Global Editions

سوفٹ وئیر سے چلنے والی بیٹریاں

کیاکبھی آپ نے سوچا ہے کہ بیٹریاں بھی سوفٹ وئیرز چلائیں گے۔ آپ کے ٹیبلٹ، سمارٹ گھڑیاں، کاریں حتیٰ کہ ڈرونز میں موجود بیٹریاں سوفٹ وئیرز کی رہنمائی میں چلیں گی۔ سوفٹ وئیرز کی رہنمائی میں چلنے والی بیٹریاں جتنی ضرورت ہو گی اتنی ہی توانائی استعمال کریں گی۔ یہ تصور مائیکروسافٹ نے پیش کیا ہے۔ مائیکرو سافٹ کے تحقیق کاراپنے نئے تصور کے تحت ایسی بیٹریاں بنا رہے ہیں جو موبائل فون کے آلات جیسے ٹیبلٹ اور سمارٹ گھڑیاں وغیرہ کو جلد چارج کریںاور ان کی چارجنگ دیر سے ختم ہو ۔ اس تصور کی وضاحت ا س طرح کی جاسکتی ہے کہ کسی بھی گیجٹ میں موجود بیٹری اپنے خاص کیمیکل ڈیزائن کے تحت چارجنگ اور ڈسچارجنگ کیلئے توانائی صرف کرتی ہے ۔مائیکرو سوفٹ کے مرکزی تحقیق کار رنویر چندرا(Ranveer Chandra)کہتے ہیں کہ چھوٹے حجم ،مختلف کیمیکل ڈیزائن اور کارکردگی والی بیٹریاںہمارے آلات کو بہت بہتر طور پر چلا سکتی ہیں ۔

بیٹریوں سے منسلک سوفٹ وئیر انتخاب کریں گے کہ انہیں کس وقت اور کتنا چارج یا ڈسچارج کرنا ہے۔ اس کا انحصار موبائل آلات سے لیئےگئے کام کی نوعیت پر ہوگا یا پھر اس پر ہے کہ ہم ان سے مستقبل میں کس قسم کی توقعات رکھتے ہیں۔ چندرا کہتے ہیں کہ اس سے بیٹری کو اپنا کام زیادہ موثر انداز میں کرنے میں سہولت رہےگی۔ مثال کے طور پر ممکن ہے کہ فون کی ایک بیٹری میں شایداتنی طاقت ہو کہ آپ اس پر صبح کام کو جاتے ہوئے گیم کھیل سکیں اور دوسری بیٹری اسی دوران تھوڑی تھوڑی توانائی حاصل کررہی ہو۔

چندرا کہتے ہیں کہ سوفٹ وئیر رہنمائی والی بیٹریاںڈرونز اور کاروں میں بھی استعمال ہو سکتی ہیں۔ کاراس قابل ہے کہ اس کی بیٹری فاصلہ ناپنے کا نظام سے بیٹریوں کی توانائی کو مختلف عناصر کی مدد سے منظم کرے۔ مثلاً راستے سے متعلق معلومات، اس میں آنے والے موڑاور متوقع ٹریفک کی صورتحال سے کار کو اپنی توانائی موثر انداز میں خرچ کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔ مائیکرو سوفٹ تحقیق کاروں نے اس تصور کو موبائل آلات میں تبدیلی کرکے ٹیسٹ کیا ہے۔انہوں نے سوفٹ وئیر میں مطلوبہ تبدیلی کرکے اسے عمومی سرکٹ بورڈ کے ساتھ جوڑ دیا جسے چار مختلف بیرونی بیٹریوں سے توانائی دی جاسکتی ہے۔

سمارٹ گھڑی پرکئے گئے ٹیسٹ میں ایک لچکدار بیٹری اس کے سٹریپ پر لگائی گئی اور دوسری اس کی باڈی میں موجود تھی۔ لچکدار بیٹریاں فوری طور پر توانائی فراہم کرنے کے قابل نہیں ہوتیں۔ اس کےلئے تحقیق کاروں نے نہایت احتیاط سے دونوں بیٹریوں کے کام میں توازن پیدا کیا اس ٹیسٹ سے ایک گھنٹے سے زیادہ مزید توانائی ملی۔ مائیکروسوفٹ میں یہ تحقیق 2012ء میں شروع کی گئی جس کا مقصد موبائل آلات کی بیٹریوں کی زندگی بڑھانا تھا۔ اگرچہ سوفٹ وئیر رہنمائی والی بیٹریاں ابھی ایک تحقیقی منصوبہ ہے لیکن چندرا نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر ہولو لینز اور سرفیس ٹیبلٹ کی بیٹریوں پر کام کررہے ہیں۔

لچکدار بیٹریاں بنانے والی کمپنی امپرنٹ انرجی (Imprint Energy)کے شریک بانی اور سی ای او کرسٹین ہو(Christine Ho)کہتی ہیں کہ کمی زیادہ تر پہننے والے آلات کی بیٹریوں میں ہوتی ہیں۔سوفٹ وئیر رہنمائی والی بیٹریوں سے انڈسٹری میں نئے سرے سے جان پڑ سکتی ہے۔ اور امپرنٹ جیسی کمپنیاں نئی بیٹری ٹیکنالوجی متعارف کروا کر زیادہ کامیابیاں حاصل کرسکتی ہیں۔ تاہم موبائل آلات کے ساتھ اضافی بیٹریاں، دیگر آلات اور سوفٹ وئیر اتنی آسانی سے نہیں لگائے جاسکتے کیونکہ اس سے موبائل آلات کی قیمت بڑھ جاتی ہے۔ بہت حساس آلات اور مہنگے آلات کے ساتھ تو اضافی بیٹریاں، آلات اور سوفٹ وئیر لگائے جاسکتے ہیں لیکن لوگوں کی خواہش یہ ہوتی ہے کہ پہنے جانے والے آلات ارزاں قیمت پر دستیاب ہوں۔

تحریر: ٹام سیمونائٹ (Tom Simonite)

Read in English

Authors

*

Top