Global Editions

ٹیلی کام پالیسی 2015 کا اعلان

وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی نے باضابطہ طور پر سال 2015ء کے لئے ٹیلی کام پالیسی جاری کر دی ہے۔ ٹیلی کام پالیسی وفاقی کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کی منظوری سے جاری کی گئی ہے۔ پاکستان میں کام کرنے والی ٹیلی کام کمپنیوں نے اس پالیسی کے اعلان کو خوش آئند قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ یہ اس صنعت کی ترقی کے لئے سنگ میل ثابت ہو گی۔ یہ پالیسی پانچ سال کے لئے ہے اور مدت کے اختتام پر اس کا ازسرنو جائزہ لے کر نئی پالیسی جاری کی جائیگی ۔ٹیلی کام پالیسی کے اعلان پر موبی لنک پاکستان کے چیف ایگزیکٹو جیفری ہیڈبرگ (Jeffery Hedberg)، یو فون کے چیف ایگزیکٹو عبدالعزیز، زونگ کے سی ای او لیو ڈئیان فنگ (Liu Dianfeng)، وارد کے چیف ایگزیکٹو منیر فاروقی، ٹیلی نار کے چیف کارپوریٹ افئیرز اور سیکورٹی افیسر اسلم حیات نے پالیسی کا خیر مقدم کیا اور قرار دیا کہ ٹیلی کام انڈسٹری میں بہت پوٹینشل ہے اور ضرورت اس امر کی ہے اسے درست انداز میں ایکسپلور کیا جائے۔ تمام ٹیل کوز کے سربراہان نے پالیسی کو اچھی پیش رفت قرار دیا۔ وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی انوشہ رحمان کا کہنا تھا کہ پالیسی تمام سٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لے کر تیار کی گئی ہے اور سائبر کرائمز بل پر بھی تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت جاری ہے۔ اس پالیسی کا بنیادی مقصد عوام کو ٹیلی کمیونیکیشن کی بہترین سہولیات فراہم کرنا ہے تاکہ اس سے ملکی معیشت اور معاشرے میں بہتری اور ترقی لائی جاسکے۔ اس پالیسی کے تحت چند اہداف کا تعین بھی کیا گیا ہے جن کی سمت میں آگے بڑھا جائیگا ان اہداف میں ٹیلی کمیونی کیشن مارکیٹس اور خدمات کو فروغ دیا جائیگا، سستی براڈ بینڈ سروسز کی فراہمی اور پھیلائو کے ساتھ ساتھ موبائل صارفین کے لئے نئی ڈیجیٹل ایپلی کیشنز اور کونٹینٹ کی فراہمی، ٹیلی کمیونیکیشن انفراسٹرکچر کی بہتری وغیرہ شامل ہیں۔

Authors

*

Top