Global Editions

2018ء میں کن پیشوں کی مانگ میں اضافہ متوقع ہے؟

ٹیکنالوجی کو اکثر بے روزگاری کے لیے ذمہ دار ٹھہرایا جاتا ہے، لیکن چند شعبہ جات ایسے بھی ہیں جن میں ٹیکنالوجی ملازمین کی مانگ میں حیرت انگیز اضافے کا باعث بن رہی ہے۔

روزگار کے مستقبل کا تعین مصنوعی ذہانت اور خودکاری (آٹومیشن) کی بنیاد پر کیا جانے گا۔ ان ٹیکنالوجیوں کی وجہ سے چند پیشے ختم تو ہوجائیں گے، لیکن ساتھ ہی نئے مواقع میں پیدا ہوں گے اور ان کاموں کی مانگ میں بھی اضافہ دیکھنے کو ملے گا، جو انسانوں سے بہتر اور کوئی نہيں کرسکتا ہے۔ اس تحریر میں ہم ایسے پانچ پیشوں کو اجاگر کررہے ہیں جن میں 2018ء میں سب سے زيادہ اسامیاں نظر آنے والی ہیں۔

قابل تجدید توانائی کا ٹیکنیشن

مصنوعی ذہانت کے سافٹ ویئر کو ذہین بنانے کی تربیت فراہم کرنا بہت محنت طلب کام ہے۔ مثال کے طور پر، کسی روبوٹکس کی کمپنی کو ایک اسمبلی لائن پر صرف ایک پرزے کو پکڑنے کے لیے ہزاروں واقعات کے متعلق ڈيٹا حاصل کرنے کی ضرورت پیش آتی ہے۔ دسمبر میں گوگل نے یوٹیوب کے مشمولات صاف کرنے اور اپنی مشین لرننگ کی ٹیکنالوجی کو تربیت فراہم کرنے کے لیے 10 ہزار ملازمین بھرتی کیے تھے۔ ہوسکتا ہے کہ یہ ملازمتیں زیادہ دلفریب یا مستقل نہ ہوں، لیکن افرادی قوت میں خودکاری متعارف کرنے کے مرحلے میں ان کی اہمیت سے انکار نہيں کیا جاسکتا ہے۔

مصنوعی ذہانت کا انجنیئر

مصنوعی ذہانت پر کام کرنے والی کمپنیوں میں ملازمین کی بھرتی میں بھگدڑ مچی ہوئی ہے، اور اس شعبے میں گہری معلومات رکھنے والے ملازمین اس قدر نایاب ہيں کہ ان کی تنخواہیں پیشہ ورانہ کھلازیوں کی تنخواہوں کے لگ بھگ ہوچکی ہيں۔ دسمبر میں منعقد ہونے والی نیورل انفارمیشن پراسیسنگ سسٹمز (Neural Information Processing Sytems - NIPS) کی کانفرنس میں، کمپنیوں نے باصلاحیت افراد بھرتی کرنے کے لئے پارٹیاں بھی منعقد کیں اور کئی تحائف بھی تقسیم کیے۔ اس وقت ٹیکنالوجی کی دنیا میں شاید ہی کسی دوسری صلاحیت کی مانگ انتی زيادہ ہو، اور مستقبل میں صورتحال کے اسی طرح برقرار رہنے کا امکان نظر آتا ہے۔

ویڈيو گیم سٹریمر

اس وقت گیم سٹریمنگ کی ویب سائٹ ٹوئيچ (Twitch) کے پلیٹ فارم پر 25 ہزار سے زیادہ افراد پیسے کمار رہے ہيں، اور اس تعداد میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔ اس ویب سائٹ پر روزانہ 1.5 کروڑ فعال صارفین گیمرز کو گیمز کھیلتے ہوئے دیکھنے کے لیے آتے ہيں، اور مشمولات (اور کھلاڑیوں) کی مانگ آسمانوں سے بات کررہی ہے۔

صحت کے شعبے میں دیکھ بھال فراہم کرنے والے افراد

خودکاری کئی پیشوں میں ممکن ہے، لیکن ہیلتھ کیئر کا شمار اب بھی ان پیشوں میں ہوتا ہے جن میں انسانوں کے ساتھ رابطے کی ضرورت ہے۔ نیز، امریکہ میں عمررسیدہ شہریوں کی بڑھتی ہوئی تعداد گھریلو صحت اور ذاتی دیکھ بھال کی سہولیات کے سلسلے میں معاونت فراہم کرنے والوں کی مانگ میں تیزی سے اضافے کا باعث بنیں گے۔ Bureau of Labor Statistics کے ایک اندازے کے مطابق اگلے 10 سالوں میں ان پیشوں میں کام کرنے والے افراد کی تعداد میں 426،000 اور 754،000 کا اضافہ ہوگا۔ تاہم، ان پیشوں میں کام کرنے والوں کی اشد ضرورت کے باوجود، ان میں سے بیشتر کی تنخواہیں زیادہ اچھی نہيں ہیں۔ لیکن مانگ میں اضافے کے ساتھ ساتھ اس صورتحال میں بہتری ممکن ہے۔

تحریر: ایرن ونک (Erin Winick)

Read in English

Authors
Top