Global Editions

اب ایک گھڑی کی مدد سے دماغی کیفیت بڑی آسانی سے معلوم کی جاسکے گی

نام: روز فغیح (Rose Faghih)

عمر: 34 سال

ادارہ: یونیورسٹی آف ہیوسٹن / ایم آئی ٹی

جائے پیدائش: امریکہ

اگر روز فغیح اپنے مقصد میں کامیاب ہوجائيں تو ایک بظاہر سیدھی سادی گھڑی کی مدد سے ہمارے دماغی حالت کا تعین کرنا بہت آسان ہوجائے گا۔

انہوں نے ذہنی پریشانی اور جسمانی سرگرمی کی ایک اہم علامت، یعنی پسینے کی مقدار کی تبدیلی، کے تجزیے کے لیے ایک الگارتھم تیار کیا ہے۔ ان کی تکنیک کی مدد سے سمارٹ واچ کے پیچھے دو چھوٹے الیکٹروڈز نصب کرکے معلوم کیا جاسکتا ہے کہ ہماری جلد کی بجلی کی ترسیل کی صلاحیت میں کس حد تک خلل اندازی ہوئی ہے۔ اس کے بعد سگنل پراسیسنگ کرنے والے الگارتھمز کی مدد سے ان تبدیلیوں کا ہماری زندگیوں میں رونما ہونے والے حادثات سے موازنہ کرکے ہماری دماغی کیفیت کا تعین کیا جاسکتا ہے۔

عام طور پر یہ ڈیٹا صرف ای ای جی یا ایم آر آئی جیسے مہنگے سسٹمز کے ذریعے حاصل کیا جاسکتا ہے۔ روز فغیح کا طریقہ بہت آسان اور کم قیمت ہے، اور اس کے ذریعے لوگ ہسپتال جائے بغیر گھر بیٹھے ہی اپنی دماغی کیفیت معلوم کرسکیں گے۔

وہ امید کرتی ہیں کہ اس سے لوگ اپنے بدلتے موڈ اور دماغی کیفیتوں پر بہتر طور پر نظر رکھنا شروع کردیں گے۔ مثال کے طور پر، ان کی ٹیکنالوجی سے آراستہ کوئی بھی آلہ گاڑی چلانے والے کسی پریشان حال شخص کو گہری سانسیں لینے یا سکون بخش موسیقی بجانے کا مشورہ دے سکتا ہے۔ اسی طرح، ذہنی امراض یا ذيابیطس جیسے دائمی امراض کے شکار افراد کو ذہنی سکون کے لیے مشقوں یا انسولین پمپ جیسے آلات کے استعمال کی بھی تجویز پیش کی جاسکتی ہے۔

تحریر: کیتھرین مائلز(Kathryn Miles)

تصویر: جیف لاٹن برگر، کلن کالج آف انجنیئرنگ، یونیورسٹی آف ہیوسٹن (Jeff Lautenberger, Cullen College of Engineering, University of Houston)

Read in English

Authors

*

Top