Global Editions

کورونا وائرس

انسانوں کے کام، روبوٹس کے نام

انسانوں کے کام، روبوٹس کے نام

امریکی ریاست مسوری کے شہر سینٹ لوئینس کی ایک سپرمارکیٹ کا ایک منظر بیان کرتے ہيں۔ ایک حصے میں کچھ خالی شیلف نظر آرہے ہیں، اور ان کے درمیان ایک روبوٹ لڑھکتا ہوا گزر رہا ہے۔ آگے سے ایک انسان ماسک پہنے ڈبل روٹی خریدتا ہوا دکھائی دے رہا ہے۔ یہ روبوٹ ایک ویکوم کلینر …مزید پڑ ھیں

ہوا میں تیر: کرونا ویکسین سب سے پہلے کس کے لیے؟

2004ء میں سائنوویک بائیوٹیک (Sinovac Biotech) نامی ایک چینی کمپنی نے سارز وائرس کے لیے ایک ویکسین پر تجربہ کرنا شروع کیا۔ لیکن 800 افراد کی موت کے بعد یہ مرض خودبخود غائب ہوگیا، جس کے بعد سائنسدانوں نے اس ویکسین پر مزید کام کرنے کا ارادہ ترک کردیا۔ تاہم اس سے یہ فائدہ ضرور …مزید پڑ ھیں

کرونا وائرس کے ٹرائلز کے لیے ذمہ دار شخص کے ساتھ ایک نشست

چاہے ریستوران اور سکولز بند کرنے کی بات ہو یا ماسکس پہننے کی، صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کا گورنرز اور ڈاکٹروں کے ساتھ ہر ایک چیز پر اختلاف رہا ہے۔ اور covid-19 کی ویکسین کے حوالے سے بھی ایسا ہی کچھ ہوا ہے۔ تاہم ایک ایسی بات جس پر سب ہی اتفاق کرتے ہيں …مزید پڑ ھیں

وائرس جس نے دنیا میں دراڑ ڈال دی

جولائی کے اختتام تک کئی ترقی یافتہ ممالک میں کرونا وائرس کا زور ختم ہونا شروع ہوگیا۔ تاہم امریکہ میں نئے کیسز کی یومیہ تعداد میں ریکارڈ توڑ اضافہ جاری رہا۔ اس وبا کے باعث امریکی قیادت کے متعلق عالمی پیمانے پر کئی سوالات اٹھائے جانے لگے۔ ڈاہلیا ریسرچ (Dalia  Research ) نامی سروے کمپنی …مزید پڑ ھیں

دوا ساز کمپنیوں کے مطابق کرونا وائرس کی نئی شکل پریشانی کا باعث نہيں ہے

دسمبر کی ابتداء میں یہ خبر سامنے آئی کہ  برطانیہ میں کرونا وائرس کی ایک نئی شکل دریافت ہوئی ہے، جس کے بعد یورپ بھر میں پریشانی کی ایک لہر دوڑ گئی اور کئی ممالک نے برطانیہ سے آنے والے مسافرین پر پابندیاں عائد کردیں۔ تاہم کچھ  سائنسدانوں کے مطابق اب تک یہ بات ثابت …مزید پڑ ھیں

”ویکسین کا یہ مطلب نہيں ہے کہ ہم احتیاط چھوڑ دیں“

کرونا وائرس کی وبا شروع ہوتے ہی کانٹیکٹ ٹریسنگ کی ایپس سامنے آنا شروع ہوگئیں، جنہيں سمارٹ فونز پر انسٹال کیا جاسکتا ہے، اور جو آپ کو کرونا وائرس کے شکار افراد سے قریب آنے کی صورت میں مطلع کرتی ہيں۔ یہ ایپس اب تک کرونا وائرس کی وبا پر قابو پانے میں کامیاب ثابت …مزید پڑ ھیں

ہمیں برطانیہ میں سامنے آنے والے نئے کرونا وائرس کے متعلق کیا معلوم ہے؟

انگلینڈ کے جنوبی حصے میں covid-19 کے کیسز کی تعداد میں ایک بار پھر اضافہ ہونا شروع ہوگیا ہے، جس کی وجہ کرونا وائرس کی ایک نئی شکل بتائی جارہی ہے۔ ستمبر میں سامنے آنے والا یہ نیا وائرس اب اس خطے کے 50 فیصد نئے کیسز کی وجہ بن چکا ہے۔ جینومک ریسرچرز کے …مزید پڑ ھیں

کرونا وائرس کی ویکسین: کس ملک کو کب ملے گی؟

کرونا وائرس کی ویکسینز جلد متعارف ہونے والی ہیں۔ برطانیہ نے 2 دسمبر کو فائزر (Pfizer) اور بائیو این ٹیک (BioNTech) کی مشترکہ ویکسین کو منظوری دی، جس کے بعد وہ اس عالمی وبا کی ویکسینیشن مہم شروع کرنے والا پہلا مغربی ملک بن گیا۔ توقع کی جارہی ہے کہ امریکہ، یورپی اتحاد، اور دیگر …مزید پڑ ھیں

کرونا ویکسینز کے متعلق حساس دستاویزات ہیک ہو گئے

فائزر (Pfizer) اور بائیو این ٹیک (BioNTech) کی مشترکہ ویکسین کا تجزیہ کرنے والے ادارے یورپی ميڈیسنز ایجنسی (European Medicines Agency) نے بتایا ہے کہ انہيں سائبر حملے کا نشانہ بنایا گيا ہے۔ یورپی حکام کے مطابق ”برطانیہ میں اس ویکسین کا استعمال شروع کرنے کے کچھ روز کے بعد ہی، اس سے متعلق دستاویزات …مزید پڑ ھیں

برطانیہ میں کرونا وائرس کی ویکسینیشن کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے

پچھلے ہفتے برطانیہ نے فائزر (Pfizer) اور بائیو این ٹیک (BioNTech) کی کرونا وائرس ویکسین کو منظوری دی تھی اور اب یہاں شہریوں کی ویکسینیشن کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔ یہ ویکسین سب سے پہلے اولڈ پیپلز ہومز کے ملازمین اور 80 سال سے زائد عمر کے افراد کو لگائی جائے گی۔ یونیورسٹی ہسپتال کووینٹری …مزید پڑ ھیں

Top