Global Editions

اس نظام کی مدد سے صنعتی علیحدگی کے پراسیسز میں استعمال ہونے والی توانائی کو ختم کیا جاسکتا ہے

نام: شریا ڈیو (Shreya Dave)
عمر: 30 سال
ادارہ: ویا سیپریشنز

جب شریا ڈیو اپنے پی ایچ ڈی کی تحقیق مکمل کررہی تھیں، اس وقت انہیں ایسا محسوس ہوا کہ ان کی تحقیق کبھی بھی قابل استعمال ثابت نہيں ہوگی۔ اس تحقیق میں گریفین آکسائيڈ سے تیار کی جانے والی مالیکولر فلٹریشن کی جھلیاں استعمال کی گئی تھیں، جن کی قیمت موجودہ دور کے پولیمرز اور سیرامک سے کہیں کم اور پائيداری کئی گنا زیادہ ہے۔ لیکن یہ طریقہ کار پانی کی صنعت کے لیے بہت زیادہ مہنگا ثابت ہورہا تھا۔

تاہم، نیچر نامی جریدے میں شائع ہونے والا ایک مضمون پڑھنے کے بعد انہيں احساس ہوا کہ اس تکنیک کی مدد سے اشیائے خوردونوش، ادویات اور ایندھن بنانے والی صنعتوں میں کیمیائی مواد کی علیحدگی میں استعمال ہونے والے صنعتی پراسیسز میں وافر مقدار میں توانائی کی بچت ممکن ہے۔ ان پراسیسز کے ذریعے امریکہ بھر میں پیدا ہونے والی توانائی کا 12 فیصد حصہ پیدا ہوتا ہے۔

ڈیو اب ویا سیپریشنز (Via Separations) نامی کمپنی کی سی ای او ہیں۔ ان کی اور ان کی ٹیم کی ٹیکنالوجی کیمیائی مرکبات کی علیحدگی کے موجود نظام کا، جس میں صرف انہيں ابالا جاتا ہے، متبادل ثابت ہوگا۔ ڈیو کے مطابق اگر ویا کا فلٹریشن کا مواد وسیع پیمانے پر استعمال ہونا شروع ہوجائے تو صنعتی پراسیسز میں استعمال ہونے والی توانائی میں 50 سے 90 فیصد تک کی کمی آسکے گی۔

ان کی کمپنی کی توجہ اس وقت صرف اشیائے خوردونوش کی صنعتوں پر مرکوز ہے، لیکن ڈیو سمجھتی ہیں کہ اگر وہ یہ بات ثابت کرنے میں کامیاب ہوجائيں کہ یہ ٹیکنالوجی ایک صنعت میں منافع بخش ثابت ہوسکتی ہے، تو آگے چل کر دوسری صنعتیں بھی اس میں دلچسپی لینا شروع ہوجائيں گی۔

تحریر: ڈین سولومن (Dan Solomon)

Read in English

Authors
Top