Global Editions

پاکستان میں کرونا وائرس: تعلیمی ادارے کھول دیے گئے؛ پاکستان میں ویکسین کے ٹرائلز شروع کرنے کی تیاری

ملک بھر میں تعلیمی ادارے اگلے ہفتے سے کھول دیے جائيں گے۔ تاہم حکومت انفیکشن کی شرح میں اضافے پر نظر رکھے گی۔

اعداد و شمار: جمعہ کی دوپہر تک، پاکستان میں covid-19 کے مجموعی کیسز کی کل تعداد 300,371 تک پہنچ چکی تھی۔ اب تک 6,370 اموات واقع ہوچکی ہيں، جس میں سے پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران جانبحق ہونے والوں کی تعداد پانچ رہی۔ اب تک 288,206 افراد صحتیاب ہوچکے ہيں۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران پاکستان بھر میں 548 نئے کیسز سامنے آئے۔ صوبہ سندھ سے 131,404، پنجاب سے 97,533، خیبرپختونخواہ سے 36,823، بلوچستان سے 13,282، اسلام آباد سے 15,832، گلگت بلتستان سے 3,131، اور آزاد جموں و کشمیر سے 2,366 کیسز کی اطلاعات موصول ہوئی ہيں۔ کراچی کے آغا خان یونیورسٹی کے ریسرچرز کے مطابق covid-19 کے شکار 95 فیصد افراد میں کوئی علامات سامنے آئيں تھیں۔

تعلیمی ادارے کھول دیے گئے: وفاقی حکومت نے تمام تعلیمی اداروں کے کھولنے کے لیے منصوبہ تیار کرلیا ہے۔ پہلے مرحلے میں، پونیورسٹیاں، کالجز اور نویں سے بارہویں جماعت سے سکولز 15 ستمبر سے کھولے جائيں گے۔ دوسرا مرحلہ 23 ستمبر سے شروع ہوگا، جس میں چھٹی، ساتویں، اور آٹھویں جماعت کے طلباء واپس آنا شروع ہوں گے۔ اس دوران کرونا وائرس کے کیسز کی تعداد پر نظر رکھی جائے گی۔ صورتحال مستحکم ہونے کی صورت میں 30 ستمبر کو آخری مرحلہ شروع ہوگا، جس میں پرائیمری سکولز کو دوبارہ کھول دیا جائے گا۔

 ویکسین کے ٹرائلز: چینی کمپنیوں چائنہ نیشنل بائیوٹیک گروپ (China National Biotech Group) اور سائینوویک بائیوٹیک لمیٹیڈ (Sinovac Biotech Ltd) نے کرونا وائرس کی ویکسین کے پروٹوٹائپس تیار کیے ہيں اور دیگر ممالک سمیت پاکستان ان کے ٹرائلز منعقد کرنے پر آمادہ ہوچکا ہے۔ پاکستان میں ادویات کے ضابطہ کار ادارے نے کین سائینو (CanSino) کی دوا Ad5-nCoV کے کلینیکل ٹرائل شروع کرنے کی اجازت دی دے ہے۔ یہ ٹرائل کین سائنو کے مقامی نمائندے، دواساز کمپنی اے جے ایم (AJM) اور نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ (National Institute of Health) کی نگرانی میں شروع کیا جائے گا۔ پاکستان میں کرونا وائرس کے کیسز کی تعداد میں کمی کے باوجود یہ ٹرائلز متاثر نہيں ہوں گے۔ ان میں شرکت کرنے والے زيادہ تر افراد ہسپتال کا عملہ ہوگا، جن کے ایکسپوژر کے امکانات سب سے زيادہ ہيں۔ دو روز پہلے، ایک شرکت کنندہ کی بیماری کے بعد ایسٹرا زینیکا (AstraZeneca) نامی دوا ساز کمپنی کے ٹرائلز عارضی طور پر معطل کردیے گئے تھے۔ عالمی ادارہ صحت نے اس بات پر زور دیا ہے کہ ڈاکٹروں، مریضوں، اور دوا ساز کمپنیوں کی اولین ترجیح منافع نہيں بلکہ مریضوں کا تحفظ ہونا چاہیے۔

تحریر: ٹی آر پاکستان

تصویر: عرب نیوز

Read in English

Authors

*

Top