Global Editions

دوران سفر دیگر گاڑیوں کے ساتھ رابطے رکھنے والی گاڑیاں

بغیر ڈرایئور کے گاڑیاں اب ہر خاص و عام کی توجہ حاصل کر رہی ہیں۔ بغیر ڈرائیور کے چلنے والی گاڑیوں کے لئے ایک ایسی ٹیکنالوجی تیار کر لی گئی ہے جو دوران سفر دیگر گاڑیوں کے ساتھ رابطے رکھ سکتی ہے تاکہ کار سواروں کی زندگی کا تحفظ یقینی بنایا جا سکے۔ اس ضمن میں ایک کمپنی نے حال ہی میں کیلیفورنیا کی سڑکوں پر خودکار گاڑؑیوں کی جانب سے شاہراہ پر سفر کرنے والی دیگر گاڑیوں کے ساتھ رابطے کے لئے تیار کی گئی ٹیکنالوجی کا عملی تجربہ کیا گیا۔ کار ٹو کار ٹیکنالوجی کے تحت خودکار گاڑیاں شاہراہ پر دوڑنے والی دیگر گاڑیوں کے ساتھ رفتار، گاڑی میں سواروں کی تعداد اور دیگر معلومات کا تبادلہ کر سکتی ہیں اور یہ رابطے گاڑیوں کے ریڈار پر چند سو میٹر کے درمیان آنے والی گاڑیوں کے ساتھ ہی ممکن ہو گا۔ ان رابطوں کی وجہ سے گاڑیوں میں موجود کمپیوٹر اور کار سیفٹی سسٹم خودکار گاڑیوں کو حادثات سے محفوظ رکھنے میں ممدومعاون ثابت ہونگے۔ اسی طرح کار ٹو انفراسٹکچر کمیونیکیشن سسٹم شاہراہوں پر ٹریفک کے بلا تعطل بہائو کو یقینی بنانے میں کارآمد ثابت ہو سکتی ہے۔ امریکی محکمہ ٹرانسپورٹ نے کار ٹو کار ٹیکنالوجی میں بہت دلچسپی کا اظہار کیا تھا اور اس مقصد کے لئے امریکی سرکاری ادارے نے مشی گن میں وسیع پیمانے پر اس ٹیکنالوجی کے عملی تجربے کا اہتمام کیا اس مقصد کے لئے 2800 گاڑیاں جو ریڈیو آلات اور ڈیٹا ریکارڈرز سے لیس تھیں اور 2012 اور 2013 کے درمیان تیار کی گئی تھیں کو استعمال کیا گیا۔ ان تجربات کے بعد اب خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ مستقبل میں خودکار گاڑیوں میں ایسی ٹیکنالوجی ضرور استعمال ہو گی اور اس مقصد کے لئے 5G یا LTE ٹیکنالوجی کو بھی بروئے کار لایا جائیگا تاکہ گاڑیاں زیادہ بہتر انداز میں ایک دوسرے کے ساتھ کمیونی کیٹ کر سکیں۔ ایک تجزیہ کار نے امید ظاہر کی ہے کہ خودکار گاڑیوں کے لئے باقاعدہ قواعد و ضوابط سال رواں کے آخر تک وضع کر لئے جائیں گے۔

Read in English

Authors

*

Top