Global Editions

آپ کو سر سے پاؤں تک اپ گریڈ کرنے والےآلات

آپ اپنی شناخت ثابت کرنے کے لئے اپنا ہاتھ استعمال کرنا چاہتے ہیں؟ کسی بھی کام کے بغیر ہوا میں اڑنے والے بنیں؟ اسے آزمائیں۔

اب ہمارے جسم میں اضافہ کرنے کے بے شمار طریقے موجود ہیں، کچھ درد والے جیسا کہ آپ کی جلد کےنیچے ایک چپ لگانا یا کچھ اتنے سادہ جیسے گھٹنوں پر کمپیوٹرائزڈ دستانے لگانا۔

ہم نےکچھ بہت ہی دلچسپ مصنوعات کی لسٹ آپ کو متعارف کرانے کے لئےاکٹھی کی ہے جو آپ کو سر سے پاؤں تک اپ گریڈ کرنے میں مدد دے سکتی ہے۔


پروڈکٹ: وائیووکی منی(ViviKey Mini)
تخلیق کار: امل گرافسٹر(Amal Graafstra)
مقصد: آپ کی ڈیجیٹل شناخت میں اضافہ کرتی ہے
یہ کیا چیز ہے: 2013 میں امل گرافسٹر نے جسم میںپیوند ہو نے کےقابل آر ایف آئی ڈی (RFID) ٹیکنالوجی بیچنا شروع کر دی۔ اس کے گاہکوں کا ایک خاص گروپ تھا جو زیادہ تر خود کو بائیو ہیکرز کہتے تھے ۔ لیکن گزشتہ دو برسوں میں اس کے پاس بڑے صارفین آ رہے ہیں جو اپنے جسم کے اندر الیکڑانکس کے آلات لگوانا چاہتے ہیں۔

اپنے گاہکوں کی کشش بڑھانے کی امید میں وہ ایک این ایف سی، یا قریب فیلڈ مواصلاتی نظام بنا رہا ہے جسےوائیووکی منی کہتے ہیں جو کہ آپ کے ہاتھ میں لگایا جا سکتا ہے۔ یہ ایک محفوظ ٹوکن کے طور پر کام کرتا ہےجو آپ کو مختلف کام کرنے میں مدد دیتا ہے ۔مثال کے طور پر آپ اپنے آن لائن بینک اکاؤنٹ میں لاگ ان کر سکتے ہیں۔

یہ کیسے کام کرتا ہے: گرافسٹر کا کہنا ہے کہ وائیووکی منی پیوند کروانے کے بعد (یہ ایک سلنڈر ہے، قطر میں دو ملی میٹر لمبا اور 12 ملی میٹر طویل جس کو آپ کے جسم میں لگایا جا سکتا ہے)، آپ کو ایک اسمارٹ فون پر این ایف سی ریڈر کے ساتھ اسکین کرنے کی ضرورت ہوگی، جو کہ آپ کو ایک ایپ فوری طور پرانسٹال کرنے کا کہے گا۔ اس کے بعد آپ اپنے نام اور تصویر جیسی چیزوں کے ساتھ ایک شناختی پروفائل بنا سکتے ہیں، لہٰذا مستقبل میں جس کسی نے بھی این ایف سی ریڈر کے ساتھ آپ کے ہاتھ کو سکین کیا ہو گا، آپ کی معلومات حاصل کر سکتا ہے۔

گرافسٹر کا کہنا ہے کہ یہ سب کچھ کرنے کے بعد آپ کچھ مخصوص آن لائن سروسز استعمال کرنے کے قابل ہو جائیں گے جیسا کہ ورڈ پریس۔ لہٰذا آپ لاگ ان عمل کے حصے کے طور پر اپنے اسمارٹ فون کے ساتھ اپنے ہاتھ میں ٹیگ سکین کرسکتے ہیں۔

گرافسٹر کا کہنا ہےکہ بینک یا کریڈٹ کارڈ کمپنی سے منسلک ہونے کے لئے اس کی مالیاتی اداروں سے بات چیت جاری ہے۔
دستیابی: وائیوکی منی کا ایک ابتدائی ورژن اگست کے آخر میں یا ستمبر کے آغاز میں متوقع ہے۔
قیمت: اس کی متوقع قیمت 99 ڈالر ہے
ٹیک مہارت کی ضرورت : سمارٹ فون پرکمفی کوڈر
آپ کے عزم کا لیول: (کم، درمیانہ،ہائی): ہائی عزم کیونکہ اسے آپ کے جسم میں لگانے کی ضرورت ہو گی (یہ ایک سرنج کے ذریعے جسم میں لگایا جائے گا)۔ گرافسٹر کا کہنا ہے کہ وہ پیشہ ورانہ جسم چھیدوں کے ایک نیٹ ورک سے منسلک ہو گا جو یہ آلات لوگوں میں ڈالنے کے لئے تیار ہوں گے۔


