Global Editions

سولر پینل کی تیاری کیلئے نیا مٹیریل متعارف،25 فیصد اضافی بجلی حاصل ہو گی

شمسی توانائی کے حصول کیلئے شاید سلیکون مٹیریل کا متبادل تلاش کرنے میں ابھی بہت دیر لگے لیکن اس کے پارٹنر کے طور پرپیرووسکائیٹ (Perovskite)نامی مٹیریل کو متعارف کروادیا گیا ہے۔ آکسفورڈ یونیورسٹی میں فزسٹ ہنری سنائتھ (Henry Snaith)کی سربراہی میں سائنسدانوں کے ایک گروہ نے سلیکون اور پیرووسکائیٹ مٹیریل پر مبنی سیل متعارف کروایا ہے جس سے یہ سیل25فیصد زیادہ توانائی حاصل کرتا ہے۔ انہوں نے اس کا کامیاب مظاہرہ بھی کیا۔ اسی لئے پیرووسکائٹ توانائی پالیسی بنانے والوں اور تحقیق کاروں کی توجہ کا مرکز بن گیا ہے۔ کیونکہ یہ شمسی توانائی کے آلات کی کارکردگی تیزی سے بڑھاتا ہے ۔ یہ کم قیمت بھی ہے اور اس کا کیمیکل ڈھانچہ بنانا بھی نہایت آسانہے۔ سنائتھ اور ان کے ساتھیوں کا کہنا ہے کہ نئے مرکب نے شمسی توانائی کے آلات سے بہترین کارکردگی حاصل کرنے میں حائل رکاوٹ کو دور کردیا ہے۔

تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ شمسی توانائی کے آلے پر اوپر تلے لگے ہوئے سلیکون پرووسکائیٹ سے ان کی کارکردگی 25فیصد بڑھ جاتی ہے اور اس کے ذریعے موجودہ سلیکون سیل سے 17سے 20فیصد زیادہ توانائی حاصل کی جاسکتی ہے۔ لیبارٹری میں پرووسکائیٹ کے بغیر سیمی کنڈکٹرز سے 40فیصد توانائی حاصل کرنے میں کامیابی حاصل کی گئی ہے لیکن یہ عمل بہت مہنگا پڑتا ہے۔ جبکہ پرووسکائیٹ شمسی سیل بنانا نہایت سستا اور آسان ہے اور موجودہ شمسی توانائی کے پینل میں تھوڑی سی تبدیلی کرکے اسے باآسانی منسلک کیا جاسکتا ہے۔

تحقیق کاروں نے ابھی ا س کا چھوٹے پیمانے پر مظاہرہ کیا ہے ۔ اسے مارکیٹ میں بڑے پیمانے پر متعارف کروانے کیلئے ابھی بہت کام کرنا باقی ہے۔ ایک کمپنی آکسفورڈ پی وی (Oxford PV)، جس کے سنائتھ شریک بانی ہیں، نے سلیکون پیرووسکائیٹ کا آلہ تیار کررہی ہے۔ آکسفورڈ پی وی کے چیف ٹیکنالوجی آفیسر کرِس کیس (Chris Case)کہتے ہیں کہ حالیہ تحقیقی نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ قابل اعتماد اور اعلیٰ کارکردگی کے حامل سلیکون پیرووسکائیٹ کے آلات تیزی سے تیار کرنے کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور کی جارہی ہیں۔ کرس کیس نے اپنی کمپنی کے تیار کردہ آلات کی خصوصیات تو نہیں بتائیں لیکن ان کا کہنا ہے کہ وہ سلیکون پرووسکائیٹ کے بڑے پینل کا مظاہرہ کرنے کے قریب ہیں۔ پرووسکائیٹ ٹیکنالوجی کوتاحال نمی اور ہوا کی شدت جیسے چیلنجز سے نمٹنا ہے۔ ان چیلنجز سے نمٹ کرہی پرووسکائیٹ سیلوں کے تادیر کام کرنے کے سوال کا جواب دیا سکتا ہے۔ کرِس کیس کہتے ہیں کہ ہمارے پاس اسے 2017ء تک مارکیٹ میں لانے کا ہدف ہے۔

تحریر: مائیک اورکٹ (Mike Orcutt)

Read in English

Authors
Top