Global Editions

آواز پیدا کرنے والی جھلی کی پیوند کاری

کسی حادثے یا بیماری کے باعث آواز سے محرومی یا آواز کے متاثر ہونے کے علاج کے لئے تحقیق کار طویل عرصے سے کام کر رہے تھے۔ اب تحقیق کار لَیرَنکس کے پاس جھِلّی کی تہَیں، جن کے ارتعاش سے آواز پَیدا ہوتی ہے، کی مرمت اور ان تہوں کو مصنوعی طور پر تیار کرنے کے تجربات میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ ان کامیاب تجربات سے حادثات اور آپریشنز کےدوران یا کینسر جیسی مہلک بیماری کی صورت میں ووکل کورڈ (Vocal Cord) کی مصنوعی طور تیاری یا ووکل کورڈ کے متاثرہ ٹشوز کو درست حالت میں لانے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ تجربہ گاہ میں چوہوں اور کتوں پر اس نئی تحقیق کے تحت ہونے والے کامیاب تجربات سے یہ امید ہو گئی ہے کہ لیبارٹری میں مزید تحقیقات کے بعد اس نئی تحقیق کے تجربات انسانوں پر بھی کئے جائینگے۔ ووکل کورڈ درحقیقت ایک جھلی ہوتی ہے جس میں ٹشوز کی تہیں ہوتی ہیں یہ لئیرنکس (Larynx) یا وائس باکس یعنی آواز پیدا کرنے والے خانے کی ایک جانب ہوتی ہیں اور جب پھپھڑوں سے ہوا ان کے درمیان سے گزرتی ہے تو یہ جھلی یعنی ووکل کورڈ اس ارتعاش سے آواز تخلیق کرتی ہے۔ بیماری یا حادثے کے باعث متاثر ہونے والے ووکل کورڈ کی درست حالت میں اس طرح بحالی کہ آواز بحال ہو جائے ڈاکٹرز اور تحقیق کاروں کے لئے چیلنج سے کم نہیں تھی کیونکہ ووکل کورڈ کے ٹشوز خاص انداز میں ایک دوسرے سے اس طرح جڑے ہوتے ہیں جو مختلف حالات میں مختلف انداز سے کام کرتے ہیں اور دبائو یا ارتعاش کی صورت میں آواز پیدا کرتے ہیں۔ حالیہ برسوں میں تحقیق کاروں نے ووکل کورڈ لیبارٹری میں تیاری اور ازسرنو بحالی کےلئے کافی تجربات کئے ہیں اس ضمن میں تحقیق کاروں نے کثیر سالمی مرکب کا عارضی ڈھانچہ تیار کرنے اور اس کی مدد سے کثیر جہتی خلئے تیار کرنے میں کامیابی حاصل کی ہے۔ یونیورسٹی آف وسکونسن (Wisconsin) سکول آف میڈیسن اینڈ پبلک ہیلتھ کے ایسویس ایٹ پروفیسر ناتھن ویلہم (Nathan Wellham) کا کہنا ہے کہ اگرچہ تحقیق کاروں نے مصنوعی ووکل کورڈ کی تیاری کے سلسلے میں اہم کامیابی حاصل کی ہے لیکن یہ مصنوعی ٹشوز صحیح طرح سے ارتعاش پیدا نہیں کر رہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ووکل کورڈ کی بحالی کے لئے ماضی میں کئی گئی کوششیں کامیاب نہیں ہو سکیں کیونکہ وہ ووکل کورڈ کے ٹشوز کے خلیوں کو بحالی کے عمل میں شامل نہیں کر رہے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہو سکتا ہے کہ حقیقی ووکل کورڈ کے ٹشوز کے خلئے چند ایسی خصوصیات کے حامل ہوں جنہیں عام حالات میں سمجھنا ممکن نہ ہو یعنی وہ کسی کوڈ کے تحت لاک ہوں اور انہیں ان لاک کئے بغیر مسئلے کا حل تلاش نہیں کیا جاسکتا۔ اسی مقصد کے حصول کے لئے صحت مند انسانی ٹشوز اور خلئے حاصل کئے گئے اور انہیں  کثیر سالمی مرکبات سے تیار کردہ خلیوں کے ہمراہ چند ہفتوں تک مخصوص ماحول میں بڑھنے کا موقع دیا گیا اور یہ تجربہ کامیاب رہا کیونکہ وہ مصنوعی ووکل کورڈ جیسی شکل اختیار کر گئے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس ٹیکنالوجی پر ابھی کئی سال تک کام کرنا ہو گا اور اسے اس نہج تک ترقی دینا ہو گی کہ ووکل کورڈ کی انسانوں میں پیوندکاری ممکن ہو سکے۔

تحریر: مائیک اوورکٹ Mike Orcutt

Read in English

Authors
Top