Global Editions

Most Recent Articles

کرونا وائرس کی ویکسین کی صرف امیر ممالک کو ہی نہيں بلکہ پوری دنیا کو ضرورت ہے

دنیا بھر میں کرونا وائرس کی تقسیم کو مختلف اقسام کے مسائل درپیش ہیں، لیکن ہر ملک کی صورتحال مختلف ہے۔ غریب ممالک کو ویکسین کی فراہمی اخلاقی اعتبار سی ہی نہيں بلکہ مالی اعتبار سے بھی بہت ضروری ہے۔ نیشنل بیورو آف ایکنامک ریسرچ (National Bureau of Economic Research) کی ایک نئی تحقیق سے …مزید پڑ ھیں

جو بائيڈن ماحولیاتی تبدیلی کے لیے اربوں ڈالر کی رقم مختص کرنے والے ہیں

نومنتخب امریکی صدر جو بائيڈن نے اپنی انتخابی مہم کے دوران ماحولیاتی تبدیلی کے حوالے سے کیے گئے وعدوں پر عملدرآمد شروع کردیا ہے۔ انہوں نے 27 جنوری کو جن ایگزیکٹو آرڈرز پر دستخط کیے تھے، ان کی وجہ سے امریکی توانائی کی پالیسیوں میں بہت اہم تبدیلیاں آنے والی ہیں۔ ان نئے آرڈرز کے …مزید پڑ ھیں

مصنوعی ذہانت سے صحت کے شعبے کی عدم مساوات کس طرح ختم کی جاسکتی ہے؟

پچھلے چند سالوں کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ کینسر کی ابتدائی مراحل میں نشاندہی اور آنکھوں کے امراض کی تشخیص جیسے کاموں میں ڈیپ لرننگ کی کارکردگی ماہرین جتنی ہی درست ہوتی ہے۔ تاہم اس کے ساتھ کئی مسائل بھی جڑے ہوئے ہیں۔ ہمیں یہ بات اچھے سے معلوم ہے کہ ڈیپ …مزید پڑ ھیں

نیوز بلیٹن

میگزین

تازہ ترین

کرونا وائرس کی ویکسین کی صرف امیر ممالک کو ہی نہيں بلکہ پوری دنیا کو ضرورت ہے

دنیا بھر میں کرونا وائرس کی تقسیم کو مختلف اقسام کے مسائل درپیش ہیں، لیکن ہر ملک کی صورتحال مختلف ہے۔ غریب ممالک کو ویکسین کی فراہمی اخلاقی اعتبار سی ہی نہيں بلکہ مالی اعتبار سے بھی بہت ضروری ہے۔ نیشنل بیورو آف ایکنامک ریسرچ (National Bureau of Economic Research) کی ایک نئی تحقیق سے …مزید پڑ ھیں

جو بائيڈن ماحولیاتی تبدیلی کے لیے اربوں ڈالر کی رقم مختص کرنے والے ہیں

نومنتخب امریکی صدر جو بائيڈن نے اپنی انتخابی مہم کے دوران ماحولیاتی تبدیلی کے حوالے سے کیے گئے وعدوں پر عملدرآمد شروع کردیا ہے۔ انہوں نے 27 جنوری کو جن ایگزیکٹو آرڈرز پر دستخط کیے تھے، ان کی وجہ سے امریکی توانائی کی پالیسیوں میں بہت اہم تبدیلیاں آنے والی ہیں۔ ان نئے آرڈرز کے …مزید پڑ ھیں

مصنوعی ذہانت سے صحت کے شعبے کی عدم مساوات کس طرح ختم کی جاسکتی ہے؟

پچھلے چند سالوں کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ کینسر کی ابتدائی مراحل میں نشاندہی اور آنکھوں کے امراض کی تشخیص جیسے کاموں میں ڈیپ لرننگ کی کارکردگی ماہرین جتنی ہی درست ہوتی ہے۔ تاہم اس کے ساتھ کئی مسائل بھی جڑے ہوئے ہیں۔ ہمیں یہ بات اچھے سے معلوم ہے کہ ڈیپ …مزید پڑ ھیں

