Global Editions

Most Recent Articles

مالی سہولیات کے نئے دور میں پارٹنرشپس کی اہمیت

اگر آپ کا شمار پاکستان کی اْن فِن ٹیک کی سٹارٹ اپ کمپنیوں میں ہوتا ہے جو فِن ٹیک کے شعبے میں کامیابی حاصل کرنا چاہتی ہیں تو ممکن ہے کہ آپ مایوسی ہی کا منہ دیکھ رہے ہوں۔ آپ سوچنے لگ جاتے ہیں کہ کوئی بھی فِن ٹیک کی سٹارٹ اپ کمپنی ایسی مارکیٹ …مزید پڑ ھیں

مائیکروفنانس اور فِن ٹیک

پاکستان میں مائیکروفنانس نے کافی ترقی کرلی ہے لیکن اگر اس صنعت کو کچھ کرگزرنا ہے تو اسے مزید آگے بڑھنے کی ضرورت ہے۔ صارفین کی موجودہ تعداد 47 لاکھ ہے لیکن ممکنہ مارکیٹ 3 کروڑکی ہے۔ اس وقت صنعت کا سب سے بڑا چیلنج عملیاتی اخراجات کی زیادتی ہے۔ دستی پراسیسنگ اس قدر زیادہ …مزید پڑ ھیں

کاغذ کا مسئلہ

کسی شخص کی نجی معلومات کے تحفظ کا حق کہاں ختم ہوتا ہے؟ حکومت کا ٹیکس لاگو کرنے اور قواعد و ضوابط اور قانون نافذ کرنے کا حق کہاں شروع ہوتا ہے؟ یہ آج کل معاشرے کا بہت بڑا چیلنج ہے۔ اس کی ایک بہت اچھی مثال ہمارا پیسے خرچ کرنے کا طریقہ ہے۔ ہمارے …مزید پڑ ھیں

نیوز بلیٹن

میگزین

تازہ ترین

مالی سہولیات کے نئے دور میں پارٹنرشپس کی اہمیت

اگر آپ کا شمار پاکستان کی اْن فِن ٹیک کی سٹارٹ اپ کمپنیوں میں ہوتا ہے جو فِن ٹیک کے شعبے میں کامیابی حاصل کرنا چاہتی ہیں تو ممکن ہے کہ آپ مایوسی ہی کا منہ دیکھ رہے ہوں۔ آپ سوچنے لگ جاتے ہیں کہ کوئی بھی فِن ٹیک کی سٹارٹ اپ کمپنی ایسی مارکیٹ …مزید پڑ ھیں

مائیکروفنانس اور فِن ٹیک

پاکستان میں مائیکروفنانس نے کافی ترقی کرلی ہے لیکن اگر اس صنعت کو کچھ کرگزرنا ہے تو اسے مزید آگے بڑھنے کی ضرورت ہے۔ صارفین کی موجودہ تعداد 47 لاکھ ہے لیکن ممکنہ مارکیٹ 3 کروڑکی ہے۔ اس وقت صنعت کا سب سے بڑا چیلنج عملیاتی اخراجات کی زیادتی ہے۔ دستی پراسیسنگ اس قدر زیادہ …مزید پڑ ھیں

کاغذ کا مسئلہ

کسی شخص کی نجی معلومات کے تحفظ کا حق کہاں ختم ہوتا ہے؟ حکومت کا ٹیکس لاگو کرنے اور قواعد و ضوابط اور قانون نافذ کرنے کا حق کہاں شروع ہوتا ہے؟ یہ آج کل معاشرے کا بہت بڑا چیلنج ہے۔ اس کی ایک بہت اچھی مثال ہمارا پیسے خرچ کرنے کا طریقہ ہے۔ ہمارے …مزید پڑ ھیں

پاکستان میں فِن ٹیک کی نئی صبح

کمرشل بینکنگ کے شعبے میں 18 سال گزارنے کے بعد قاصف شاہد نے حال ہی میں ملازمت چھوڑ کر اپنی کمپنی قائم کی۔ انھوں نے 10لاکھ ڈالر کی وینچر کیپیٹل کی سرمایہ کاری حاصل کرکے ایک ایسا ڈیجیٹل والٹ تیار کیا ہے جس کے ذریعے کیش کے استعمال کو کم کیا جاسکتا ہے۔ ان کی …مزید پڑ ھیں

دنیا کو مصنوعی ذہانت کے شر سے محفوظ رکھنے کی کوششیں جاری

نام: گریگ بروک مین (Greg Brockman) عمر: 28 سال ادارہ: اوپن اے آئی وہ وقت بہت دور ہے جب مصنوعی ذہانت انسانوں کے مدمقابل کھڑی ہوسکے، لیکن گریگ بروک مین کا کہنا ہے کہ ہمیں ابھی سے ہی مصنوعی ذہانت کے نقصانات سے بچاؤ کے متعلق اقدام کرنے کی ضرورت ہے۔ یہی وجہ ہے کہ …مزید پڑ ھیں

