Global Editions

آخر ای میل اب اتنی برُی کیوں ہو گئیں؟

مسلسل ای میل چیک کرنا اور سوشل میڈیا پر پیغامات دیکھنا ایک درد سربن چکا ہے۔ ای میلز اور سوشل میڈیا پر پیغامات اتنی تیزی اور تواتر سے آرہے ہوتے ہیں کہ انہیں پڑھنے اور جواب دینے میں اچھا خاصا وقت صرف ہو جاتا ہے۔ پیشے کے لحاظ سے میں ایک کنسلٹنٹ (پیشہ ورانہ مہارتوں میں بہتری لانے میں مشاروت دینے والی )ہوں۔ میں روزانہ لوگوں سے مل کر انہیں وقت ، معلومات اور توانائی کے بہتر استعمال کے بارے میں انہیں مشورہ دیتی ہوںاورمیں یہ کام 25سال سے کر رہی ہوں۔کچھ سال پہلے میرا یہی خیال تھا کہ ای میل بہترین کارکردگی کی حامل ہوتی ہیں۔ یہ ہمیں منظم اور باخبر رکھنے میں کردار ادا کرتی ہیں۔ لیکن اس کے ساتھ یہ ہماری کچھ کرنے کی صلاحیت کو بھی ختم کردیتی ہیں۔ میرے موکل کہتے ہیں کہ میرے پاس ای میل دیکھنے کا وقت نہیں ہے۔ میرے لئے کام چھوڑ کر ای میل چیک کرنا مشکل ہے۔

آخر ای میل اب اتنی برُی کیوں ہو گئیں؟ای میلز کی مثال بچوں کے کھلونوں سے بھرے ڈبے کی ہے جس میں مختلف قسم کے کھلونے رکھے ہوئے ہیں۔ دفتر میں آپ کے باس نے جو ہدایات بھیجی ہیں وہ بھی اس میں گم ہو جاتی ہیں۔ آپ کی اطلاع کیلئے عرض ہے کہ نیوز فیڈ اور سوشل میڈیا ایک کباڑ خانہ ہےجس میں ایک بار کوئی چیز رکھ دی جائے تو وہ گم ہو جاتی ہے۔

ہر کوئی اپنی ای میلز پر فوری ردعمل اور جواب چاہتا ہے۔ اسی لئے یہ کہنے پر مجبور ہوں کہ میں ایک فوری ردعمل کے کلچر کی نمائندگی کرتی ہوں جس میں فوراًجواب دینے کیلئے مسلسل پیغامات چیک کرنے پڑتے ہیں۔ آپ ان پیغامات کے جوابات میں ایک دو گھنٹے تاخیر نہیں کرسکتے، آپ کو ان کا فوری جواب دینا پڑتا ہے۔ اس کے علاوہ پیغامات بڑی تعداد میں ای میل اور سوشل میڈیا کی سرگرمی سےکھو جانے کا بھی خدشہ ہوتاہے۔ اگر آپ ای میل دیکھنا بند بھی کرنا چاہیں تو نہیں کرسکتے کیونکہ ہو سکتا ہے کہ آپ کے باس نے کوئی ای میل بھیجی ہے اور آپ کے ساتھیوں میں سے کسی نے پہلے جواب دیدیا ہے تو آپ محسوس کریں گے کہ آپ پیچھے رہ گئے ہیں۔

لہٰذا ای میل کے ان خطرات سے نپٹنے کیلئےایک حل سلیک (Slack)کی ایپلی کیشن کی صورت میں دیا گیا ہے۔ آپ کمپنی کی ای میلز کو عمومی ای میلز سے الگ کرکے سلیک کی ایپلی کیشن میں لا سکتے ہیں ۔ یہ ایپلی کشن آپ کو کمپنی کی داخلی صورتحال سے باخبر رکھنے کیلئے زیادہ معاون اور بہتر ثابت ہوگی۔ سلیک کی اپیلی کیشن منصوبوں کی تصاویر اپ لوڈ کرنے، موضوع کے حساب سے معلومات فراہم کرنے میں معاون ثابت ہوتی ہے۔ لہٰذا اتنی زیادہ ای میلز پڑھنے اور جواب دینے کی بجائے بہتر ہے کہ منتخب ای میلز پڑھیں۔

دیگر ٹیکنالوجیزکی طرح سلیک بھی ایک ٹول ہے جس کی کامیابی کاانحصار اس کے استعمال کرنے والوں پر منحصر ہے۔لیکن ناتجربہ کاری کے سبب شاید آپ ہر ای میل کو شکریہ یا گو فار اٹ (Go for it)کہتے جائیں گے اور کسی واضح ہدایت کے بغیر ای میلز وصول کرتے جائیں گے تو سلیک بھی ای میلز سے بھر جائے گا۔

اس کا علاج کمپنیاں خود کرسکتی ہیں انہیں فوری جواب کے کلچر سے باہر آنا پڑے گا۔ سوال یہ ہے کہ آپ اپنی ای میلز کیلئے واضح ہدایات کیسے طے کریں گے؟ جواب یہ ہے کہ لوگوں کو اس بات کی تربیت دینی چاہئے کہ ای میلز کا فوری جواب نہ دیں۔ اپنے فارغ اوقات تلاش کریں جب آپ ای میلز پڑھ سکیں۔ لوگ فوری ای میلز دیکھنا بند کردیں اور کچھ وقت حکمت عملی بنانے، مسائل کا تجزیہ کرنے، انہیں حل کرنے کیلئے سوچنے میں گزاریں اور تب جواب دیں۔

تحریر: جولی مارگرنسٹرن (Jolly Margenstern)

Read in English

Authors
Top