Global Editions

ماحولیاتی تبدیلی کے باعث آسٹریلوی جنگلات کی آگ کے امکانات میں 30 فیصد اضافہ ہوا

اس سال آسٹریلیا کے جنگلات کی آگ کے باعث نہ صرف درجنوں افراد جاں بحق ہوئے بلکہ پورے براعظم کے بیس فیصد جنگلات بھی تہس نہس ہوگئے۔ اس تباہی کی ایک بہت بڑی وجہ ماحولیاتی تبدیلی ہے۔

نتائج: آکسفورڈ یونیورسٹی اور رائیل نیدرلینڈز میٹیریولوجکل انسٹی ٹیوٹ (Royal Netherlands Meteorological Institute) سے وابستہ ریسرچ گروپ ورلڈ ویدر ایٹری بیوشن (World Weather Attribution) کی ایک رپورٹ کے مطابق اگر انسانی سرگرمیوں کے باعث ہوا میں گرین ہاؤس گیسز کا اس قدر زیادہ اخراج نہ ہوتا تو آسٹریلیا کے جنگلات میں تیزی سے پھیلنے والی آگ کے امکانات تیس فیصد کم ہوسکتے تھے۔

اس مطالعے میں ماحولیاتی تبدیلی اور آسٹریلیا کی حالیہ خشک سالی کے درمیان کوئی واضح تعلق تو قائم نہ ہوسکا، تاہم یہ بات ضرور ثابت ہوئی کہ پچھلے سال کی شدید گرمی کی لہروں کے امکانات میں دو گنا اضافہ ہوا تھا۔ آسٹریلیا کے محکمہ ماحولیات کی 2018ء میں شائع ہونے والے ایک رپورٹ سمیت ریسرچ سے یہ نتیجہ سامنے آیا ہے کہ ماحولیاتی تبدیلی کے باعث جنگلات کی آگ کے امکانات میں قابل قدر اضافہ ہوا ہے۔

ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات کی نشاندہی کس طرح کی گئی؟ اس قسم کے مطالعہ جات میں سائنسدان ماحولیاتی تبدیلی کی وجوہات اور اثرات کا تعین کرنے کے لیے عام طور پر دو کمپیوٹر سیمولیشنز کا موازنہ کرتے ہيں۔ پہلی سیمولیشن میں 1900ء کی صورتحال کو دوبارہ تخلیق کرنے کی کوشش کی جاتی ہے، جب ماحولیاتی تبدیلی نہ ہونے کی برابر تھی۔ دوسری سیمولیشن میں موجودہ دور کی ماحولیاتی تبدیلی کو دیکھا جاتا ہے۔ اس کے بعد ان دونوں صورتوں میں ملتے جلتے نتائج سامنے آنے کے امکانات متعین کیے جاتے ہيں۔

تحریر: جیمز ٹیمپل (James Temple)

تصویر: ناسا ارتھ آبسرویٹری (NASA Earth Observatory)

Read in English

Authors

*

Top