Global Editions

ماحول دوست توانائی کے میدان

آئی فون کی ڈسپلے سکرین تیار کرنے والی کمپنی فاکسکون نےمعروف الیکڑانکس کمپنی شارپ کو خرید لیا ہے اور اب فاکسون نے عزم ظاہر کیا ہے کہ وہ صاف اور ماحول دوست توانائی کے میدان میں سب کو پیچھے چھوڑ دیگی۔ فاکسکون (Foxconn) کی جانب سے خریدی گئی کمپنی شارپ (Sharp) نے 1959میں سولر پینل تیار کرنے شروع کئے تھےاور وہ سال 2000ء تک دنیا کی اس غیر مستحکم مارکیٹ کی بلا شرکت غیرے حکمران رہی۔ تاہم بعد ازاں چین میں مختلف کمپنیوں کی جانب سے سولر پینل کی تیاری پر شارپ کو سخت مقابلے کا سامنا رہا۔ اس کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے سال 2015 ءکے آخری عشرے میں شارپ کو توانائی کے متبادل ذرائع تیار کرنے کے شعبے میں 45 ملین ڈالر کے خسارے کا سامنا کرنا پڑا۔ ابھی تک یہ واضح نہیں کہ فاکسکون کے کنٹرول میں آنے کے بعد شارپ کمپنی کی جانب سے شمسی توانائی کے میدان میں شارپ کے کردار موجود رہے گا یا نہیں۔ تاہم یہ واضح ہے کہ فاکسکون کے چیف ایگریکٹو ٹیری گو (Terry Gou) کا ماننا ہے کہ فاکسکون توانائی کےمیدان میں رہے گی اور ماحول دوست توانائی ذرائع کی تیاری کے لئے اپنے آپریشنز نہ صرف جاری رکھے گی بلکہ بیرون ملک ایسے پراجیکٹس کی تنصیب کے کام کو بھی فروغ دیگی۔ گزشتہ برس جاپان کے سافٹ بنک، فاکسکون اور ایک ہندوستانی کمپنی بھارتی انٹرپرائزیز نے ایک معاہدے پر دستخط کئے جس کے تحت تینوں کمپنیاں مشترکہ طورپر بھارتی ریاست اندھرا پردیش میں دو گیگاواٹ پیداواری صلاحیت کا حامل پلانٹ تیار کریگی۔ اسی طرح تینوں کمپنیوں نے بھارت میں قابل تجدید توانائی ذرائع کے منصوبوں پر 20 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا بھی اعلان کیا ہے اور یہ منصوبے بنیادی طور پر شمسی توانائی کے منصوبے ہی ہونگے۔ ایپل کے لئے مصنوعات کی تیاری کے ساتھ ساتھ فاکسکون 2018 میں چین میں 400 میگاواٹ صلاحیت کا حامل شمسی توانائی کا پلانٹ نصب کرنے کا بھی ارادہ رکھتی ہے۔

تحریر: رچرڈ مارٹن (Richard Martin)

Read in English

Authors

*

Top