Global Editions

ایڈوب میں نیا ٹول فوٹو شاپ والی تصویر کا پتا چلا سکتا ہے

ایڈوب میں مصنوعی ذہانت انسانوں کے مقابلے میںٖ فوٹو شاپ والے چہروں کا پتا چلانے میں تقریباًدو گنا اچھی ہے۔

ریسرچ: ایڈوب اور یو نیورسٹی آف کیلفورنیا (یوسی)، برکلے کے محققین نے ایک ایسا ٹول تخلیق کیا ہے جو مشین لرننگ کا استعمال کرتے ہوئے لوگوں کے تبدیل کئے گئے چہروں کا پتا لگا سکتا ہے۔ ڈیپ لرننگ کے اس آلہ کو انٹرنیٹ سے ہٹائی گئی ہزاروں تصاویر پر تربیت دی گئی ہے۔ تجربات کے ایک سلسلے میں، یہ ترمیم کردہ چہرے کا صحیح طریقے سے شناخت کرنے میں 99فیصدکامیاب رہا جبکہ اس کے مقابلے میں انسانوں کی طرف سے چہرے کا پتا چلانے کی شرح 53 فیصد تھی۔

سیاق وسباق: جعلی تصاویر اور “ڈیپ فیک” ویڈیوکے پھیلاؤ پر تشویش بڑھ رہی ہے۔ تاہم مشین لرننگ ٹیکنالوجی جعلی تصاویرکا پتہ لگانے (اس کے ساتھ ساتھ تخلیق کرنے میں) ایک مفید ہتھیار بھی ہو سکتی ہے۔

کچھ وضاحتیں: یہ سمجھا جا سکتا ہے کہ ایڈوب چاہتا ہے کہ وہ اس مسئلے پر کام کرے کیونکہ اس کی اپنی مصنوعات تصاویر کو تبدیل کرنے میں استعمال کی جاتی ہیں۔ یہ ٹول صرف ان تصاویر پر کام کرتا ہے جو ایڈوب فوٹوشاپ فیس اوئیر لیکوفائی فیچرAdobe Ohotshop’s Face Aaware Liquifi)کا استعمال کرکے بنائی گئی تھیں۔

یہ صرف ایک پروٹوٹائپ ہے لیکن کمپنی کا کہنا ہے کہ یہ اس تحقیق کو آگے بڑھانے کا ارادہ رکھتی ہے اور پوری طرح سے اپنی مصنوعات کے غلط استعمال اور ان کی روک تھام کے لئے ٹول فراہم کرتی ہے۔

تحریر: کارلوٹی جی(Charlotte Jee)

Read in English

Authors

*

Top