Global Editions

عالمی درجہ حرارت میں تشویشناک اضافہ : 2015 تاریخ کا گرم ترین سال قرار

موسمی تغیرات کی بڑی وجہ عالمی درجہ حرارت میں ہونے والا اضافہ ہے اور اس اضافے کی سب سے بڑی وجہ گرین ہائوس گیسوں کا اخراج ہے۔ اسی تناظر میں سال 2015ء کو تاریخ کا گرم ترین سال قرار دیا جا رہا ہے اور بات ابھی ختم نہیں ہوئی۔ تحقیق کاروں کا ماننا ہے کہ درجہ حرارت میں اضافے کا سلسلہ ابھی رکا نہیں اور ہمیں اس برس بھی ایسی ہی صورتحال کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ عالمی درجہ حرارت میں اضافے کے حوالے سے اہم اعدادوشمار سامنے آنے کے بعد اب اس حقیقت سے انکار ممکن نہیں کہ عالمی درجہ حرارت میں اضافے سے عالمی ماحول کو کس طرح کے خطرات لاحق ہو گئے ہیں۔ سال 2015ء میں بحر اوقیانوس میں ماحولیاتی اثرات کا حامل الینو (El Nino) فیکٹر بھی شدت اختیار کر گیاہے۔ عالمی درجہ حرارت میں اضافے کے حوالے سے جاری ہونے والے اعدادوشمار نے تصدیق کی ہے کہ انسانوں کی غلطیوں کے سبب عالمی درجہ حرارت میں ریکارڈ اضافہ ہوا اور یہ اضافہ سال 2014ء کے مقابلے میں تشویشناک حد تک زیادہ ہے۔ اگرچہ سال 2014ء عالمی درجہ حرارت میں اضافے کے حوالے سے ریکارڈ کا حامل تھا اس برس کے دوران عالمی درجہ حرارت میں 0.57 ڈگری اضافہ ہوا لیکن سال 2015ء درجہ حرارت میں اضافے کے حوالے سے اس کو بھی پیچھے چھوڑ گیا۔ سال 2015ء کے دوران عالمی درجہ حرارت میں 0.75 ڈگری سینٹی گریڈ کا اضافہ ہوا۔ اعدادوشمار کی روشنی میں سال 2015ء کے دوران ہونے والا اضافہ بہت زیادہ دکھائی نہیں دیتا۔ پیرس میں ہونے والی عالمی ماحولیاتی کانفرنس میں اگرچہ اس امر کا اعلان بھی ہوا تھا کہ مشترکہ کوششوں کے ذریعے عالمی درجہ حرارت کو دو ڈگری سینٹی گریڈ تک کم کیا جائیگا اور گرین ہائوس گیسوں کے اخراج کو بھی کم کیا جائیگا۔ اس حوالے سے اچھی خبر یہ ہے کہ عالمی رہنمائوں نے وقت کی اس ضرورت کو محسوس کیا اور گرین ہائوس گیسوں کا اخراج روکنے اور عالمی درجہ حرارت میں دو ڈگری سینٹی گریڈ کمی کے لئے ایک معاہدے پر دستخط کئے لیکن بری خبر یہ ہے کہ عالمی درجہ حرارت کو جس حد تک کم کرنے کے لئے مشترکہ کوششوں پر اتفاق ہوا ہے اس میں سےایک ڈگری سینٹی گریڈ میں پہلے ہی اضافہ ہو چکا ہے۔ اب اگر پیرس معاہدے پر حقیقی معنوں میں دل و جان سے عمل ہوتا بھی ہے تب بھی عالمی درجہ حرارت میں اضافہ ایک سنگین خطرے کے طور پر ہمارے سروں پر منڈلاتا رہے گا۔ اب ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم جلد از جلد گرین ہائوس گیسوں اور کاربن کے اخراج کو کم از کم سطح پر لانے کے لئے کوششوں کو تیز تر کر دیں تاکہ مطلوبہ اہداف کا جلد از جلد حصول ممکن ہو سکے۔

تحریر: میچل ریلے (Michael Reilly)

Read in English

Authors
Top