امریکی نومنتخب صدر جو بائيڈن مصنوعی ذہانت کے حوالے سے کیا کرنے والے ہیں؟

صدر ڈونلد ٹرمپ وائٹ ہاؤس چھوڑ کر جاچکے ہيں اور صدر جو بائيڈن نے امریکی حکومت کی باگ دوڑ سنبھال لی ہے۔ صدر بائيڈن نے وائٹ ہاؤس میں آتے ہی متعدد ایگزیکٹو آرڈرز پر دستخط کرکے اپنی سنجیدگی کا مظاہرہ بھی کیا ہے۔ اس وقت ان کی اولین ترجیح کرونا وائرس ہے، اور ان کے …مزید پڑ ھیں

امریکی صدر جو بائيڈن کرونا وائرس کی وبا کے حوالے سے کیا اقدام کرنے والے ہیں؟

نو منتخب امریکی صدر جو بائيڈن نے کہا ہے کہ وہ ”جنگی بنیاد“ پر covid-19 کی وبا کا مقابلہ کرنے والے ہیں، اور انہوں نے اس وعدے کو پورا کرنے کے لیے اقتدار سنبھالتے ہی ایک سات نقاطی منصوبہ جاری کیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ وہ سائنسی اصولوں پر عمل کریں گے اور …مزید پڑ ھیں

چین کی خلائی صنعت امریکہ کو بہت پیچھے چھوڑ دینے کا ارادہ رکھتی ہے

کرونا وائرس کی وبا کے باعث 2020ء میں چین کے خلائی پروگرام کی پیش رفت کم تو ہوئی، لیکن مکمل طور پر رکی نہيں۔ ایک عالمی وبا کے باوجود، چین مریخ پر روور (rover) بھیجنے، زمین پر قمری پتھر واپس لانے، اور چینی خلابازوں کو چاند پر لے جانے کے لیے خلائی گاڑیوں کی ٹیسٹنگ …مزید پڑ ھیں

ٹیکنالوجی اخروٹ کی فارمنگ میں کس طرح معاون ثابت ہوسکتی ہے؟

میرا کیلیفورنیا میں اخروٹوں اور بادام کا کھیت ہے۔ جب اخروٹ کی کٹائی کا وقت ہوتا ہے، تو ہم روز صبح اٹھ کر کھیتوں کا دورہ کرتے ہيں۔ میرے اخروٹ کے کھیت میں ہر مرحلے پر مشینوں کا استعمال کیا جاتا ہے۔ سب سے پہلے مشینیں اخروٹوں کو زمین پر گرانے کے لیے درختوں کو …مزید پڑ ھیں

ایک نئی قسم کی مکئی سے خشک سالی کے دوران بھی کسانوں کو نقصان نہيں ہوگا

میں کینیا میں چھ سالوں سے مکئی کے علاوہ کافی اور شکرقندی کی کھیتی باڑی کر رہی ہوں۔ مجھے دو سال پہلے ساوا (SAWA) نامی مکئی کے بیجوں کے متعلق معلوم ہوا جنہیں میکسیو میں واقع انٹرنیشنل میز اینڈ ویٹ امپروومنٹ سینٹر ( International Maize and Wheat Improvement Center) نے خاص طور پر خشک سالی …مزید پڑ ھیں

کرونا وائرس کی ویکسینیشن مہم: اگر کڑی نظر نہ رکھی جائے تو جعلساز عوام کا فائدہ اٹھا لیں گے

