Global Editions

ایڈ بلاکرز کے باوجود فیس بک اشتہارات دکھائے گا

آن لائن براؤزنگ کے دوران اشتہارات اب ناگزیر دکھائی دیتے ہیں کیونکہ انٹرنیٹ کا استعمال اب زندگی کےہر شعبہ سے وابستہ افراد کرتے دکھائی دیتے ہیں۔ تاہم بعض انٹرنیٹ سائٹس پر اشتہارات کی اتنی بھرمار ہوتی ہے کہ انٹرنیٹ صارفین کوفت میں مبتلا ہو جاتے ہیں۔ اس کوفت سے بچنے کے لئے صارفین ایڈ بلاکرز سافٹ وئیرز انسٹال کرتے ہیں تاکہ غیر ضروری اشتہارات سے محفوظ رہا جا سکے تاہم اب فیس بک کا کہنا ہے کہ وہ ایسا طریقہ تلاش کرنے میں کامیاب رہی ہے جس کی بدولت ایڈ بلاکرز کے باوجود سماجی رابطے کی اس ویب سائٹ پر اشتہارات دکھائے جا سکیں گے۔ فیس بک کا ماننا ہے کہ لاکھوں افراد ایڈ بلاکر ایکسٹینشن کے ذریعے دھوکہ دہی کے مرتکب ہو رہے ہیں۔ فیس بک کے اس اعلان کے بعد اب صورتحال کافی دلچسپ ہو گئی ہے کیونکہ ایڈبلاکرز سافٹ وئیر یا ایکسٹینشن فراہم کرنے والی کمپنیاں اب تک صارفین کو کافی حد تک مطمئن رکھنے میں کامیاب رہی ہیں تاہم اب انہیں فیس بک کی جانب سے ایڈ بلاکرز کو نظرانداز کرتے ہوئے اشتہارات جاری کرنے کے طریقہ کو بھی مدنظر رکھنا ہو گا یعنی ایسا راستہ تلاش کرنا ہو گا جس کے ذریعے وہ فیس بک کی جانب سے جاری کئے جانے والے اشتہارات کو صارفین کی سہولت کے لئے بلاک کر سکیں۔ ایک اندازے کے مطابق صرف امریکہ میں 45 سے 70 ملین افراد ایڈ بلاکرز استعمال کرتے ہیں۔ ایڈ بلاک پلس اس ضمن میں سب سے مقبول ہے۔ دوسری جانب ایسی رپورٹس بھی موجود ہیں جس سے معلوم ہوتا ہے کہ 100 ملین سے زائد افراد گوگل سے اشتہارات چلانے کے لئے پیسے وصول کرتے ہیں۔ ایڈ بلاک پلس اور ایسی دیگر کمپنیاں پہلے ہی سے ایک ایسے اشتراک عمل پر راضی ہیں جن کے ذریعے اشتہارات چلانے کے لئے ان کے سافٹ وئیرز کو نظرانداز نہیں کیا جا سکے گا تاہم محسوس ہوتا ہے کہ ان کا یہ اشتراک عمل سو فیصد کامیاب نہیں رہیگا۔ فیس بک چونکہ زیادہ باوسائل ادارہ ہے اس لئے یہ کہا جا سکتا ہے کہ سماجی رابطے کی یہ ویب سائٹ ان ایڈ بلاکرز کمپنیوں کے سافٹ وئیرز کے باوجود اپنی سائٹ پر اشتہارات چلانے میں کامیاب ہو جائے گی۔

تحریر: ٹام سیمونائیٹ (Tom Simonite)

Read in English

Authors

*

Top