Global Editions

مصنوعی ذہانت

مصنوعی ذہانت سے صحت کے شعبے کی عدم مساوات کس طرح ختم کی جاسکتی ہے؟

مصنوعی ذہانت سے صحت کے شعبے کی عدم مساوات کس طرح ختم کی جاسکتی ہے؟

پچھلے چند سالوں کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ کینسر کی ابتدائی مراحل میں نشاندہی اور آنکھوں کے امراض کی تشخیص جیسے کاموں میں ڈیپ لرننگ کی کارکردگی ماہرین جتنی ہی درست ہوتی ہے۔ تاہم اس کے ساتھ کئی مسائل بھی جڑے ہوئے ہیں۔ ہمیں یہ بات اچھے سے معلوم ہے کہ ڈیپ …مزید پڑ ھیں

ہم 2021ء میں مصنوعی ذہانت سے بھرپور فائدہ کس طرح حاصل کرسکتے ہيں؟

2019ء کے آخری ایام میں، میں نے ایک تحریر میں لکھا تھا کہ مصنوعی ذہانت کی کمیونٹی ایک دوراہے پر کھڑی ہے۔ 2018ء میں خودکار گاڑیوں اور انسانی وسائل بھرتی کرنے کے سسٹمز سمیت کئی ”شاندار ناکامیاں “ سامنے آئيں۔ اگلے سال، یعنی 2019ء میں مصنوعی ذہانت کے شعبے سے وابستہ اخلاقیات پر بہت بات ہوئی۔ …مزید پڑ ھیں

جعلی ویڈيوز اب عام ہوتی جارہی ہیں

2018ء میں رپورٹر سیم کول (Sam Cole) کو انٹرنیٹ پر ایک اندھیرنگری ملی، جہاں ریڈٹ کا ایک صارف مصنوعی ذہانت کے الگارتھمز کی مدد سے فحاش ویڈيوز پر مشہور افراد کی شکلیں چسپاں کر کے جعلی ویڈيوز بنانے میں مصروف تھا۔ کول نے ان ویڈیوز کے متعلق لوگوں کو آگاہی تو فراہم کرنے کی کوشش …مزید پڑ ھیں

انسانوں کے کام، روبوٹس کے نام

امریکی ریاست مسوری کے شہر سینٹ لوئینس کی ایک سپرمارکیٹ کا ایک منظر بیان کرتے ہيں۔ ایک حصے میں کچھ خالی شیلف نظر آرہے ہیں، اور ان کے درمیان ایک روبوٹ لڑھکتا ہوا گزر رہا ہے۔ آگے سے ایک انسان ماسک پہنے ڈبل روٹی خریدتا ہوا دکھائی دے رہا ہے۔ یہ روبوٹ ایک ویکوم کلینر …مزید پڑ ھیں

ای کامرس کمپنیاں ایک عالمی وبا کے دوران اپنی آمدنی میں کس طرح اضافہ کررہی ہیں؟

ایک طرف دنیا بھر کی نظریں امریکی انتخابات پر ٹکی ہوئی تھیں، لیکن دوسری طرف، چین کی توجہ سال کے سب سے بڑے شاپنگ فیسٹیول پر تھی۔ یکم نومبر سے 11 نومبر کے درمیان منعقد ہونے والی سنگلز ڈے (Single’s Day) کی اس سالانہ سیل میں چین کی دو بڑی ای کامرس کمپنیوں، علی بابا …مزید پڑ ھیں

ہم ایک دن ڈیپ لرننگ کی مدد سے سب کچھ کر سکیں گے

موجودہ مصنوعی ذہانت کے انقلاب کی بنیاد امیج نیٹ (ImageNet) کے سالانہ مقابلے میں رکھی گئی، جس میں مختلف ٹیمیں ایک ہزار مختلف اشیاء پہچاننے والے روبوٹس بنانے کی کوشش کرتی ہیں۔ 2010ء میں شروع ہونے والے اس مقابلے میں دو سال تک تو کسی بھی ٹیم کی درستی 75 فیصد تک بھی نہيں پہنچ …مزید پڑ ھیں

ہم اس وقت مصنوعی ذہانت کے لیے تیار نہيں ہیں

ایم آئی ٹی کے کمپیوٹر سائنس اور آرٹیفیشیئل انٹیلی جینس لیباریٹری (Computer Science and Artificial Intelligence Laboratory) کی پروفیسر ریجینا بارزیلے (Regina Barzilay) سکوئیرل اے آئی ایوارڈ فار آرٹیفیشیئل انٹیلی جینس فار دی بینیفٹ آف ہیومینٹی (Squirrel AI Award for Artificial Intelligence for the Benefit of Humanity) جیتنے والی پہلی مصنوعی ذہانت کی ریسرچر ہیں۔ …مزید پڑ ھیں

مصنوعی ذہانت کی مدد سے منی لانڈرنگ کے تیزی سے بدلتے ہوئے طریقوں کا کس طرح مقابلہ کیا جاسکتا ہے؟

جب کرونا وائرس کے باعث دنیا بھر کے کاروبار بند ہوگئے تو کاروبار کے مالکان اور صارفین تو پریشان ہوئے ہی، لیکن جرائم پیشہ افراد کو بھی کئی مشکلات کا سامنا رہا۔ ان کی سب سے بڑی پریشانی یہی تھی کہ رقم کی ہیرا پھیرا کس طرح جاری رکھی جائے؟ جرائم سے حاصل کردہ منافع …مزید پڑ ھیں

مصنوعی ذہانت کے سسٹمز کے نسلی تعصب کو کس طرح ختم کیا جاسکتا ہے؟

نام: انیولووا ڈیبرا راجی (Inioluwa Deborah Raji) عمر: 24 سال ادارہ: اے آئی ناؤ انسٹی ٹیوٹ (AI Now Institute) جائے پیدائش: نائیجیریا انیولووا ڈیبرا راجی بتاتی ہیں کہ انہوں نے مصنوعی ذہانت پر ریسرچ اس وقت شروع  کی جب انہيں ان سسٹمز کی ایک بہت بڑی خامی کا احساس ہوا۔ اپنے کالج کے زمانے میں …مزید پڑ ھیں

مشین لرننگ کے ذریعے پارکنسنز کا علاج کس طرح ممکن ہے؟

نام: کیتھارینا وولز (Katharina Volz) عمر: 33 سال ادارہ: اوکیمز ریزر (OccamzRazor) جائے پیدائش: جرمنی 2016ء میں کیتھارینا وولز کو خبر ملی کہ ان کے ایک قریبی رشتہ دار پارکنسنز (Parkinson’s) کا شکار ہیں۔ انہوں نے حال ہی میں سٹینفورڈ یونیورسٹی سے اپنا پی ایچ ڈی مکمل کیا تھا اور وہ اس وقت سٹیم سیلز …مزید پڑ ھیں

Top