پروڈکٹ: اوپن اے پی ایس(OpenAPS)
خالق: ڈانا لیوائس(Dana Lewis)
آپ کے لئے کس چیز میں اضافہ کرنا چاہتا ہے: لبلبہ

یہ کیا ہے: ڈانا لیوائس، جو ذیابیطس کی قسم ۱ کا شکار ہے، اوپن اے پی ایس (جسے اوپن آرٹیفٖیشل پنکریاز سسٹم کہا جاتا ہے ) کی بانی ہیں۔ یہ چیز ان جیسے مریضوں کو جسم میں گلوکوز کی مانیٹر کرکے خودبخود انسولین مہیا کرتی ہے جب جسم میں بلڈ شوگر لیول تبدیل ہوتا ہے۔ اس طرح کی چیزوں نے مارکیٹ میں آنا شروع کیا ہے لیکن ابھی عام نہیں ہوئی ہیں۔ لہٰذا ڈانا لیوائس کا ارادہ ہے کہ اس طرح کے آلات کو سادہ اور کم قیمت رکھا جائے تاکہ لوگ ان جیسے آلات کو خود بنا سکیں۔ اوپن اے پی ایس مفت سافٹ وئیر کی پیش کش کرتی ہے جس میں ہارڈوئیر خریدنے کے لئے رہنمائی اور ہدایات دی جاتی ہیں۔

یہ کیسے کام کرتا ہے: صارفین کو سب سے پہلے دو طبی آلات کی ضرورت ہوتی ہے: ایک مسلسل گلوکوز مانیٹر کرنے والا اور ایک انسولین پمپ جو انسولین کی ڈوز ٹھیک طریقے سے کنٹرول کرنے کے لئے ریموٹ کمانڈ کو حاصل کر سکے۔ آپ کو ایک چھوٹے راسپبیری پی آئی کمپیوٹر (Raspberry Pi computer)، ایک وائرلیس ریڈیو، اور بیٹری کی بھی ضرورت ہے۔

کمپیوٹر مانیٹر اور پمپ سے ڈیٹا جمع کرتا ہے اور اس بات کا تعین کرتا ہے کہ آیا کہ آپ کے خون کو محفوظ رینج میں رکھنے کے لئے زیادہ یا کم انسولین کی ضرورت ہوتی ہے، اور یہ کمانڈ واپس پمپ تک بھیجتا ہے۔

قیمت: اس کی قیمت دو سو ڈالر کے قریب ہے
دستیابی: اب دستیاب ہے
ٹیک مہارت کی ضرورت : اسمارٹ فون پر مہارت
کمانڈ لیول: ہائی


پروڈکٹ: الٹر ایگو (AlterEgo)
خالق: ارناو کپور(Arnav Kapur)
مقصد: چٹ چیٹ اور چینل سرفنگ

یہ کیا ہے: الٹر ایگو ایک ریسرچ پروجیکٹ ہے جسے ایم آئی ٹی کی میڈیا لیب میںایک گریڈ کے طالبعلم کپور نے تخلیق کیا۔یہ ایک اوزار کا پروٹائپ ہے جو کہ آپ کے چہرے میں سیٹ ہوتا ہے اور آپ کو خاموشی سے اشیا اور دوسرے لوگوں سے بات چیت کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ کپور اسے ٹی وی چینل تبدیل کرنے یا پیزا آرڈر کرنے جیسے کاموں کے لئے استعمال کرتا ہے۔

یہ کیسے کام کرتا ہے: یہ آلہ آپ کے چہرے اور گردن سے نکلنے والی الیکڑک سگنلز کو تب ٹریک کرتا ہے جب آپ خاموشی سے پڑھتے ہیں یا اپنے آپ سے بات کرتے ہیں۔ یہ سگنلزایک کمپیوٹر کو منتقل کیے جاتے ہیں۔اس آلے میں ہڈیوں سے کرنٹ حاصل کرنے والا ہیڈ فون بھی استعمال ہوتا ہے جو کہ فیڈ بیک دیتا ہےاورآپ کو بتاتا ہے (ایک مستحکم، کمپیوٹرائزڈ آواز میں) جو دوسرا آلٹر ایگو پہننےوالا شخص آپ سے خاموشی سےکہہ رہا ہو۔

