Global Editions

لاہور پولیس تفتیش کے لیے ایپلی کیشنز استعمال کرے گی

پی آئی ٹی بی اورلاہور پولیس نے گولڈن آور اور ٹول کٹ ایپلی کیشن متعارف کرا دی

لاہور پولیس نے جرائم کی تفتیش میں مدد دینے کے لیے ”گولڈن آور“اور”ٹول کٹ“ کے نام سے ایپلی کیشنز متعارف کرائی ہیں۔ یہ ایپلی کیشنز پولیس کی جرائم کی تفتیش میں مدد دینے کے علاوہ موقع واردات کو محفوظ بنانے میں بھی معاون ہونگی۔ان ایپلی کیشنز کو لاہور پولیس کے انویسٹی گیشن ونگ نے پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے تعاون سے بنایا ہے۔ ایک موبائل فون کمپنی بھی جرائم کے تدارک میں پولیس سے تعاون کرے گی۔ پی آئی ٹی بی نے  پولیس کے 100 اہلکاروں کو ان ایپلی کیشن کو استعمال کرنے کی تربیت دی ہے۔

لاہور انویسٹی گیشن پولیس کے چیف ایس ایس پی رانا ایاز سلیم کے مطابق گولڈن آور پراجیکٹ میں پانچ جرائم، بم بلاسٹ، اغوا برائے تاوان، قتل، ڈکیتی اور قتل، اور جنسی زیادتی  کو شامل کیا گیا ہے۔اس طرح کے جرائم  واقع ہونے کے فوراً بعد متعلقہ پولیس اسٹیشن کا  تفتیشی افسر پہلے گھنٹے میں ہی موقع واردات کو سیل کر کے   شواہد ، جیسے  خون کے نشانات، فنگر پرنٹس اور بارودی مواد وغیرہ جمع کرے گا۔ واردات کے بعد شواہد جمع کرنے کے حوالےسے پہلا گھنٹہ کافی اہم ہوتا ہے اس لیے اس پراجیکٹ کو گولڈن آور کا نام دیا گیا ہے۔

اس کے بعد تفتیشی افسر موقع واردات کی تصاویر اور ویڈیو فلم بنائے گا۔  تصاویر اور فلم 3 جی نیٹ ورک کے ذریعے ای میل پر  سی آر او برانچ بھیج دی جائے گی ۔ اس عمل سےوقت کا ضیاع نہیں ہوگا۔ ٹول کٹ کی مدد سے سی آر او آفس کا عملہ 8 طرح کی سہولیات سے مستفید ہوتا ہے۔ ان میں نادرا کا ڈیٹا، کال ڈیٹا، مقام کا تعین، چوری شدہ گاڑیوں اور رجسٹرڈ گاڑیوں کا ریکارڈ بھی شامل ہے۔یہ تمام معلومات متعلقہ افسران ایپلی کیشن کی مدد سے شیئر کر سکیں گے۔

Authors

One Comment;

  1. Nazia Gull said:

    Urdu section is really cool. I want more of it in the
    magazine. Job well done. Gud luck

    Pakistan Zindabad

*

Top