Global Editions

چین کے ایک شہر کو مصنوعی چاند سے روشن کرنے کا فیصلہ

چین نے اپنے ایک شہر میں سٹریٹ لائٹس اور چاند کی روشنی پر اکتفا کرنے کی بجائے مصنوعی چاند کے ذریعے شہر کو روشن کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ چاند دیکھنے میں ہوبہو اصل چاند جیسا ہی ہوگا اور اس مصنوعی چاند کی روشنی اس قدر تیز اور چمکدار ہوگی کہ اس سے سٹریٹ لائٹس کی ضرورت بھی باقی نہیں رہے گی۔ چینگ یو ایروسپیس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی انسٹیٹیوٹ کے چیئرمین چن فنگ کے مطابق اس مصنوعی چاند کی روشنی اصل چاند سے آٹھ گنا زیادہ تیز ہوگی اور اس سے 10سے لے کر 80کلومیٹر تک کے علاقے کو روشن رکھا جا سکے گا۔جبکہ ہر علاقے میں روشنی کو مرضی کے مطابق کم یا زیادہ بھی کیا جا سکے گا۔یاد رہے کہ 1999ء میں ایسا ہی ایک تجربہ روس میں کیا گیاتھا جس میں خلا میں ایک بہت بڑا آئینہ رکھا گیا تھا تاکہ اس سے منعکس ہونے والی روشنی کو زمین پر مرکوز کیا جا سکے لیکن یہ تجربہ کامیاب نہیں ہو سکا تھا۔ چن فنگ کے مطابق ان کی تیار کردہ ٹیکنالوجی مکمل طور پر کامیاب ہے اور 2020ء میں زی چینگ سیٹیلائٹ سنٹر سے اسے لانچ کر دیا جائے گا۔

Authors
Top