دستیابی: یہ ابھی تک ایک ریسرچ پروجیکٹ ہے
قیمت: کوئی نہیں
تکنیکی ماہرین کی ضرورت ہے: غیر واضح
عزم کی سطح: درمیانی (اس کا مطلب ہے کہ آپ کو چہرے پر ایک آلہ پہننا پڑے گا)


پروڈکٹ: روبوٹک ایکسوسکیلٹن (Robotic exoskeleton)
خالق: ٹائم سوئفٹ(Time Swift)
یہ کیا ہے: ٹائم سوئفٹ روم روبوٹکس(Roam Robotics) چلاتا ہے جو کہ ایک سٹارٹ اپ ہے جو ربوٹس کےایکسوسکیلٹن بنانا چاہتا ہے تاکہ لوگوں کو ہر طرح کی جسمانی سرگرمیوں میں مدد ہو۔ کمپنی کی پہلی مصنوعات گھٹنوں کے گرد فٹ بیٹھتی ہے اور اس کا مقصد خلا بازوں کی مدد ہے؛ یہ سینسروں، کمپیوٹنگ کی طاقت اور غباروںکا ایک مجموعہ استعمال کرتا ہے تاکہ لوگ طویل اور سخت خلا بازی کر سکیں۔

یہ کیسے کام کرتا ہے: گھٹنے کے دستانےکی طرح کےدو آلات آپ کی ٹانگوں کے گرد فٹ بیٹھتے ہیں جو کہ ٓٓپ
آپ کے رانوں میں سب سے اوپر اور سکائی بوٹس آپ کی بیک میں پھنس جاتے ہیں۔یہ دونوں ایک بیٹری اور ایئر کمپریسر میں پلگ ان ہیں، جو آپ کی پیٹھ پر ایک بیگ میں ہیں۔

جیسے ہی آپ حرکت کرتے ہیں، سینسر آپ کے جسم کی پوزیشن کو ٹریک کرتے ہیں، اورکمپیوٹر سے منسلک ہر دستانہ اس بات کا اندازہ لگاتا ہے کہ ایک ٹانگ کو کتنا زور لگانا ہے۔

دستیابی: اس موسم سرما میں یہ پراڈکٹ لیک تھوئی( LakeTahoe )، کیلیفورنیا، اور پارک سٹی میں رینٹ پر دستیاب ہونے کی امید ہے۔
قیمت: سوئفٹ نے اندازہ لگایا ہے کہ اس پراڈکٹ کا ایک دن کا کرایہ 70 ڈالر سے 100ڈالر ہو گا۔ سوئفٹ اسے صارفین کے لئے 2020ءتک2000ڈالر میں فروخت کرنے کی توقع رکھتا ہے۔

ٹیک مہارت کی ضرورت : سمارٹ فون
عزم کی سطح: درمیانی


پروڈکٹ: آئی کیو بڈز اور آئی کیو بڈز بوسٹ(IQbuds and IQbuds Boost)
خالق: ڈیوڈ کیننگٹن(David Cannington)
آپ کی کس چیز میں اضافہ کرتا ہے: قوت سماعت

یہ کیا ہے: ڈیوڈ کیننگٹن ایک سٹارٹ اپ نوہارا(Nuheara)کے شریک بانی ہیں ۔ اس سٹارٹ کی وائرلیس ائر بڈز(earbuds) آپ کو کچھ آوازیں سننےاور کچھ کو خاموش کرنے کی اجازت دیتی ہیں۔ ڈیوڈ کیننگٹن کا کہنا ہے کہ یہ آلہ ان لوگوں کومدد دیتا ہے جن کو شور والے ماحول میںسماعت میں دشواری پیش آتی ہے۔

یہ کیسے کام کرتا ہے: ائر بڈز بلیو ٹوتھ کے ذریعے آئی او ایس یا اینڈرائیڈ فون کی ایپ کے ذریعے سنک ہو جاتی ہیں ۔ اس آلے میں آپ مخصوص مقام جیسے "ریستوران،" "سٹریٹ،" اور "طیارے" کی سیٹنگ شامل کر سکتے ہیں۔

قیمت: آئی کیو بڈز بوسٹ کے نئے ورژن کی قیمت 499ڈالر ہے جبکہ آئی کیو بڈز کی قیمت 299 ڈالر ہے
دستیابی: کان کے پردے آن لائن دستیاب ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ یہ فلوریڈا میں کچھ بیسٹ بائی (Best Buy) اسٹورزپر دستیاب ہیں۔
ٹیک مہارت کی ضرورت: سمارٹ فون کی مکمل جانچ
عزم کی سطح: کم

تحریر: رچل میٹز (Rachel Metz)

Read in English

Authors
Top