Global Editions

تھری ڈی پرنٹر نے دل بھی پرنٹ کر دئیے

ڈاکٹروں کے لیے دل کی سرجری اس وقت بہت آسان ہو سکتی ہے جب وہ مریض کے دل کو آپریشن سے پہلے ہی ہاتھ میں پکڑ کر دیکھ لیں۔ اس سلسلے میں مدد دینے کے لیے ایم آئی ٹی اور بوسٹن چلڈرن ہوسپیٹل نے اہم قدم اٹھایا ہے۔ایم آر آئی سکین کو بلیو پرنٹ کے طور پر استعمال کرتے ہوئے ڈاکٹر مریض کے آپریشن سے پہلے صرف 3 گھنٹے میں ، اس کے دل کا ماڈل پرنٹ کر سکتے ہیں۔

جب ایم آر آئی کیا جاتا ہے تو مشین اعضا کی سینکڑوں تصاویر بناتی ہے۔عضو کا بالکل درست 3 ڈی ماڈل بنانے کے لیے ضروری ہے کہ اعضا کے کناروں کا درست طریقے سے تعین کیا جائے۔

اگر انسانی دل کے ہرحصے کے کناروں کو ہم خود سے جانچیں تو اس میں 200 سکینز اور 10 گھنٹے کا وقت لگے گا۔تاہم ایک ماہر نے ایسا الگورتھم بنایا ہے جس سے اس عمل کی رفتار بہت تیز ہوجائے گی۔دل کی باؤنڈری مارک کرنے والے شخص کو صرف 8 کراس سیکشن پر کام کرنا ہوگا جبکہ باقی کام مشین 1 گھنٹے میں خود کر لے گی۔اس کے بعد دل کو پرنٹ ہونے میں بھی ایک سے دو گھنٹے ہی لگیں گے۔

ابھی یہ ٹیکنالوجی اپنے ابتدائی مراحل میں ہے ۔ بوسٹن چلڈرن ہوسپیٹل کے 7 ڈاکٹر پرنٹ ہوئے ماڈل کا معائنہ کر کے اس کی درستی کا اندازہ کرتے ہیں۔

Authors
Top