Global Editions

پاکستانی نوجوان نےخصوصی بچوں کے لئےویڈیو گیمز تیار کر لیں

ذہنی دباؤ کو دور کرنے کے لئے کھیل سے اچھا کوئی ذریعہ نہیں۔ چاہے وہ عام کھیل ہو یا ورچوئل رئیالٹی، ہر کوئی ان سے لطف اندوز ہونا پسند کرتا ہے۔ بدقسمتی سے ایسے بچے جو قدرتی وجوہات کی بناء پر کسی بھی قسم کی معذوری کا شکار ہوں ان کے لئے یہ کھیل کھیلنا مشکل ثابت ہوتا ہے۔ خصوصی بچوں کے لئے درپیش اس مشکل کے تدارک کے لئے ایک کمپنی GesDrive نے حال ہی میں ایک ایسا انٹرفیس تیار کیا ہے جس کی مدد سے خصوصی بچے بھی سادہ جسمانی حرکات کے ساتھ ان کھیلوں سے لطف اندوز ہو سکیں گے۔

فاسٹ کراچی سے کمپیوٹر سائنس میں گریجوایٹ کرنے والے سید صغیر حسن زیدی جو اس کمپنی کے شریک بانی ہیں ، انہوں نے اس کمپنی کو ترقی دینے کےلئے اپنی اچھی نوکری کی قربانی دی۔ اپنے اس تجربے کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ اگرچہ یہ بہت مشکل پراجیکٹ تھا اور میرے تمام دوست تھوڑے بہت ڈرے ہوئے بھی تھے تاہم مجھے اپنے گھر والوں کا مکمل تعاون حاصل تھا۔جن کے تعاون سے ہمیں کامیابی ملی۔صغیر کے تین دوستوں نے اس آئیڈیا کو پسند کیا اور پھر کچھ عرصے بعد وہ لاہور منتقل ہو گئے کیونکہ ان کا ماننا تھا کہ لاہور میں ملک کے دیگر شہروں کے مقابلے میں خصوصی بچوں کے حوالے سے بحالی مراکز زیادہ احسن انداز میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ صغیر کے مطابق ان کا مقصد تھا کہ ویڈیو گیمز کو اچھے مقاصد کے لئے استعمال کیا جانا چاہیے۔

صغیر اور ان کے دوستوں نے پلان نائن کے چھٹے سیشن کے لئے درخواست جمع کرائی جہاں ان کے بنیادی خیال نے حقیقت کا روپ دھارنا شروع کر دیا۔ اپنے اس تجربے کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ پلان نائن میں عمومی طور پر مقابلے کی سی فضا کا سامنا کرنا پڑتا ہے جس کی وجہ سے وہاں کام کرنے والوں کو زیادہ بہتر انداز میں کام کرنے کی ترغیب بھی ملتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پلان نائن میں دیگر لوگوں کے ساتھ ایک جگہ پر کام کرنے سے ہمیں بہت اعتماد حاصل ہوا کہ صرف ہم نہیں ہیں جو مشکلات کا شکار ہیں ہمیں دیگر کمپنیوں سے ساتھ تعمیری انداز میں گفتگو کرنے کا موقعہ بھی ملا تاکہ مشکلات کا موثر حل تجویز کیا جا سکے۔

پلان نائن میں تربیت مکمل کرنے کے بعد GesDrive نے رائزنگ سن انسٹی ٹیوٹ کے ساتھ مل کر کام کا آغاز کیا۔ یہ خصوصی بچوں کے لئے قائم کیا جانیوالا ادارہ ہے جہاں اس وقت تقریباً 650 بچےزیر تعلیم ہیں۔ GesDrive نے رائزنگ سن انسٹیٹیوٹ کے تعاون سے 20 بچوں پر ویڈیو گیم کا تجربہ کیااور ان کے یہ تجربات بہت کامیاب رہے ان کے مطابق ان تجربات کی کامیابی کی شرح 78 فیصد رہی۔ اب یہ کمپنی نہ صرف خصوصی بچوں کی تفریح کے لئے خدمات فراہم کر رہی ہے بلکہ ان کی تعلیم میں بھی بہتری لانے کے لئے کوشاں ہے۔ اس مقصد کے لئے کمپنی انٹرایکٹو ذریعہ تعلیم کے طریقہ کار کی تیاری کے لئے تجربات کر رہی ہے تاکہ ان خصوصی بچوں میں زیادہ سے زیادہ سیکھنے کی تحریک پیدا کی جا سکے۔اپنی تیار کردہ ٹیکنالوجی کے بارے میں صغیر کا کہنا تھا کہ ان کی جانب سے تیار کئے جانیوالے انٹرفیس کے بارے میں لوگوں اور مارکیٹ کو زیادہ آگاہی حاصل نہیں ہے اور اس کی وجہ سے ہمیں لوگوں کو اس پراڈکٹ اور اس کے فوائد کے بارے میں آگاہ کرنے میں مشکلات پیش آتی ہیں کیونکہ لوگ اس کی افادیت سے آگاہ ہی نہیں ہیں۔ تاہم ان کا ماننا ہے کہ جلد ہی دیگر کمپنیاں بھی اس میدان میں آئیں گی، نئی مصنوعات تیار ہونگی اور پھر صورتحال بدل جائیگی۔

تحریر: ماہ رخ سرور (Mahrukh Sarwar)

Read in English

Authors
Top