Global Editions

پاکستان میں کرونا وائرس: انفیکشنز کی شرح میں اضافے کے باعث لاک ڈاؤنز دوبارہ نافذ کرنے کا امکان ہے

پچھلے ہفتے کرونا وائرس کے باعث اموات کی شرح میں 140 فیصد اضافے کو دیکھتے ہوئے حکومت حفاظتی تدابیر کی تعمیل پر زور دے رہی ہے۔

اعداد و شمار: جمعہ کی صبح تک، پاکستان میں covid-19 کے کیسز کی تعداد 326،216 تک پہنچ چکی تھی۔ اب تک مجموعی طور پر 6،715 افراد موت کا شکار ہوچکے ہيں، جن میں سے 10 اموات پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران واقع ہوئی ہيں۔ 309,646 افراد صحتیاب ہوچکے ہيں۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران پاکستان میں 736 کیسز سامنے آئے ہیں، جس سے وائرس کی دوسری لہر کے متعلق خدشات میں اضافہ ہورہا ہے۔ صوبہ سندھ سے 142،917، پنجاب سے 102،253، خیبر پختونخواہ سے 38،886، بلوچستان سے 15،767، اسلام آباد سے 18،578، گلگت بلتستان سے 4،127، اور آزاد جموں و کشمیر سے 3،688 کیسز کی اطلاعات موصول ہوئی ہيں۔

کیسز کی تعداد میں اضافہ: پاکستان میں کرونا وائرس کے کیسز کے ساتھ اموات کی تعداد میں دوبارہ اضافہ نظر آیا ہے۔ وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر کے مطابق پچھلے ہفتے کے دوران پاکستان میں covid-19 کے باعث شرح اموات میں 140 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اس اضافے کی سب سے بڑی وجہ حفاظتی تدابیر کی عدم تعمیل ہے۔ اسد عمر نے مزید بتایا کہ مثبت کیسز کی شرح مظفرآباد اور کراچی میں بہت زیادہ ہے، اور لاہور اور اسلام آباد میں تیزی سے بڑھ رہی ہے۔

لاک ڈاؤنز: نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (National Command and Operation Centre) نے ملک بھر میں covid-19 کے کیسز میں اچانک اضافے کے پیش نظر شہریوں کو انتباہ کیا ہے کہ حکومت کی طرف سے جاری کردہ حفاظتی تدابیر کی عدم تعمیل کی صورت میں لاک ڈاؤنز نافذ کیے جاسکتے ہیں، جن سے لوگوں کی روزی روٹی اور معیشت کو انتہائی نقصان پہنچے گا۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے مزيد بتایا کہ پبلک ٹرانسپورٹ، مارکیٹوں، شادی ہالوں، ریستورانوں وغیرہ جیسے مقامات پر، جہاں کرونا وائرس پھیلنے کے امکانات سب سے زيادہ ہیں، کڑی نظر رکھی جائے گی اور ماسکس اور سماجی دوری کی برقراری کو یقینی بنایا جائے گا۔

تحریر: ٹی آر پاکستان

تصویر: خیبر نیوز

Read in English

Authors

*

Top