Global Editions

فیس بک کا پبلک مقامات پر وائی فائی نصب کرنے کا منصوبہ

گوگل نے مختلف امریکی شہروں میں تیزرفتار فائبر آپٹک انٹرنیٹ سروسز کی فراہمی کے لئے کئی برس صرف کئے ہیں اب فیس بک ایک ایسی ٹیکنالوجی پر کام کر رہی ہے جس کے ذریعے عوام کو ہائی سپیڈ وائی فائی سروس فراہم کی جا سکے گی۔ سماجی رابطے کی اس ویب سائٹ نے مینلو پارک کیلیفورنیا کے کیمپس میں اس وائرلیس نیٹ ورک کے چھوٹے پروٹو ٹائپ تیار کئے ہیں اور امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ اس نیٹ ورک سے ڈیٹا ون جی بی کی رفتار سے ٹرانسفر کیا جا سکے گا۔ یہ سپیڈگوگل فائبر اور یو ایس براڈ بیند کونیکشن سے سو گنا زیادہ ہے۔ فیس بک سال رواں کے آخر میں سان جوز میں اس نیٹ ورک کے آزمائشی تجربات کریگی اسی طرز کے مزید تجربات دنیا کے مختلف ممالک کے کئی شہروں میں بھی کئے جائیں گے۔فیس بک کے ہیڈ آف انفراسٹرکچر اینڈ انجئینرنگ جے پاریکھ (Jay Parikh) کا کہنا ہے کہ ہم دنیا کے مختلف علاقوں میں بسنے والوں کے لئے قابل برداشت اخراجات کی حامل سہولت فراہم کرنا چاہتے ہیں تاکہ تمام علاقوں میں بسنے والے انٹرنیٹ کی سہولت سے فائدہ اٹھا سکیں۔ پاریکھ کا کہنا ہےکہ گوگل کی جانب سے فائبر نیٹ ورک کے ذریعے فراہم کی جانیوالی سہولیات نہایت مشکل اور مہنگی ہیں اور اس کے تحت تمام شہروں میں سہولیات فراہم نہیں کی جا سکتیں تاہم فیس بک کی جانب سے تیار کی جانیوالی وائرلیس ٹیکنالوجی سستی اور آسانی کے ساتھ نصب کی جا سکتی ہے۔ فیس بک کا حالیہ پراجیکٹ دراصل اس منصوبے کا حصہ ہے جسے مستقبل کے گیجٹس کے لئے مختلف کمپنیوں کے لئے تیار کیا جا رہا ہے اس وائرلیس ٹیکنالوجی کو WiGig کا نام دیا گیا ہے اور اس کو مختلف کمپنیاں جن میں سام سنگ، انٹل اور موبائل چپ ساز ادارے کوالکوم Qualcomm شامل کے لئے مستقبل کے عزائم کو سامنے رکھتے ہوئے تیار کیا جا رہا ہے۔ WiGig بالکل وائی فائی جیسا ہے اور یہ ریڈیو بینڈ کے ساتھ کام کرتا ہے اور اس کو کوئی کمپنی کنٹرول نہیں کرتی تاہم 60 گیگاہرٹز ریڈیو وویوز کے ساتھ WiGig کے استعمال کنندگان ڈیٹا تک رسائی اور اسے منتقل کرنے کے قابل ہو سکیں گے۔ یونیورسٹی آف کیلیفورنیا میں کمپیوٹر سائنسز کے پروفیسر بین زاہو (Ben Zhao) کا کہنا ہے کہ فیس بک کی جانب سے وائرلیس نیٹ ورک کے لئے تیار کیا جانیوالا مجوزہ ڈیزائن قابل عمل ہے تاہم اس کے لئے طے کی جانیوالی ریڈیو فریکوئینسی WiGig کے انیٹینا سے منسلک اور حالت سفر میں رہنے والوں کے لئے شائد مسلسل سہولت فراہم نہ کر پائے۔ دوسری جانب پاریکھ کا کہنا ہے کہ فیس بک اس سہولت سے کوئی ریونیو کمانے کا ارادہ نہیں رکھتی بلکہ فیس بک اس سہولت کو مفت متعارف کرانے پر غور کر رہی ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ ریونیو کمانے کے بجائے لوگوں کو زیادہ سے زیادہ انٹرنیٹ سے منسلک کیا جائے۔ فیس بک کے بانی مارک زیگر برگ واضح طور پر غریب ممالک اور دورافتادہ علاقوں میں رہنے والوں کے لئے انٹرنیٹ کی سہولت پہنچانے کے لئے کوششوں کے آغاز کا اعلان کر چکے ہیں اور فیس بک کمپنی کے حالیہ اقدام کو بھی اس ضمن میں ایک قدم کے طور دیکھا جا رہا ہے۔ اس ضمن میں ہائی سپیڈ انٹرنیٹ تک رسائی فیس بک کے عزائم کی کامیابی کے لئے ضروری ہے۔

تحریر: ٹام سیمونائیٹ (Tom Simonite)

2014-f_124348320

Read in English

Authors

*

Top