کئی ممالک میں کرونا وائرس کی ویکسینیشن کا سلسلہ شروع ہوچکا ہے۔ تاہم امریکہ میں یہ ویکسینیشن مہم شروع سے ہی مشکلات کا شکار رہی ہے۔ کئی ریاستوں میں ڈیلیوری کے ناقص سسٹمز کے باعث ویکسین کی دستیابی کی راہ میں کئی رکاوٹیں پیش آئيں۔ ویکسین حاصل کرنے والے افراد کی نشاندہی کے دوران بھی …مزید پڑ ھیں

کرونا وائرس کی اس وبا کے دوران، ہم نے ماحولیاتی تبدیلی کے حوالے سے کیا غلطیاں کیں؟

2020ء میں عالمی پیمانے پر غم و تکلیف پھیلے ہوئے تھے، لیکن کچھ شعبہ جات ایسے ضرور تھے جن میں مثبت تبدیلی دیکھنے کو ملی۔ ایسا ہی ایک شعبہ ماحولیاتی تبدیلی کا تھا۔ ہوسکتا ہے کہ کرونا وائرس کے بعد معیشت کی بحالی میں کئی سال لگ جائيں، جس کا مطلب ہے کہ دنیا بھر …مزید پڑ ھیں

پائیدار زراعت کے لیے مائکروبز

2016ء میں متعارف ہونے والے اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے اہداف کا سب سے اہم مقصد صاف تخلیق کاری کے ذریعے ماحولیاتی، سماجی، اور اقتصادی ترقی تھا۔ ان اہداف کو اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے قائم کیا گيا تھا کہ عالمی پیمانے پر ٹیکنالوجی میں پیش رفت کے باوجود بھی بڑی تعداد میں …مزید پڑ ھیں

ڈیٹا ماڈلنگ: اعداد و شمار کے پیچھے کتنا دھوکا چھپا ہے؟

16 مارچ کو لندن کے امپیریل کالج (Imperial College) کی covid-19 ریسپانس ٹیم (Response Team) نے ایک پیپر شائع کیا، جس میں کرونا وائرس کے باعث شرح اموات کے متعلق کئی خوفناک قسم کی پیشگوئیاں شامل تھیں۔ مثال کے طور پر، اس ٹیم کے کیلکولیشنز کے مطابق امریکہ میں 22 لاکھ افراد اس مرض کے …مزید پڑ ھیں

ہم سب ہی مختلف جینز پر مشتمل ہيں

پاکستان کے شہر کراچی میں پیدا ہونے والی آصفہ اختر 2020ء میں میکس پلینک (Max Planck) سوسائیٹی کے بائیولوجی اور میڈیسین (Biology and Medicine) محکمے کی پہلی خاتون بین الاقوامی نائب صدر منتخب ہوئیں۔ اختر کو 2008ء میں اپنے شعبے میں اہم کردار ادا کرنے کے لیے یورپین لائف سائنس آرگنائزیشن (European Life Science Organization) …مزید پڑ ھیں

ہوا میں تیر: کرونا ویکسین سب سے پہلے کس کے لیے؟

2004ء میں سائنوویک بائیوٹیک (Sinovac Biotech) نامی ایک چینی کمپنی نے سارز وائرس کے لیے ایک ویکسین پر تجربہ کرنا شروع کیا۔ لیکن 800 افراد کی موت کے بعد یہ مرض خودبخود غائب ہوگیا، جس کے بعد سائنسدانوں نے اس ویکسین پر مزید کام کرنے کا ارادہ ترک کردیا۔ تاہم اس سے یہ فائدہ ضرور …مزید پڑ ھیں

پائیدار زراعت کے لیے مائکروبز

2016ء میں متعارف ہونے والے اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے اہداف کا سب سے اہم مقصد صاف تخلیق کاری کے ذریعے ماحولیاتی، سماجی، اور اقتصادی ترقی تھا۔ ان اہداف کو اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے قائم کیا گيا تھا کہ عالمی پیمانے پر ٹیکنالوجی میں پیش رفت کے باوجود بھی بڑی تعداد میں …مزید پڑ ھیں

Top