Global Editions

بائیو ٹیکنالوجی

لاک ڈاؤنز کی وجہ سے یورپ میں 30 لاکھ اموات کی روک تھام ممکن ہوئی

لاک ڈاؤنز کی وجہ سے یورپ میں 30 لاکھ اموات کی روک تھام ممکن ہوئی

ریسرچرز کی کیلکولیشنز کے مطابق، یورپ میں نافذ کردہ لاک ڈاؤنز کی وجہ سے مئی کی ابتداء تک 31 لاکھ اموات کی روک تھام ممکن ہوئی ہے۔ لوگوں کی نقل و حمل پر پابندی اور سماجی دوری کی بدولت کرونا وائرس کے پھیلاؤ میں 81 فیصد کمی ممکن ہوئی۔ ان اقدام سے وبا کی افزائش …مزید پڑ ھیں

سماجی دوری: ایک میٹر کے بجائے دو میٹر کا فاصلہ رکھیں

ایک نئی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ میں کمی لانے کے لیے ایک میٹر کے بجائے دو میٹر کا فاصلہ برقرار رکھنا زیادہ فائدہ مند ثابت ہوگا۔ اس نتیجے تک پہنچنے کے لیے ریسرچرز نے 16 ممالک سے 172 مطالعہ جات کا تجزیہ کیا تھا۔ ایک دوسرے سے …مزید پڑ ھیں

کرونا وائرس کی ویکسینز کے سلسلے میں مزید پیش رفت

بندروں پر کی جانے والی تحقیق سے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ کرونا وائرس کا شکار ہونے کے بعد جسم کی قوت مدافعت مزید بہتر ہو سکتی ہے اور ویکسین سے تحفظ حاصل ہوسکتا ہے۔ اہم سوالات: کیا ایک دفعہ کرونا وائرس کا شکار ہونے کے بعد انسانی جسم کی مدافعت میں اضافہ …مزید پڑ ھیں

چین میں لاک ڈاؤن ختم کرنے کے بعد کرونا وائرس کے نئے کیسز دوبارہ سامنے آرہے ہیں

تفصیلات: چین کے شہر ووہان میں لاک ڈاؤن کے خاتمے کے بعد کرونا وائرس کے کیسز دوبارہ سامنے آنا شروع ہوگئے ہیں، اور اب اس شہر کے تمام 1.1 کروڑ باسیوں کی نئے سرے سے ٹیسٹنگ کی جائے گی۔ ووہان کے اینٹی وائرس ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جاری کردہ ایک دستاویز کے مطابق ووہان کے …مزید پڑ ھیں

کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی نشاندہی کس طرح ممکن ہے؟

امریکہ سمیت کئی ممالک میں کرونا وائرس کے شکار افراد کی نشاندہی کے لیے اب تک لاکھوں افراد کی ٹیسٹنگ کی جا چکی ہے۔ ان ٹیسٹس میں PCR نامی تکنیک کا استعمال کیا جاتا ہے، جس کے ذریعے ناک یا گلے سے حاصل کردہ نمونوں میں وائرس کا جینیاتی مواد تلاش کرنے کی کوشش کی …مزید پڑ ھیں

اجتماعی قوت مدافعت سے کیا مراد ہے؟

کرونا وائرس کے خاتمے کے تین بنیادی طریقے ہیں۔ پہلا تو یہ ہے کہ نقل و حمل اور اجتماعی سرگرمیوں پر انتہائی سخت قسم کی پابندیاں عائد کی جائيں اور ٹیسٹنگ میں اضافہ کردیا جائے۔ دوسرا طریقہ ایک ویکسین ہے۔ لیکن ایک اور طریقہ بھی موجود ہے جو ممکنہ طور پر موثر تو ثابت ہوسکتا …مزید پڑ ھیں

اینٹی جین ٹیسٹنگ سے کرونا وائرس کی کم قیمت میں اور زيادہ جلدی ٹیسٹنگ ممکن ہے

 اس وقت امریکہ میں کرونا وائرس کی جتنی ٹیسٹنگ ہونی چاہیے، ٹیسٹس کی تعداد اس سے کہیں کم ہے۔ معیشت کو بحفاظت بحال کرنے کے لیے روزانہ دو کروڑ افراد کی ٹیسٹنگ ضروری ہے، لیکن اس وقت ٹیسٹس کی تعداد محض 150،000 یومیہ ہے۔ اس تعداد میں جلدی اضافہ کرنے کے لیے نت نئے طریقے …مزید پڑ ھیں

ہمیں اب تک کرونا وائرس کے متعلق کیا معلوم ہے؟

کرونا وائرس کیا ہے؟ Covid-19 کے لیے ذمہ دار ویریون (virion) یعنی وائرس کے انفرادی ذرے کا نصف قطر 80 نینومیٹرز ہے۔ اس پیتھوجن کا تعلق کرونا وائرس فیملی سے ہے جس میں SARS اور MERS انفیکشنز کے لیے ذمہ دار وائرسز بھی شامل ہيں۔ ہر ویریون کے مرکز میں جینیٹک کوڈ یعنی RNA موجود …مزید پڑ ھیں

کیا کرونا وائرس سے زندہ بچنے والوں کے خون کا پلازما اس وبا کو مات دے سکتا ہے؟

ایک نئے مطالعے سے یہ بات سامنے آئی ہے Covid-19 کا شکار ہونے کے بعد زندہ بچنے والوں سے خون حاصل کرکے دوسروں کی مدد کی جاسکتی ہے۔ پلازما کے عطیے: کسی بھی بیماری سے زندہ بچنے والوں کے خون کا دوسروں کے علاج کے لیے استعمال کوئی نئی بات نہيں ہے اور اس وقت …مزید پڑ ھیں

کرونا وائرس کے شکار افراد پہلے ہفتے میں سب سے زيادہ جراثیم پھیلا سکتے ہيں

جریدہ نیچر (Nature) میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق کرونا وائرس کے شکار افراد علامات ظاہر ہونے کے پہلے ہفتے کے اندر سب سے زيادہ جراثیم پھیلاتے ہيں۔ تفصیلات: ریسرچرز نے جرمنی کے شہر میونخ سے تعلق رکھنے والے نو مریضوں کے ڈیٹا کا تجزیہ کیا جن میں کرونا وائرس کی ”معتدل“ علامات …مزید پڑ ھیں

Top