Global Editions

ماحولیاتی آلودگی کا خاتمہ۔۔۔۔آئل کمپنیوں پردباؤ

ماحولیاتی آلودگی کے اثرات سے اس وقت تمام دنیا آگاہ ہے اور اس کے اثرات سے محفوظ رہنے کے لئے اقدامات بھی جاری ہیں، اس کے ساتھ ساتھ ایسے ادارے یا کمپنیاں جو ماحولیاتی آلودگی میں اضافے کا باعث ہیں پر بھی دبائو بڑھ رہا ہے کہ وہ ماحولیاتی آلودگی کے اثرات کم کرنے کے لئے عملی اقدامات کریں۔ ان کمپنیوں اور اداروں میں تیل کی کمپنیاں سرفہرست ہیں۔ اس حوالےسے بڑی تیل کمپنیوں جن میں Chevron اور Exxon Mobil شامل ہیں کی سربراہی میں سٹیک ہولڈرز کا اجلاس ہوا جس میں سرمایہ کاروں نے ماحولیاتی آلودگی کے تدارک کے لئے اقدامات اٹھانے پر اتفاق کیا۔ اس موقعہ پر شرکا ءکا کہنا تھا کہ عالمی درجہ حرارت کو پیرس معاہدے کے تحت دو ڈگری سینٹی گریڈ کم کرنا ایک عالمی ذمہ داری ہے جس کے لئے سب کو کردار ادا کرنا چاہیے۔ اس حوالے دونوں بڑی امریکی کمپنیوں نے ایسے اقدامات اٹھانے پر اتفاق کیا جن کے ذریعے اس امر کا تعین ہو سکے جن کے تحت مستقبل میں آئیل کمپنیوں کے سبب ماحولیاتی آلودگی میں اضافہ نہ ہو سکے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ یہ سب کچھ ایک رات میں نہیں ہو سکتا یہ نہیں ہو سکتا کہ ہمارے تیل کے کنوئوں سے ایک رات کے اندر تیل کا ہوا میں اخراج ختم نہیں ہو سکتا۔ Exxon کے چیف ایگزیکٹو ریکس ٹیلرسن کا کہنا تھا کہ ہم انسانیت کی بقا کے لئے ایسے اقدامات اٹھانے پر تیار ہیں۔ لیکن دیکھا جائے تو یہ خطیبانہ بیانات بھی اس موقع پر سامنے آ رہے ہیں جب تیل اور گیس کے شعبے سے وابستہ افراد اور ادارے ایسے مرحلے پر پہنچ چکے ہیں جہاں اب انکے متبادل تیار کرنے کے لئے کوششیں عروج پر پہنچ چکی ہیں مثال کے طور پر اب دنیا بجلی کی پیداوار کےلئے متبادل اور قابل تجدید توانائی ذرائع کے حصول کے لئے کوشاں ہیں اور اب یہ شعبہ ترقی کر رہا ہے اسی طرح ٹرانسپورٹ کے لئے بھی فوسل فیول کے بجائے بائیو فیول کی تیاری کے لئے کام جاری ہے۔ اس سب کے باوجود یہ بھی درست ہے کہ فوری طور پر یہ تیل اور گیس کی کمپنیوں پر انحصار ختم نہیں کیا جا سکتا۔ ایک رپورٹ کے مطابق دنیا کی توانائی کا ضروریات کا ساٹھ فیصد 2040 تک بھی تیل اور گیس سے ہی حاصل کیا جائیگا تاہم فضا میں کاربن کا اخراج روکنے کے لئے اقدامات بھی ساتھ ہی ساتھ جاری رہیں گے۔ اس اجلاس سے یہ تو ہوا ہے کہ تیل کمپنیوں نے وقت کی ضرورت کا ادارک کر لیا ہے اور اس مقصد کے لئے 1.7 بلین ڈالر کا فنڈ قائم کیا ہے۔ فرنچ آئیل کمپنی ٹوٹل نے کاربن کے کم سے کم اخراج کے لئے قائم اس فنڈ میں 20 فیصد سرمایہ کاری کی ہے۔ اس فنڈ کا قیام قابل تحسین ہے لیکن ماحول کو آلودگی سے پاک کرنا ہم سب کی مشترکہ ذمہ داری ہے اور سب کو اس ضمن میں کردار ادا کرنا چاہیے۔

تحریر: مشعل رئیلائے (Michael Reilly)

Read in English

Authors

*

Top