Global Editions

چلنے پھرنے سےمعذورافرادکیلئے روبوٹک سوٹ تیار

بڑھتی عمر، بیماری یا معذوری ایسی حالت ہے جسے الفاظ میں بیان نہیں کیا جا سکتا۔ ان کیفیات کے حامل افراد اگر چلنے پھرنے سے قاصر ہوں تو ان کی یہ کیفیات اور بھی تکلیف دہ ہو جاتی ہیں۔ یہ بات بالکل واضح ہے کہ کوئی بھی بزرگ یا معذور فرد سہارے یا واکر کے ساتھ چلنا پسند نہیں کرتا۔ اپنی مرضی سے چلنا پھرنا انسانی جبلت ہے اور انسان اس کی ضرورت اس وقت زیادہ محسوس کرتا ہے جب وہ چلنے پھرنے سے قاصر ہو جاتا ہے۔ سائنس دانوں نے ایسی معذوری یا بڑھتی عمر کی وجہ سے چلنے پھرنے سے قاصرہونے والوں کے لئے روبوٹک ٹیکنالوجی کی مدد لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ اب SRI انٹرنیشنل سے وابستہ تحقیق کار ایسا روبوٹک سوٹ تیارکرنے کی کوشش کررہی ہے جو بزرگ اور معذور افراد کے چلنے پھرنے کی راہ میں رکاوٹ دور کرسکتا ہے۔ یہ روبوٹک سوٹ فوجیوں کے لئے بھی کارآمد ہے کیونکہ انہیں نامساعد حالات میں وزنی سازو سامان کے ساتھ حرکت میں آنا پڑتا ہے۔ اس سوٹ کی مدد سے انہیں بھاری سازو سامان اٹھانے میں آسانی رہے گی۔ حال ہی میں اس روبوٹک سوٹ کا پروٹو ٹائپ متعارف کرایا گیا ہے۔ یہ سوٹ پورے جسم پر پہنا جاتاہے۔ اس کی سپورٹنگ پاور پیروں، گھٹنوں، کولہوں اور کمر کے مہروں کو تقویت دیتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس سوٹ میں نصب سینسرز وزن بڑھنے یا کم ہونے کی صورت میں سوٹ کی سپورٹنگ پاور کو صورتحال کے مطابق تبدیل کرتے رہتے ہیں۔ ایسے افراد جو حرکت کرنے میں دقت محسوس کرتے ہیں وہ واکر کا ایک آسان، سادہ اور کم خرچ ذریعہ استعمال کرتے ہیں۔ تاہم واکر کے ساتھ چلنا تکلیف دہ ہونے کے ساتھ ساتھ فرد کی آزادنہ حرکت کی عادت کو بھی سلب کرتا ہے۔ اس کے علاوہ واکر کے ساتھ چلنے والوں کو عموماً ہمدردی کے لائق سمجھا جاتاہے جو درست نہیں۔ اس نئے روبوٹک سوٹ کے حوالے سے SRI وینچرز کے صدر منیش کوٹہاری کا کہناہے کہ اس روبوٹک سوٹ جسے سوپر فلیکس کا نام دیا گیا ہے وہ مریضوں اور بزرگوں کو نفسیاتی طور پر شرمندگی سے بچاتا ہے اور فرد کو کسی حد تک آزادانہ حرکت کے قابل بناتا ہے۔ اس روبوٹک سوٹ میں سنسر نصب ہیں جو فرد کی حرکت، حرکت کرنے کے انداز کو مدنظررکھتے ہوئے بیٹریوں کی مدد سے قوت کا اخراج کرتے ہیں۔ تاہم اس کے لئے بیٹریوں کو مکمل طورپر چارج ہوناچاہیے۔ کمپنی کی جانب سے یہ نہیں بتایا گیا کہ بیٹریاں کتنی دیر میں چارج ہوتی ہے اور کب تک قابل استعمال رہتی ہیں۔ تاہم یہ بیٹریوں سے خارج ہونے والی قوت سے سوٹ میں نصب ہلکی موٹرز کی مدد سے فرد آسانی سے حرکت کر سکتا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ کمپنی دیگر الیکٹرانیکل ڈھانچے بھی تیار کر رہی ہے۔ اس سوٹ کی قیمت 40ہزار ڈالرز ہے۔

تحریر: سگنے بریویسٹر (Signe Brewster)

Read in English

Authors
Top