کینسر کی تشخیص اور علاج کو بہتر بنانے کے لیے کام جاری

نام: وکٹر اڈیل سٹائنسن (Viktor Adalsteinsson) عمر: 29 سال ادارہ: بروڈ انسٹی ٹیوٹ وکٹر اڈیل سٹائنسن نے میساچوسٹس کے شہر کیمبرج میں واقع بروڈ انسٹی ٹیوٹ (Broad Institute) کے لیب میں ایک ایسا خودکار سسٹم تیار کیا ہے جس کی مدد سے لیکویئڈ بائیوپسی یعنی خون کے نمونوں میں ٹیومر کی نشاندہی ممکن ہے۔ برتر …مزید پڑ ھیں

جین کی ترمیم کی ٹیکنالوجی کو ایک کامیاب کاروبار کی شکل دینے کی کوششیں جاری

ریچل ہورویٹز (Rachel Haurwitz) عمر: 32 سال ادارہ: کیریبوبائیوسائنسز ریچل ہوروٹز کو جین کی ترمیم کی انقلابی ٹیکنالوجی سی آر آئی ایس پی آر (CRISPR) کے انکشاف کے بعد اپنی کمپنی کھولنے میں زیادہ دیر نہیں لگی۔ 2012ء میں یونیورسٹی آف کیلیفورنیا، برکلی، میں واقع جینیفر ڈوڈنا (Jennifer Doudna) کے لیب میں کام کرتے ہوئے …مزید پڑ ھیں

لچک دار اجزاء سے الیکٹرانکس کے شعبے کو تبدیل کرنے کی کوششیں جاری

نام: بل لیو (Bill Liu) عمر: 34 سال ادارہ: رویول بل لیو ایک ایسا کام کرنے کی کوشش کررہے جو اب تک سام سنگ، ایل جی اور لینووو جیسی کمپنیاں نہیں کر پائی ہیں - وہ ایسے کم قیمت اور لچک دار الیکٹرانک پرزے بنانا چاہ رہے ہيں جنھیں کسی بھی شکل میں بہ آسانی …مزید پڑ ھیں

کاروبار کرنے کے نت نئے طریقہ کار کی تلاش

کیتھی گانگ (Kathy Gong) عمر: 30 سال ادارہ: وفا گیمز آپ کیتھی گانگ کی غیرمعمولی ذہانت کا اس بات سے اندازہ لگا سکتے ہیں کہ انھوں نے تیرہ سال کی عمر میں ہی شطرنج ماسٹر کا خطاب حاصل کرلیا تھا۔ چار سال بعد وہ کولمبیا یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کرنے کے لیے نیو یارک پہنچ …مزید پڑ ھیں

اب گھر بیٹھے بیوٹی پارلر کی سہولیات حاصل کریں

ٹیلس گومز (Tallis Gomes) عمر: 30 سال ادارہ: سنگو چار سال تک برازیل میں ایزی ٹیکسی نامی اوبر جیسی ٹیکسی کمپنی کے سی ای ای او کا عہدہ سنبھالنے کے بعد، ٹیلس گومیز نے 2015ء میں سولہ سنگھار کی صنعت میں بھی اسی طرح کی سہولت متعارف کرنے کا ارادہ کیا۔ اس سلسلے میں انھوں …مزید پڑ ھیں

مالی سہولیات کے نئے دور میں پارٹنرشپس کی اہمیت

اگر آپ کا شمار پاکستان کی اْن فِن ٹیک کی سٹارٹ اپ کمپنیوں میں ہوتا ہے جو فِن ٹیک کے شعبے میں کامیابی حاصل کرنا چاہتی ہیں تو ممکن ہے کہ آپ مایوسی ہی کا منہ دیکھ رہے ہوں۔ آپ سوچنے لگ جاتے ہیں کہ کوئی بھی فِن ٹیک کی سٹارٹ اپ کمپنی ایسی مارکیٹ …مزید پڑ ھیں

پاکستان میں فِن ٹیک کی نئی صبح

کمرشل بینکنگ کے شعبے میں 18 سال گزارنے کے بعد قاصف شاہد نے حال ہی میں ملازمت چھوڑ کر اپنی کمپنی قائم کی۔ انھوں نے 10لاکھ ڈالر کی وینچر کیپیٹل کی سرمایہ کاری حاصل کرکے ایک ایسا ڈیجیٹل والٹ تیار کیا ہے جس کے ذریعے کیش کے استعمال کو کم کیا جاسکتا ہے۔ ان کی …مزید پڑ ھیں

مسٹر روبوٹ شو ہیکرز کی درست نمائندگی کرتا ہے

ہیکرز کون ہیں؟ کیا کرسکتے ہیں اور کس طرح کام کرتے ہیں؟ وہ اپنی سرگرمیوں کو دوسروں کی نظروں سے کیسے پوشیدہ رکھتے ہیں؟ یہ وہ سوالات ہیں جو عام لوگوں کے ذہن میں گونجتے ہیں کیوں کہ ہمارے معاشرے میں کمپیوٹرز کی اس طرح تصویر کشی کی گئی ہے کہ یہ ایسا جادو کا …مزید پڑ ھیں

شہری انتظام کیلئے جدید مگر سستی ٹیکنالوجی کی ضرورت

پوری دنیا میں پھیلے ہوئے شہر، خواہ وہ امیر ہوں یا غریب، جدیدٹیکنالوجی کو پوری طرح سے اختیار کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ ان شہروں میں بڑھتے ہوئے چیلنجز کا مقابلہ کرنے کیلئے موبائل ایپلی کیشنز، سینسرز اور دیگر ٹیکنالوجیز میدان میں آگئی ہیں ۔

Top