرنے کے لئے 70 دن کا وقت لگتا تھا۔ یہ وقت اب بڑھ رہا ہے۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ اب ان سیٹوں کو پورا کرنے کے لئے اوسط 93 دن لگتے ہیں۔ ان اعداد و شمار کا اگلی دہائی میں بڑھنے کا امکان ہے۔

خلاکو پر کرنا

شارٹ ٹرم میں مصنف نے ان ممکنہ ملازمتوں کی قلت پوری کرنےکے لئے تین ممکنہ حل پیش کیے ہیں:زیادہ کارکنوں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کے لئے اجرت کو بڑھا نا؛کچھ کاموں کو آئوٹ سورس کرنا؛ لوگوں کو نوکری دیتے ہوئے لچک دکھانا اور تجربہ کی بجائے پوٹینشل کو اہمیت دینا۔

طویل مدت کے لئے، رپورٹ نے کمپنیوں کو کچھ نئے راستے تلاش کرنےپر زور دیا:ریٹائرڈ کارکنوں کے علم کو بروئے کار لانے کے طریقے ڈھونڈنا، ان کوکم مدتی پروجیکٹس کے لئے دوبارہ نوکری دینا اور ان تک سوالات و جوابات کے لئے رسائی رکھنا۔

فیکٹری میں زیادہ کاموں کو مکمل کرنے کے لئے آٹومیشن کا استعمال کرنا۔ٹیلنٹ کو تلاش کرنے کے لئے نئے ماڈل لانا جیسا کہ اسے جی آئی جی(gig) پلیٹ فارم سے ڈھونڈھنا۔حکومتوں، یونیورسٹیوں، اور دیگر سرکاری اداروں کے ساتھ شراکت داری قائم کرنا۔ٹیلنٹ کو فروغ دینے اور برقرار رکھنے کے لئے نئے ڈیجیٹل ٹریننگ پلیٹ فارم تشکیل دینا ۔

اب کاروباری اداروں میں تبدیلی اور سرمایہ کاری نہ کی گئی تو دس سال بعد بہت قیمت چکانا پڑے گی۔

تحریر: ایرن ونک

Read in English

Authors
Top