Global Editions

شوگر کے مریضوں کے لئے مصنوعی لبلبہ کی تیاری

ذیابیطس کے مریضوں کے لئے مصنوعی لبلبہ تیار کرنے والی کمپنی نے ایک ملین ڈالرز کی فنڈنگ حاصل کر لی۔ بوسٹن یونیورسٹی کے بائیو میڈیکل انجینئر ایڈڈامیانو (Ed Damiano) کی جانب سے بنائی جانیوالی کمپنی بیٹا بائیونکس (Beta Bionics) نے عوامی فنڈنگ کے لئے ویب پورٹل Wefunder پر ilet3x585775 ممبرز سے اپنی مصنوعات کے لئے 1300 ڈالرز فی کس کے لحاظ سے فنڈنگ حاصل کی جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ لوگ ذیابیطس کے لئے بنائے جانیوالے اس نئے پیس میکر کے آئیڈیا کو پسند کر رہے ہیں۔ مصنوعی لبلبہ کی ٹیکنالوجی کوایڈ ڈامیانو (Ed Damiano)نے تیار کیا ہے جس کے نوجوان بیٹے کو ذیابیطس کا عارضہ لاحق تھا اسے اس عارضے کی وجہ سے انسولین لینا پڑتی تھی اور اس بات کا اندیشہ موجود تھا کہ وہ اس مرض کی وجہ سے کومے میں نہ چلا جائے۔ اپنے بیٹے کے عارضے میں مبتلا ہونے کی وجہ سےایڈڈامیانو نے اس مصنوعی لبلبے کی تیاری پر کام شروع کیا۔ اس وقت مارکیٹ میں ایسے کئی ڈیوائسز دستیاب ہیں جو ذیابیطس کے مریضوں کے خون میں شوگر کی مقدار کو ازخود حساس سینسرز کی مدد سے جانچتے رہتے ہیں اور ضرورت کے وقت شوگر لیول برقرار رکھنے کے لئے انسولین کی مناسب مقدارمریض کے خون میں پہنچا دیتے ہیں۔بیٹا بائیونکس (Beta Bionics) نے بھی ایسی ہی ڈیوائس تیار کی ہے جسے iLet کا نام دیا گیا ہے جو مریض کے جسم میں ضرورت کے وقت انسولین داخل کر دیتی ہے۔ اس ڈیوائس کی تیاری کے لئے بیٹا بائیونکس (Beta Bionics) نے سرمایہ کاری کے لئے کراوڈ فنڈنگ روٹ کا استعمال کیا کیونکہ ذیابیطس کے مریضوں کو اس ڈیوائس کی جانب متوجہ کیا جا سکے اس کا مطلب یہ ہے کہ کمپنی ذیابیطس کے ان مریضوں کو اپنی جانب متوجہ کرنا چاہتی ہے جو لیول ون ذیابیطس کا شکار ہیں۔ بیٹا بائیونکس (Beta Bionics) نے اپنی تیار کردہ ڈیوائس iLet کے پروٹو ٹائپ کے رضاکاروں پر تجربات کا آغاز کر دیا ہے اور کمپنی کا کہنا ہے کہ یہ ڈیوائس مارچ 2017 ء تک عوام کو دستیاب ہو گی ابتدائی طور پر یہ ڈیوائس صرف انسولین خون میں داخل کریگی تاہم بعدازاں یہ ڈیوائس بلڈ شوگر بڑھنے سے روکنے لئے بریک کا بھی کام کریگی اور یہ ڈیوائس بلڈ شوگر کو کنٹرول کرنے کے لئے انسولین کے ساتھ گلوکاگن (glucagon) بھی خون میں شامل کریگی یہ وہ دوسرا ہارمون ہے جس کی انسان کو اس وقت ضرورت ہوتی ہے جب انسانی جسم میں شوگر کی مقدار نہایت کم ہو جائے۔ اس وقت کمپنی کے لئے بڑا چیلنج نہ صرف اس مصنوعی لبلبےکی تیاری ہے بلکہ اس کےساتھ ساتھ ان کمپنیوں سے مقابلہ بھی ہے جو ایسے ہی مصنوعی لبلبےتیار کر رہے ہیں۔

تحریر: اینڈریو روزینبلم (Andrew Rosenblum)

crowdfunding.v3x1400

Read in English

Authors

*

Top